dushwari

ایران عراق زلزلہ سے مرنے والوں کی تعداد 400 سے تجاوز کر گئی, ہزاروں افراد زخمی

تہران:14؍نومبر2017(فکروخبر/ذرائع)  ایران عراق میں زلزلے سے ہلاکتوں کی تعداد 445سے زائد ہو گئی۔ زخمیوں کی تعداد 7 ہزار ہے۔ حکام نے ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ ظاہر کیا ہے، زلزلے کے آفٹر شاکس کے خدشات پر شہریوں کی بڑی تعداد گھروں سے باہر سڑکوں پر پناہ لئے ہوئے ہیں۔ بڑی تعداد میں عمارتوں کو نقصان پہنچا ہے، امدادی کارکنوں کو زلزلے سے متاثرہ ملک کے مغربی علاقوں میں روانہ کر دیا گیا۔ زلزلے کا مرکز عراق کے جنوبی شہر حلبجہ تھا اور اس کی زمین میں گہرائی 33.9 کلومیٹر تھی۔

برطانوی خبر رساں ایجنسی کے مطابق سب سے زیادہ نقصان عراق کی سرحد سے متصل ایرانی صوبے کرمان شاہ کے علاقے سرپل ذہاب میں ہوا۔ صوبے کے ڈپٹی گورنر نے سرکاری میڈیا کو بتایا کہ صوبے میں زلزلے کے نتیجے میں 415سے زائد افراد ہلاک ہوئے ہیں جبکہ عراق سے ملنے والی ابتدائی اطلاعات کے مطابق وہاں 30 افراد ہلاک اور پچاس کے قریب زخمی ہوئے جبکہ ایران عراق میں 1700 افراد زخمی بھی ہوئے۔ شہریوں کی بڑی تعداد گھروں سے باہر سڑکوں پر پناہ لیے ہوئے ہیں۔ ریڈ کریسنٹ کے سربراہ مرتضیٰ سلیم کا کہنا تھاکہ آٹھ دیہات کو نقصان پہنچنے کی اطلاعات ہیں جبکہ متعدد دیہات میں بجلی اور مواصلات کا نظام متاثر ہوا۔ 7.4 شدت کے زلزلے نے تباہی مچا دی145 کئی عمارتیں ملبے کا ڈھیر بن گئیں۔ ایران اور عراق کے درمیان سرحدی علاقوں میں رات گئے شدید زلزلے سے زمین لرز اٹھی۔ عراق کے علاقے دربندی خان میں زلزلے سے سب سے زیادہ تباہی ہوئی جہاں کئی عمارتیں گر گئیں145 ملبے تلے دبے افراد کو نکالنے کیلئے ریسکیو اہلکاروں کی کوششیں جاری ہیں۔ ایک ایرانی امدادی ادارے کا کہنا ہے کہ زلزلے سے متاثر ہونے والے 70 ہزار افراد کو فوری طور پر امداد اور پناہ گاہوں کی ضرورت ہے۔ آفٹر شاکس کے امکان کی وجہ سے سرد موسم کے باوجود مکین گھروں سے باہر رہنے پر مجبور ہیں۔ ایران میں سب سے زیادہ متاثر ہونے والا صوبہ کرمانشاہ ہے جہاں تین روزہ سوگ کا اعلان کیا گیا۔ ایرانی حکام کا کہنا ہے کہ یہ زلزلہ راوں برس کا شدید ترین زلزلہ تھا۔ جب زلزلہ آیا تو متاثرہ علاقوں کی مساجد میں اذان دی جانے لگی۔ خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق زلزلے کی وجہ سے لینڈ سلائیڈنگ بھی ہو رہی ہے جو امدادی کاموں میں رکاوٹ کا باعث ہے۔

Urdu-Arabic-Keybaord11

ISLAMIC-MESSAGES