dushwari

مطلقہ خواتین کے ساتھ انصاف نہیں بلکہ سخت نا انصافی کا خطرہ ہے اس کے علاوہ مرد کے جیل جانے کی سزا عملی طور پر عورت اور بچوں کو بھگتنی پڑے گی ۔جمعیۃعلماء ہند مظفر نگر

وسیم رضوی کے بیان کے خلاف آج جمعےۃ علماء نے سنگین دفعات میں مقدمہ درج کرایا

مظفر نگر 13؍جنوری2018(فکروخبر /شا ہد حسینی) جمعیۃ علماء ضلع مظفرنگر کی ایک ہنگامی میٹنگ آج دفتر جمعیۃ علماء، مسجد نمائش کیمپ مظفرنگر میں ہوئی۔ جس میں جمعیۃ علماء ضلع مظفرنگ کے سبھی عہدیداران اور کارکنان نے حصہ لیا۔ میٹنگ میں اتفاق رائے سے قراردادپاس ہوئی ،جس سے متعلق مشورہ طے ہو نے کے بعد ایک میمورنڈم وزیر اعلی کی خدمت میں بذریعہ ضلع مجسٹریٹ پیش کیا گیاجس میں کہا گیا ہے کہ جمعیۃ علماء ضلع مظفرنگر اور تمام مسلمانان مظفرنگر کی آواز پر غور و فکر کیا جائے اور ہمارے مطالبات کو پورا کیا جائیطلاق ثلاثہ پر سزا کا جو مسودہ قانون پیش کیا گیا ہے اس سے مسلم مطلقہ خواتین کے ساتھ انصاف نہیں بلکہ سخت نا انصافی کا خطرہ ہے،

اس لیے اسے ہر گز قبول نہیں کیا جاسکتا ۔اس قانون کے تحت اس کاقوی امکا ن ہے کہ مطلقہ خواتین ہمیشہ کے لیے معلق ہو جائیں گی اور ان کے لیے دوبارہ نکاح اور از سرنو زندگی شروع کرنے کا ر استہ یکسرختم ہو جائے ۔ اس طرح طلا ق کے جواز کا مقصد فوت ہو جائے گا ۔اس کے علاوہ مرد کے جیل جانے کی سزا عملی طور پر عورت اور بچوں کو بھگتنی پڑے گی ۔لہٰذا جمعیۃ علماء ضلع مظفرنگر آپ سے مطالبہ کرتی ہے کہ اس قانون کو ختم کیا جائے اور مسلم عورتوں کے تئیں ہمدردی اور خلوص کا راستہ اپناتے ہوئے انہیں سرکاری دوسری مراعات و دیگر سہولیات فراہم کی جائیں۔ جس سے مسلم خواتین کو فائدہ ہو اور ان کا تحفظ ہو سکے اسی کے سا تھ ساتھ جمعےۃ علماء مظفر نگر نے ایس ایس پی سے مطا لبہ کیا ہے کہ گذشتہ دنوں شیعہ وقف بورڈ کے چیرمین وسیم رضوی نے مدارِس اسلامیہ پر دہشت گردی کے اڈے ہونے کا الزام عائد کیا ہے، ہم اس کی نہایت سخت الفاظ میں مذمت کرتے ہیں اور وسیم رضوی کے ان احمقانہ خیالات کو کنڈم کرتے ہیں اور آپ سے مطالبہ کرتے ہیں کہ وسیم رضوی کے بیان سے لاکھوں مسلمانوں کے دلوں کو زبردست ٹھیس پہنچی ہے، لہٰذا موصوف کو فوراً برخاست کرکے گرفتار کیا جائے اور مقدمہ چلایا جائے۔ جس سے آئندہ کسی کو مدارس کے سلسلے میں غلط بیانی کرنے سے روکا جا سکے۔میمو رنڈم دینے وا لوں میں ضلع کے سیکڑوں لو گوں نے شریک ہو کر اپنے غصے کا اظہار کر تے ہو ئے کہا کہ ایسے افراد کے خلا ف سخت کارروا ئی کی جا ئے جو ملک میں بد امنی پھیلا نے کا کام کر تا ہو مو لانا نذرمحمد نے کہا کہ وسیم رضوی میر جعفر کی اولاد ہے جو اپنے آقا ؤکی خو شنودی حا صل کر نے کے لئے کچھ بھی کہنے کو تیار ہو گئے انہوں نے ان مدارس اسلا میہ پر انگشت نما ئی کی ہے جن مدارس نے ملک کی آزا دی کا بگل بجا یا اور آزاد کرایا طلاق ثلا ثہ پر بات کر تے ہو ئے مو لانا نے کہا کہ آج تین طلاق دینے والوں کو تین سا ل کی سزا کا قانون نافذ کیا مگر جنہوں نے میاں بیوی کا بندھن باندھنے کیلئے سات پھیرے لئے ہوں اور پھر بغیر طلاق دئے اپنی بیوی کو الگ کر دیا ہو ایسے افراد کو سات سال کی سزا ہو نی چا ہئے اور اس میں سب سے پہلے ہما رے ملک کے وزیر اعظم سات سال کی سزا کے مستحق ہیں جو اپنی بیویوں کے حقوق ادا نہ کرسکے ہوں وہ مسلم عو رتوں کو کیا حق دلا ئیں گے جو بنیا دی حقو ق ہیں ان پر تو جہ دی جا ئے تعلیم میں مسلم معاشرہ کتنے پیچھے ہے اس پر تو جہ دی جا ئے تو زیادہ بہتر ہوگا اس مو قع پر جمعےۃ علماء کے ارکان عہدیداران شریک رہے جن میں بطور خاص مو لانا نذر محمد ،حا جی محمد شا ہد تیا گی،مو لانا شا ہنواز قاسمی،مو لانا طاہر قا سمی،حا جی عزیز الرحمن،قا ری شا ہد حسینی،مو لانا محمد قاسم،مو لانا مکرم،مو لانا ایوب،قا ری محمد اسرار،سلیم ملک،اکرام قصار،مو لانا عبد اللہ،قا ری سلیم قاسمی،بدر الزماں خان،شمیم قصار،قا ری شا ہنواز،حا فظ جسیم،حا فظ تحسین،مو لانا مد ثر،مو لانا اسرائیل،مولانا نسیم،مو لانا انعام ،مو لانا عبد القادر،قا ری عبد السلام،مو لانا زبیر رحمانی،مو لانا محمد احمد،عقیل احمد،محمد جمیل،قا ری عمر ،قا ری عبد الرحمن، مو لانا مجیب،مفتی عبد القیوم،محمد علی علوی،مو لانا ابو الکلام،مفتی تنمیق،مو لانا یا مین،مرسلین پر دھان،شریک رہے۔

Urdu-Arabic-Keybaord11

ISLAMIC-MESSAGES