dushwari

روسی، شامی طیاروں کی بمباری، 13 بچوں سمیت 30 ہلاک(مزید اہم ترین خبریں)

شام 23 جنوری (فکروخبر/ذرائع)#شام کے مشرقی شہر #دیر_الزور میں جمعہ کروز شامی فوج اور اس کی حامی روسی فوج کے جنگی طیاروں نے وحشیانہ بمباری کرکے 13 بچوں سمیت 30 افراد کو ہلاک کردیا ہے۔انسانی حقوق کی صورت حال پرنظر رکھنے والے ادارے#آبزرویٹری برائے انسانی حقوق کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان میں بتایا گیا ہے کہ جمعہ کو شامی فوج اور اس کے حلیف روسی فوج کے جنگی طیاروں نے دیر الزور گورنری میں وحشیانہ بمباری کی جس کے نتیجے میں تیرہ بچوں سمیت کم سے کم تیس عام شہری مارے گئے۔خیال رہے کہ مشرقی شام کے دیر الزور گورنری میں کچھ علاقوں اور اس کے مضافات پر شدت پسند گروپ دولت اسلامی #داعش کا قبضہ ہے جب کہ گورنری کے مرکزی علاقے سمیت نصف کے قریب علاقہ شامی فوج کے کنٹرول میں ہے۔

دیر الزور کے علاقوں میں شامی فوج حالیہ ایام میں وسیع پیمانے پر حملے کرتی رہی ہے جس کے نتیجے میں عام شہریوں کی ہلاکتوں میں غیرمعمولی اضافہ ہوا۔ ایک ہفتہ قبل اس علاقے میں داعش اور شامی فوج کے درمیان لڑائی کے دوران داعش نے 130 عام شہریوں کو یرغمال بنا لیا تھا۔آبزرویٹری کی رپورٹ کے مطابق پچھلے ایک ہفتے کے سےجاری لڑائی میں دیر الزور میں 439 افراد مارےجا چکےہیں۔ ان میں بیشتر عام شہری شامل ہیں۔ جن میں زیادہ تر بچے شامل ہیں۔


صومالیہ کے ہوٹل میں فائرنگ،خاتون اور بچے سمیت 20افراد جاں بحق

مو غا دیشو۔ 23 جنوری (فکروخبر/ذرائع)صومالیہ کے دارلحکومت مو غا دیشو کے ایک ہوٹل میں فائرنگ سے 20 افراد ہلاک ہو گئے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق پولیس حکام نے بتایا کہ ٖفائرنگ کا واقعہ موغا دیشو کے سب سے گنجان آباد علاقے لائی ڈو بیچ میں پیش آیا جہاں بڑی تعداد میں ہوٹل اور کاروباری مراکز موجود ہیں۔ حملے کے دوران 5دہشتگروں نے ہوٹل میں داخل ہو کر اس وقت اندھا دھند فائرنگ کی جب لوگوں کی بڑی تعداد ڈنر میں مصروف تھی۔فائرنگ کے نتیجے میں ایک خاتون اور بچے سمیت کم از کم 20افراد جاں بحق ہو گئے۔پولیس کی جوابی کاروائی کے نتیجے میں 4حملہ آور ہلاک ہو گئے جبکہ ایک کو زندہ گرفتار کر لیا گیا۔صومالی پولیس ترجمان کے مطابق حملہ آوروں نے اس علاقے کا انتخاب اس لیے کیا تا کہ زیادہ سے زیادہ جانی نقصان ہو تا ہم پولیس کی فوری کاروائی کے نتیجے میں جانی نقصان کم ہوا۔انہوں نے مزید کہا کہ حملے کی ذمہ داری عسکریت پسند تنظیم الشباب نے قبول کی ہے جو القاعدہ کا حصہ ہے۔ 


شمالی کوریا میں مشکوک سرگرمیوں میں ملوث امریکی طالبعلم گرفتار

پیانگ ینگ۔ 23 جنوری (فکروخبر/ذرائع)شمالی کوریا میں مشکوک سرگرمیوں میں ملوث امریکی طالب علم کو گرفتار کر لیا گیا۔شمالی کوریا کے حکام کے مطابق گرفتار ہونے والا امریکی نوجوان ورجینیا یونیورسٹی کا طالبعلم ہے جسے ملکی قوانین کے خلاف مشکوک سرگرمیوں میں ملوث ہونے کے الزام میں ہاسٹل سے گرفتار کیا گیا ۔گرفتار کیے جانے والے طالبعلم سے تحقیقات کی جا رہی ہیں۔ 


سرحدوں پر موجود دہشتگردوں کے مضبوط ٹھکانوں کے خاتمے کیلئے پاکستان اور افغانستان کو ملکر کام کر نا چاہیے ٗامریکہ 

واشنگٹن ۔23 جنوری (فکروخبر/ذرائع)امریکہ نے امن کیلئے سفارتی کوششوں پر پاکستان اور افغانستان کی قیادت کے اقدام کو سراہتے ہوئے کہاہے کہ سرحدوں پر موجود دہشتگردوں کے مضبوط ٹھکانوں کے خاتمے کیلئے دونوں ممالک کو ملکر کام کر نا چاہیے ٗپاکستان اور افغانستان کے درمیان دو طرفہ تعلقات میں بہتری خطے کے استحکام کیلئے ضروری ہے ٗ مذاکراتی عمل افغانستان میں جاری تنازع کے خاتمے کا ذریعہ ہوگاواشنگٹن میں موجود ڈان کے نمائندے انور اقبال کے مطابق وائٹ ہاؤس کی جانب سے جاری کیے گئے ایک بیان میں کہا گیا کہ امریکی نائب صدر جو بائیڈن نے وزیراعظم نواز شریف اور افغان صدر اشرف غنی سے ڈیووس میں منعقدہ ایک اجلاس کے دوران دونوں پر ان کے ممالک کی سرحدوں پر موجود دہشت گردوں کے مضبوط ٹھکانوں کے خاتمے کیلئے مل کر کام کرنے پر زور دیا۔بیان میں کہا گیا کہ نائب صدر نے پر امن کوششوں کے ذریعے تشدد کو کم کرنے کیلئے ٹھوس اقدامات کرنے ٗ عسکریت پسندوں کے محفوظ ٹھکانوں کو ختم کرنے اور دو طرفہ تعاون کو فروغ دینے پر دونوں رہنماؤں کی حوصلہ افزائی کی۔امریکی نائب صدر نے ایک بار پھر مذاکرات کی امریکی حمایت کا اعادہ کیا اور پاکستان اور افغانستان کے درمیان دو طرفہ تعلقات میں بہتری اور انھیں خطے کے استحکام کیلئے اہم بنیاد قرار دیا۔امریکی اسٹیٹ ڈیپارٹمنٹ میں ایک نیوز بریفنگ کے دوران نائب ترجمان مارک ٹونر نے کہا کہ امریکااس عمل کیلئے پاکستان کی شمولیت اور حمایت کا خیر مقدم کرتا ہے اور امریکا کا موقف ہے کہ بالآخر یہ افغانستان میں جاری تنازع کے خاتمے کا ذریعہ ہوگا۔وائٹ ہاؤس کے بیان میں کہا گیا کہ امریکی نائب صدر جو بائیڈن اور جان کیری نے امن کے لیے سفارتی کوششوں پر افغانستان اور پاکستان کی قیادت کو سراہا۔


امریکی محکمہ دفاع نے افغانستان میں دہشت گرد تنظیم داعش کے جنگجوؤں کو نشانہ بنانے کیلئے کارروائیوں کی اجازت دیدی

وائٹ ہاؤس کی جانب سے دی جانے والی اجازت وقت کی ضرورت ہے ٗجان میک مکین 

واشنگٹن۔23 جنوری (فکروخبر/ذرائع) پینٹاگون نے امریکی فوجی کمانڈرز کو افغانستان میں دہشت گرد تنظیم داعش کے جنگجوؤں کو نشانہ بنانے کیلئے کارروائیوں کی اجازت دے دی ہے۔ امریکی اسٹیٹ ڈیپارٹمنٹ نے گذشتہ ہفتے جاری ہونے والے ایک بیان میں افغانستان میں موجود داعش کے خراسان گروپ کو عالمی دہشت گرد تنظیم قرار دیا تھا۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق امریکی سینیٹ کی آرمڈ سروسز کمیٹی کی صدارت کرتے ہوئے ریپبلکن سے تعلق رکھنے والے سینیٹر جان میک کین نے کہا کہ معلوم ہوتا ہے کہ امریکی صدر براک اوباما کی ڈیموکریٹ انتظامیہ اب اس حقیقت کے حوالے سے جاگ گئی ہے کہ ایک سال سے بھی زائد جاری رہنے والی امریکی فوجی مہم کے باوجود، داعش عالمی سطح پر پہنچ گئی ہے اور بڑھ رہی ہے۔جان میک کین نے ایک سماعت کے دوران بتایا کہ وائٹ ہاؤس کی جانب سے دی جانے والی اجازت وقت کی ضرورت ہے ہم میں سے بیشتر یہ جاننا چاہتے ہیں کہ کیا ہم نے داعش کے خلاف اپنے حملوں کو عراق اور شام تک محدود کرلیا ہے۔


گوانتانا موکے امریکی حراستی مرکز میں 14 سال مقید رہنے والے قیدی کا آزادی کی پیشکش قبول نہ کرنے کا فیصلہ 

ہوانا ۔23 جنوری (فکروخبر/ذرائع)کیوبا میں خلیج گوانتانامو کے متنازع امریکی حراستی مرکز میں 14 سال مقید رہنے والے ایک قیدی نے آزادی کی پیشکش قبول نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔یمن سے تعلق رکھنے والے محمد بوازر کو رہائی کے بعد ان کے آبائی وطن کی جگہ کسی دیگر ملک بھیجنے کا فیصلہ کیا گیا تھاتاہم اْن کا کہنا ہے کہ وہ صرف اْس جگہ کیلئے جیل چھوڑیں گے جہاں پہلے ہی اْن کا خاندان موجود تھا تاہم اْن کے وکیل کے مطابق یہ ایک جذباتی ردِعمل ہے اوراْن کے لیے مجوزہ نیا گھر ایک بہت اچھی جگہ‘ ثابت ہوگا۔گوانتانامو میں پہلی مرتبہ 11 جنوری 2002 کو 20 قیدی لائے گئے اور اس کے بعد سے اب تک یہاں کل 780 افراد قید کیے جا چکے ہیں جن میں سے بیشتر پر نہ تو کوئی الزام عائد کیا گیا اور نہ ہی مقدمہ چلا۔2015 میں 20 افراد کی گوانتانامو سے رہائی عمل میں آئی تھی ٗ 2014 میں اس قید خانے سے 28 قیدی رہا کیے گئے جو صدر اوباما کے 2009 میں امریکی صدر بننے کے بعد سب سے بڑی تعداد تھی۔


کروڑوں امریکی برفانی طوفان سے متاثر ہو سکتے ہیں ٗ امریکی محکمہ موسمیات 

واشنگٹن ۔23 جنوری (فکروخبر/ذرائع)امریکہ کے محکمہ موسمیات نے خبردار کیا ہے کہ ملک کے مشرقی علاقوں میں شدید برفباری سے کروڑوں افراد کی زندگی بری طرح متاثر ہو سکتی ہے۔نیشنل ویدر سروس نے اپنی تنبیہ میں کہا کہ واشنگٹن اور بحرِ اوقیانوس کی ساحلی ریاستوں میں مفلوج کر دینے کی صلاحیت رکھنے والے برفانی طوفان میں ریکارڈ برف پڑنے کا امکان ہے۔پیشن گوئی میں کہا گیا کہ طوفان کے دوران بعض علاقوں میں چند گھنٹے کے دوران تقریبا دو فٹ تک برف پڑے گی اور اس کا سب سے زیادہ اثر ریاست واشنگٹن پر ہوگا۔حکام کے مطابق طوفان کے دوران بجلی کی فراہمی متاثر ہوسکتی ہے اور عین ممکن ہے کہ ٹرین اور فضائی سفر بھی کچھ وقت کے لیے روکنا پڑے۔پیشن گوئی کے بعد امریکہ کی مشرقی ساحلی ریاستوں میں دکانوں پر عوام کی لمبی قطاریں دیکھی گئی ہیں ٗ دکانوں پر اشیائے خوردونوش کی قلت پیدا ہوگئی ہے۔نیشنل ویدر سروس نے خبردار کرتے ہوئے کہا کہ زبردست برفباری اور تیز ہوا کے ساتھ اڑنے والی برف سے خطرناک صورت حال پیدا ہونے کا امکان ہے جو زندگی اور جائیداد کے لیے خطرہ ثابت سکتی ہے۔واشنگٹن کے میئر نے شہر میں 15 دنوں کے لیے ہنگامی حالات کے نفاذ کا اعلان کیا ہے۔ اس کے ساتھ ریاست میری لینڈ، نارتھ کیرولائنا ، پینسلوینیا اور ورجینیا کے گورنروں نے بھی ہنگامی حالات کا اعلان کیا ہے۔اس دوران تمام سکول بند رہیں گے اور انتظامیہ نے برف سے نمٹنے کے لیے ابھی سے سڑکوں پر نمک ڈالنے کا کام شروع کر دیا ہے۔


مبینہ جنگی جرائم کے الزامات کی تفتیش میں بیرونی ججوں اور وکلا کو شامل نہیں کیا جانا چاہیے ٗسری لنکن صدر 

تفتیش ملک کے قوانین کی خلاف ورزیوں کے بغیر داخلی طور پر ہونی چاہیے ٗ میتھری پالا سریسنیا 

کولمبو ۔23 جنوری (فکروخبر/ذرائع)سری لنکا کے صدر میتھری پالا سریسنیا نے کہاہے کہ مبینہ جنگی جرائم کے الزامات کی تفتیش میں بیرونی ججوں اور وکلا کو شامل نہیں کیا جانا چاہیے۔صدر میتھری پالا سریسینا نے ایک انٹرویو میں کہا کہ ملک میں ایسے ماہرین کی باہر سے درآمد کی ضرورت نہیں ہے۔ صدر نے کہا کہ میں کبھی بھی اس معاملے عالمی شمولیت پر اتفاق نہیں کروں گاہمارے پاس اپنے خود کے داخلی معاملات حل کرنے کے لیے بہت سے خصوصی ماہرین اور اہل علم افراد ہیں انہوں نے کہاکہ یہ تفتیش ملک کے قوانین کی خلاف ورزیوں کے بغیر داخلی طور پر ہونی چاہیے اور مجھے عدالتی نظام اور اس سے متعلق ملک کے دیگر محکموں پر پورا یقین ہے۔ عالمی برادری کو ملک کے اندرونی معاملات کے متعلق فکر مند ہونے کی ضرورت نہیں ہے جب ان سے سوال کیا گیا کہ عدالتوں کا قیام کب تک ہو جائے گا تو انہوں نے کہا کہ یہ چیزیں فوری طور پر یا جلد بازی میں نہیں کی جا سکتیں۔ ہم اپنا ہدف ایک عمل کے تحت پورا ضرور کرلیں گے۔گذشتہ برس اکتوبر میں اقوام متحدہ میں انسانی حقوق کی کونسل میں اس معاملے پر جو قرارداد پیش کی گئی تھی اس کی حمایت سری لنکا نے بھی کی تھی۔ قرارداد میں دولت مشترکہ کے ممالک کی مدد سے ایک خصوصی عدالتی نظام کے قیام کی بات کہی گئی تھی جس میں بیرونی ممالک کے ججوں، وکلا اور تفتیش کاروں کو شامل کرنے کی تجویز تھی۔تمل ٹائیگرز کے ساتھ تنازعے اور خانہ جنگی کے دوران تقریبا ایک لاکھ لوگ ہلاک ہوئے تھے۔ یہ لڑائی تقریبا 26 برس تک چلی لیکن بالآخر سری لنکا نے بغاوت کو کچل دیا۔حقوق انسانی کی علمبردار تنظیمیں یہ الزام لگاتی رہی ہیں کہ اس لڑائی کے دوران انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں ہوئی ہیں جن کی تفتیش ہونی ضروری ہے۔صدر سریسینا نے کہا کہ اس سلسلے میں اقوام متحدہ نے گذشتہ ستمبر میں جو رپورٹ جاری کی تھی اس میں فوج کے جرائم میں شامل ہونے کی طرف اشارہ کیا گیا تھا لیکن رپورٹ کسی بھی فوجی کا نام بتانے میں ناکام رہی۔انہوں نے کہا کہ اگر سری لنکا کی فوج پر اس طرح کے کوئی الزامات ہیں تو ہماری پہلی تشویش یہ ہونی چاہیے کہ ہم انہیں ان الزامات سے بری کرائیں۔ اگر کسی نے کوئی جرم کیا ہے تو پھر اس میں کوئی شک نہیں کہ اسے اس کی سزا ملے۔ لیکن جو بھی کچھ ہوا اس کے لیے پوری فوج کو ذمہ دار ٹھہرانا غلط ہیے۔


فرانسیسی عجائب گھر نے ساتویں صدی کے ہندو مجسمے کا سر 130 سال بعد کمبوڈیا کو واپس کر دیا

پیرس23 جنوری (فکروخبر/ذرائع)فرانسیسی عجائب گھر نے ساتویں صدی کے ہندو مجسمے کا سر 130 سال بعد کمبوڈیا کو واپس کر دیا ہے۔کمبوڈیا پر حکمرانی کے دوران ہندو دیوتا دشنا اور شوا کے مجسمے کا سر فرانس لے گیا تھا ٗکمبوڈیا کی درخواست پر فرانسیسی عجائب گھر نے یہ سر واپس کیاکمبوڈیا کی وزارت برائے ثقافت کے ترجمان نے کہا کہ مجسمے کا سر دھڑ سے ملانے کے بعد ایسا لگا جیسا ہم اپنے قومی اثاثے کی روح کو ملا رہے ہیں۔یہ مکمل مجسمہ ٹاکیو صوبے میں واقع نوم ڈا مندر میں تھا اور اس کا سر 1886 میں فرانس لے جایا گیا۔یاد رہے کہ کمبوڈیا کی حکومت کچھ عرصے سے مختلف ممالک سے ملک سے بغی اجازت لے گئی اشیا کی واپسی کا مطالبہ کر رہی ہے۔تین سال میں امریکی عجائب گھروں اور ناروے میں ایک شخص نے کئی مجسمے کمبوڈیا کو واپس کیے ہیں۔


امریکا میں شدید برفباری اور طوفان کے باعث نظام زندگی مفلوج،میٹرو سروس

40 سال بعد بند،دارالحکومت اور اس کے گردونواح میں مزید برفباری کا امکان 

واشنگٹن ۔23 جنوری (فکروخبر/ذرائع) امریکا میں شدید برفباری اور طوفان کے باعث نظام زندگی مفلوج ہو کر رہ گیا۔امریکا کی نیشنل ویدر سروس کا کہنا ہے کہ ملک کے دارالحکومت اور اس کے گردونواح میں مزید برفباری کا امکان ہے۔ حکام کا کہنا ہے کہ برفباری کے دوران شہری سفر سے گریز کریں۔شدید برفباری اور طوفان کے باعث حکام نے شہر کی ریلوے اور بس سروس کو بھی پیر کی صبح تک بند کر دیا ہے۔ واشنگٹن پوسٹ کا کہنا ہے کہ میٹرو سروس کو 40 سال بعد بند کیا گیا ہے۔ ماہرین موسمیات کا کہنا ہے کہ شدید برفباری سے امریکا کی 15ریاستیں متاثر ہو سکتی ہیں اور طوفان کے زیر اثر انتہائی تیز ہوائیں چلنے سے بجلی کا نظام بھی متاثر ہو سکتا ہے۔واضح رہے کہ امریکا میں شدید برفباری اور طوفان کے باعث نظام زندگی مفلوج ہو کر رہ گیا اور طوفان کے باعث سینکڑوں فلائیٹس تاخیر کا شکار ہونے کے ساتھ ساتھ ریل اور بس سروس کو بھی معطل کردیا گیا ہے اور لوگوں کو گھروں میں رہنے کی ہدایات جاری کی گئی ہیں۔


امریکی ریاست الباما میں خاتون کے قاتل کو زہریلا انجکشن لگا کر پھانسی دے دی گئی

واشنگٹن ۔ 23 جنوری (فکروخبر/ذرائع)امریکی ریاست الباما میں ایک شخص کو خاتون کے قتل کے الزام میں پھانسی دے دی گئی۔ذرائع ابلاغ کے مطابق امریکا کی ریاست الباما میں 43سالہ کرسٹوفر ایوگن بروکس نامی شخص کو زہریلا انجکشن لگا کر پھانسی دے دی گئی۔کرسٹوفر پر الزام تھا کہ اس نے 1992ء میں ایک خاتون کو لوہے کی سلاخیں مار کر قتل کر دیا تھا۔واضح رہے کہ جولائی 2013ء کے بعد الباما میں پہلی بار کسی قیدی کو پھانسی دی گئی ہے۔


امریکی ریاست ایری زونا میں ایف سولہ لڑاکا طیارہ گر کر تباہ

لاس اینجلس ۔23 جنوری (فکروخبر/ذرائع) امریکی ریاست ایری زونا میں ایف سولہ لڑاکا طیارہ گر کر تباہ ہوگیا۔امریکی فضائیہ کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ ایف سولہ لڑاکا طیارہ جمعرات کی صبح 8:45 منٹ پر ایری زونا کے جنوب مغربی علاقے میں گر کر تباہ ہوا ہے اور حادثے کے بعد پائلٹ کی تلاش کا کام جاری ہے۔ حکام کا کہنا ہے کہ ابھی تک حادثے کی وجوہات معلوم نہیں ہوسکیں ہیں تاہم پائلٹ کی تلاش اور ملبے کو اٹھانے کا کام جاری ہے۔ 

Urdu-Arabic-Keybaord11

ISLAMIC-MESSAGES