dushwari

وسیم رضوی نے مدارس کے بہانے قرآن وحدیث کی تعلیمات کوبدنام کرنے کی مذموم کوشش کی ہے

ملک گیرسطح پرمدارس کے ذمہ داران وسیم رضوی کے خلاف ہتک عزت کامقدمہ دائرکریں:غفران ساجدقاسمی

ممبئی۔13جنوری2018(فکروخبر/ذرائع) شیعہ وقف بورڈ کے چیئرمین وسیم رضوی کاحالیہ بیان ان کے ذہنی دیوالیہ پن کاواضح ثبوت ہے،جب سے یوپی میں یوگی کی سرکاربنی ہے وہ بی جے پی اوراAرایس ایس کاچہیتابننے کی چاہت میں اAئے دن کوئی نہ کوئی متنازعہ بیان دیتے رہتے ہیں۔مدارس کے خلاف ان کی زہرافشانی اسی سلسلہ کی ایک کڑی ہے،انہوں نے مدارس کودہشت گردی کااڈہ بتاکربراہِ راست اسلام کی تعلیمات کوبدنام کرنے کی مذموم کوشش کی ہے جس کے لئے انہیں معاف کرنامزید دریدہ دہنوں کوپیداکرنے کے مترادف ہے۔

وسیم رضوی خبط الحواس ہوچکے ہیں اوران کے ذہن کادیوالیہ نکل چکاہے،انہیں سبق سکھانے کے لئے ضروری ہے کہ ملک گیرسطح پرمدارس کے ذمہ داران ان کے خلاف ہتک عزت کامقدمہ دائرکرکے انہیں قانونی نوٹس بھیجیں تاکہ ان کی عقل ٹھکانے لگ سکے۔ان خیالات کااظہارعالمی تنظیم ابنائے قدیم دارالعلوم دیوبندکے کنوینر مولاناغفران ساجدقاسمی نے اپنے پریس بیان میں کیا۔انہوں نے ملکی سطح پرمدارس کے ذمہ داران سے اپیل کی ہے کہ وہ اپنے اپنے ضلع سے وسیم رضوی کے خلاف عدالت میں ہتک عزت کامقدمہ دائرکرکے انہیں قانونی نوٹس بھجوائیں اورہرشخص اسے اپنی دینی وملی ذمہ داری سمجھتے ہوئے ضرور کرے۔مولاناقاسمی نے کہاکہ مدارس کی تعلیمات قرا?ن وحدیث پرمبنی ہوتی ہیں اورقرا?ن وحدیث کی تعلیمات انسانیت کوامن وسلامتی کادرس دیتی ہیں،تشدداوردہشت گردی کااسلام کی تعلیمات سے دوردورتک کوئی تعلق نہیں ہے۔انہوں نے مزیدکہاکہ اگراس شخص کے پاس ذرابھی تاریخ اوراپنے ماضی کاعلم ہوتاتوانہیں پتہ چل جاتاکہ آج جس ملک میں وہ آزادی کی سانسیں لے رہے ہیں اس ملک میں آزادی کاصورپھونکنے والے مجاہدین آزادی اسی مدرسہ کے پروردہ تھے جنہوں نے اپنے وطن کی آزادی کے لئے غاصب انگریزقوم کے خلاف جہادکیااوراسے وطن سے بھگاکردم لیا۔ا?ج اگریہ علمائے کرام نہ ہوتے توشایدہندوستان کی قسمت میں آزادی نصیب نہ ہوتی۔مولاناقاسمی نے مزیدکہاکہ وسیم رضوی کوسوچناچاہئے کہ مدارس اسلامیہ ملک کی تعمیروترقی میں انتہائی اہم رول اداکررہے ہیں،مدارس کے فارغین انسانیت کادرس لے کرمدارس سے نکلتے ہیں اورپوری قوم کوانسانیت کادرس دیتے ہیں،مدارس کے طلبہ کبھی بے روزگاری کارونانہیں روتے اورنہ ہی بے روزگاری سے تنگ آکرخودکشی جیسابزدلانہ قدم اٹھاتے ہیں،وہ اپنی صلاحیتوں سے ملک کی تعمیروترقی میں نمایاں کرداراداکرتے ہیں۔مولانانے اپنے بیان میں مزیدکہاکہ ہندوستان کی حکومت گذشتہ کئی سالوں سے مدارس کے خلاف دہشت گردی کاثبوت اکٹھاکرنے کی کوشش میں مصروف ہے،لیکن حکومت کوآج تک اس معاملے میں ناکامی کامنھ دیکھناپڑاہے،کچھ دنوں پہلے وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ مدارس کو کلین چٹ بھی دے چکے ہیں اس کے برعکس دہشت گردی کے کئی معاملات ایسے سامنے آئے ہیں جن میں ملوث لوگوں کی تربیت دوسرے اداروں سے ہوئی ہے۔لہٰذاوقت آگیاہے کہ ایسے دریدہ دہن اوربے ضمیرشخص کوسبق سکھانے کے لئے پورے ملک کے ارباب مدارس اپنے اپنے ضلع سے عدالت میں وسیم رضوی کے خلاف ہتک عزت کامقدمہ دائرکریں اورمدارس کی شبیہ خراب کرنے کی پاداش میں ان کو ہرجانے کاقانونی نوٹس بھیجیں۔اس موقع پرمولاناقاسمی نے جمعیت علماء مہاراشٹرکے اقدام کی تعریف کرتے ہوئے کہاکہ جس طرح جمعےۃ نے وسیم رضوی کوہرجانہ کاقانونی نوٹس بھیجاہے ضرورت ہے کہ ملک کے بڑے مدارس دارالعلوم دیوبند،ندوۃ العلماء لکھنو،مظاہرعلوم سہارنپور،جامعہ قاسمیہ شاہی مرادآباد،جامعہ اشرفیہ مبارکپوراعظم گڑھ،جامعہ الفلاح بلیریاگنج اعظم گڑھ ،جامعہ سلفیہ بنارس اوراسی طرح ملک کے تمام مدارس کے ذمہ داران مدارس اسلامیہ کی شبیہ کوداغدارکرنے کی پاداش میں وسیم رضوی کے نام ہتک عزت کامقدمہ دائرکرتے ہوئے اسے ہرجانہ کاقانونی نوٹس بھیجیں،تاکہ آئندہ کوئی دوسراوسیم رضوی پیدانہ ہوسکے۔

Urdu-Arabic-Keybaord11

ISLAMIC-MESSAGES