dushwari

وزیر اعظم مودی پر بھڑکے یشونت سنہا، کہا ، اندرا جیسا ہو سکتا ہے حال(مزید اہم ترین خبریں)

ڈونا پاؤلا (گوا)،31جنوری(فکروخبر/ذرائع ) بھارتیہ جنتا پارٹی کے لیڈر یشونت سنہا نے وزیر اعظم نریندر مودی اور ان کی حکومت کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا کہ اس میں کوئی بات چیت نہیں ہو رہی اور اس حکومت کا حال اندرا گاندھی کی قیادت والی اس کانگریس حکومت کی طرح ہو سکتا ہے جسے ایمرجنسی کے بعد منہ کی کھانی پڑی تھی۔ بی جے پی کے کئی سینئر رہنماؤں کے ساتھ پارٹی میں حاشیہ پر ڈال دیئے گئے سنہا نے یہاں منعقد 'ڈفیکلٹ ڈائیلاگ' میں یہ بیان دیا۔ مارکسی کمیونسٹ پارٹی جنرل سکریٹری سیتا رام یچوری نے بھی اس کانفرنس سے خطاب کیا۔سنہا نے کہا کہ یقینی طور پر کوئی بات چیت نہیں ہونے کی کوئی گنجائش نہیں ہے،

یہ ہندستانی جمہوریت کی سب سے بڑی طاقت ہے۔ یہاں وہاں بھول تو ہو گی ہی، فکر موجودہ حالات کو لے کر ہے۔ لیکن عظیم ہندوستانی سماج اس کا خیال رکھے گا اور ہندستان میں بات چیت میں یقین نہیں رکھنے والوں کو دھول چٹا دے گا۔اٹل بہاری واجپئی حکومت میں خزانہ اور وزیر خارجہ رہ چکے سنہا نے مودی کا نام لئے بغیر کہا کہ ہندستان کے لوگ انہیں دھول چٹا دیں گے۔ آپ کو صرف اگلے انتخابات کا انتظار کرنا ہے۔ کانگریس کو اقتدار سے باہر کر دینے والے 1977 کے عام انتخابات کا ذکر کرتے ہوئے سنہا نے کہا کہ بات چیت کو نظر انداز کرنے سے حکومت 19 ماہ ہی ٹک سکے گی۔ غور طلب ہے کہ ایمرجنسی بھی 19 ماہ تک نافذ تھی۔سنہا نے کہا کہ ہم سب کو معلوم ہے کہ ہندوستان کے لوگوں نے ایمرجنسی پر کیسی رائے دی تھی جو اختلاف کے سر کو برقرار رکھنے کے لئے ہمارے ملک میں سب سے طاقتور جمہوری کوشش تھی۔ معاشرے میں بات چیت روک نہ دی جائے، اس بات کا یقین کرنے کی ضرورت پر یچوری کی مداخلت پر سنہا نے کہا کہ میں صرف اتنا کہوں گا کہ رکاوٹ ڈالنے والا سنگین مشکل میں ہے۔


مرکزی حکومت امتیازی سلوک کو روکنے کے لئے قانون لائے: راہل

حیدرآباد،31جنوری(فکروخبر/ذرائع ) کانگریس کے نائب صدر راہل گاندھی نے ملک میں اعلی تعلیمی اداروں اور یونیورسٹیوں میں نسل کی بنیاد پر امتیازی سلوک کو روکنے کے لئے مرکزی حکومت سے قانون بنانے کی اپیل کی ہے۔ مسٹر گاندھی حیدرآباد یونیورسٹی میں دلت اسکالر روہت ویمولا کی خود کشی کے خلاف مظاہرہ کر رہے طالب علموں کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کرتے ہوئے کل دیر رات ان کے ساتھ بھوک ہڑتال میں شامل ہوئے۔ مسٹر گاندھی نے مظاہرہ کی قیادت کر رہی مشترکہ ورکنگ کمیٹی کے رہنماؤں کی طرف سے لیموپانی کی پیشکش کے بعد اپنی بھوک ہڑتال ختم کی۔بعد میں کانگریس لیڈر نے نامہ نگاروں سے کہا کہ دوسری بار یونیورسٹی کیمپس کا دورہ کرنے کا ان کا مقصد روہت کے خاندان کے لئے انصاف مانگنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ روہت یونیورسٹی انتظامیہ کے ظلم کا شکار ہوا اور اسے سچ نہیں بولنے دیا گیا۔ مسٹر گاندھی نے کہا کہ روہت کی خود کشی جیسے واقعات تشویش کا موضوع ہیں۔ ملک میں کہیں بھی دوبارہ ایسا واقعہ نہیں ہونا چاہئے۔ سابق لوک سبھا اسپیکر پی اے سنگما، روہت کی ماں رادھیکا اور بھائی راجو اور دیگر طالب علم بھی بھوک ہڑتال میں شامل ہوئے۔ مسٹر راہل گاندھی رات تقریبا 11:50 منٹ پر شمش آباد ہوائی اڈے پہنچے اور وہاں سے وہ روہت کی ماں رادھیکا کے ساتھ حیدرآباد یونیورسٹی گئے۔ انہوں نے یونیورسٹی کے احاطے میں تعمیر عارضی یادگار پر گلہائے عقیدت پیش کئے۔ طالب علموں نے روہت ویمولا کی یاد میں یونیورسٹی کے احاطے میں موم بتی مارچ نکالا جس میں مسٹر گاندھی بھی شامل ہوئے۔روہت کی ماں نے کینڈل مارچ کی قیادت کی اور اس دوران یونیورسٹی کیمپس میں 'ہمیں انصاف چاہیے' کے نعرے گونج رہے تھے۔ اس کے بعد مسٹر گاندھی خود کشی کی مخالفت میں 18 گھنٹے کی اجتماعی بھوک ہڑتال پر بیٹھے طالب علموں کے ساتھ مظاہرے کے مقام پر بیٹھے۔ یہ طالب علم روہت کی خود کشی کے لئے وائس چانسلر پی اپا راؤ اور انچارج وائس چانسلر وپن شریواستو کو ذمہ دار قرار دیتے ہوئے ان کے استعفی کا مطالبہ کر رہے ہیں۔ مسٹر گاندھی کے یونیورسٹی پہنچنے سے پہلے اکھل بھارتیہ ودیارتھی پریشد (اے بی وی پی) کے تقریبا 200 کارکنوں نے ان کی کار کا راستہ روکنے کی کوشش کی۔ موقع پر پہنچی پولیس نے کارکنوں کو منتشر کرنے کے لئے لاٹھی چارج کیا۔ اے بی وی پی نے مسٹر گاندھی پر روہت کی خود کشی پر سیاست کرنے کا الزام لگاتے ہوئے ان کے دورے کی مخالفت کی۔ خیال رہے کہ یونیورسٹی نے روہت کے ساتھ چار دیگر ریسرچ اسکالروں کو ہاسٹل سے نکال دیا تھا جس کے بعد روہت نے خود کشی کر لی تھی۔اس سے قبل مسٹر گاندھی نے 19 جنوری کو بھی حیدرآباد یونیورسٹی کا دورہ کرکے روہت کی خود کشی کے لئے ذمہ دار تمام لوگوں کے خلاف سخت کارروائی کی مانگ کی تھی۔ انہوں نے اس کے رشتہ داروں سے ملاقات کرکے تعزیت کا بھی اظہار کیا تھا۔۔


میرٹھ ڈسٹرکٹ جیل میں قیدی کی خود کشی

میرٹھ ۔31جنوری(فکروخبر/ذرائع )اتر پردیش کی میرٹھ ڈسٹرکٹ جیل میں آج ایک زیر سماعت قیدی نے درخت پر لٹک کر خودکشی کر لی۔پولس کے مطابق برہم پوری کے رہنے والے یوگیش چھیڑ چھاڑ کے الزام میں میرٹھ کی چودھری چرن سنگھ ڈسٹرکٹ جیل میں بند تھا۔تین دن پہلے یہاں عدالت میں پیشی سے لوٹنے کے بعد وہ مسلسل ڈپریشن میں تھا اور ساتھی قیدیوں سے بھی بات نہیں کر رہا تھا۔جیل کے احاطے میں بیرک کے باہر ایک درخت پر اس کی لاش لٹکی ہوئی ملی ۔جیل انتظامیہ نے اس کی اطلاع ضلع انتظامیہ اور پولس کو افسروں کو دی ۔سینئر جیل سپرنٹنڈنٹ ایس ایچ ایم رضوی نے بتایا کہ اس بات کی تفتیش کی جارہی ہے کہ زیر سماعت قیدی نے کس طرح پھانسی لگائی اور اس تک رسی کیسے پہنچی ۔


ٹیمپو پلٹنے سے سات افراد زخمی

بلند شہر۔31جنوری(فکروخبر/ذرائع )اتر پردیش میں بلند شہر کے کھرجا کوتوالی علاقے میں آج ایک ٹیمپو کے پلٹ جانے سے اس پر سوار سات افراد زخمی ہو گئے ۔پولس کے مطابق میرا پور گاؤں کے پاس ایک ٹیمپو ڈرائیور کی لاپرواہی کی وجہ سے پلٹ گیا۔حادثے میں اس پر سوار ڈرائیور سمیت سات افراد زخمی ہو گئے ۔زخمیوں کو اسپتال میں داخل کرا دیا گیا ہے ۔جس میں تین افراد کی حالت نازک ہے ۔


ہندستان کی سیر پر نکلے بودھ بھکشوؤں کا گروپ بلرام پہنچا

بلرام پور۔31جنوری(فکروخبر/ذرائع )خواتین کو بااختیار اور ماحولیات کے تئیں لوگوں میں بیداری پیدا کرنے کیلئے ہمسایہ ملک نیپال کی راجدھانی کاٹھمنڈو سے نکلا بودھ بھکشوؤں کا ایک گروپ آج اترپردیش کے بلرام پور پہنچا۔بودھ مذہبی رہنما گوال واڈ ڈکپا کی قیادت میں 250 بودھ بھکشوؤں کاایک گروپ سائیکل سے یہاں پہنچا۔ بودھ مذہبی پیشوا مسٹر ڈکپا نے بتایا کہ یہ گروپ ہندستان میں تقریباً چار ہزار کلومیٹر کی دوری سائیکل سے طے کرے گا اور گاؤں شہروں میں لوگوں کو ماحولیات کو صاف ستھرا رکھنے کے ساتھ عورتوں کو ان کے حقوق اور ذمہ داری کے تئیں بیدار کرے گا۔مسٹر ڈکپا نے بتایا کہ سائیکل سے ان کا سفر تین فروری کو وارانسی سے سارناتھ پہنچ کر ختم ہوگا۔ اس کے بعد یہ گروپ واپس نیپال لوٹ جائے گا۔


لکھنؤیونیورسٹی کا سالانہ جلسہ تقسیم اسناد31جنوری کو

لکھنؤ۔31جنوری(فکروخبر/ذرائع )لکھنؤ یونیورسٹی(ایل یو ) کا 58واں سالانہ جلسہ کل منعقد کیاجارہا ہے ۔اس جلسے میں یونین سائنس اور ٹیکنو لوجی وزیر ہرش وردھن مہمان خصوصی کے طور پر شرکت کریں گے ۔لکھنؤ یونیورسٹی کے چانسلر اور اتر پردیش کے گورنر رام نائک جلسے کے مہمان اعزازی ہوں گے ۔یہ جلسہ کل 11 سے پانچ بجے کے درمیان ہوگا۔لکھنؤ یونیورسٹی کے وائس چانسلر ایس بی نمسے نے آج کہا کہ جلسے کی تمام تیاریاں مکمل کر لی گئی ہیں۔اس سال یورسٹی گرانٹ کمیشن کی ہدایات کے مطابق طلبہ سالانہ جلسے میں روایتی لباس میں شرکت کریں گے ۔ واضح ر ہے کہ تمغے پانے والے طلبہ میں لڑکیوں کی تعداد زیادہ ہے البتہ طویل وقفے کے بعد اول آنے پر یونیورسٹی کے دو لڑکوں کوبھی تمغے ملیں گے ۔


موبائل چور گروہ کے دو اراکین گرفتار،دس موبائل برآمد

بھنڈ۔31جنوری(فکروخبر/ذرائع )مدھیہ پردیش کے اس شہر کی کوتوالی پولس نے گجرات میں احمدآباد کے ایک موبائل شو روم سے تقریبا 50 موبائل اور ایک لیپ ٹاپ چوری کرنے والے گروہ کے دو اراکین کو گرفتار کرکے ان کے پاس سے دس موبائل برآمد کئے ہیں۔ اس چور گروہ کے تین اراکین فرار ہیں۔ جنہیں پولس تلاش کررہی ہے ۔سٹی پولس سپرنٹنڈنٹ راکیش چھاری نے آج یہاں بتایا کہ کل دو نابالغ بچے بس اسٹینڈ پر کچھ موبائل لے کر گھوم رہے تھے تبھی پولس نے وہاں پہنچ کر گری راج اور مونٹی کر حراست میں لے کر پوچھ تاچھ کی تب پتہ چلاکہ یہ بچہ گروہ کے اراکین ہیں اور ملک کے بڑے شہروں میں جاکر چوری کرتے ہیں۔مسٹر چھاری نے بتایا کہ بھنڈ کے گاندھی نگر کے باشندہ گری راج اور مونٹی اپنے دو دیگر ساتھیوں کے ساتھ احمدآباد گئے جہاں ان دونوں نے ایک موبائل شاپ پر نوکری کی اور پھر کچھ دنوں کے بعد ان دونوں نے اپنے ساتھیوں کے ساتھ مل کر چوری کی۔


دلت ریسرچ اسکالر روہت ویمولا کی خودکشی کے واقعہ کی سی بی سی آئی ڈی جانچ کا اعلان

حیدرآباد۔31جنوری(فکروخبر/ذرائع )تلنگانہ حکومت نے یونیورسٹی آف حیدرآباد میں دلت ریسرچ اسکالر روہت ویمولا کی خودکشی کے واقعہ کی سی بی سی آئی ڈی جانچ کا اعلان کیا ۔اس بات کا انکشاف ریاستی وزیرداخلہ این نرسمہا ریڈی نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے وضاحت کی کہ یہ معاملہ ریاستی حکومت کے اختیارات کے تحت نہیں آتاتاہم اس جانچ کے لیے مرکزی حکومت کی اجازت کا انتظار ہے ۔انہوں نے کہاکہ اس واقعہ پر ریاستی حکومت خاموش نہیں ہے ۔


شتروگھن نے اروناچل میں صدر راج پر اٹھائے سوال

نئی دہلی۔31جنوری(فکروخبر/ذرائع)بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی)کے سینئر لیڈر اور سابق مرکزی وزیر شتروگھن سنہا نے مودی حکومت پر ایک بار پھر نشانہ لگاتے ہوئے اروناچل پردیش میں صدر راج لگائے جانے پر سوال اٹھایا ہے ۔پٹنہ صاحب سے ممبر پارلیمنٹ مسٹر سنہا نے آج ٹویٹ کیا، ‘‘ہمارے ایکشن ہیرو وزیر اعظم پرمجھے مکمل اعتماد ہے لیکن انہیں اروناچل میں صدر راج لگانے کا مشورہ دینے والے ‘عظیم’مشیر کون ہیں۔ وہ بھی ایسے وقت جب معاملہ سپریم کورٹ میں معاملہ زیر التواء تھا اور پانچ ججوں کی آئینی بینچ اس کی سماعت کر رہی تھی۔ مجھے سمجھ میں نہیں آتا کہ اتنی جلدی کیوں تھی’’۔انہوں نے کہا،‘‘خدا نہ کرے اگر کورٹ کا فیصلہ ہمارے حق میں نہیں گیا تو ہمارے پاس اپنے معزز ا وزیر اعظم کے لئے کیا جواب ہو گا’’۔مسٹر سنہا پہلے بھی اپنے بے باکانہ تبصروں سے کئی بار مودی حکومت اور بی جے پی کی قیادت کے لئے مشکلات کھڑی کر چکے ہیں۔ بہار اسمبلی انتخابات سے پہلے انہوں نے وزیر اعلی نتیش کمار کی تعریف کرکے پارٹی کی رسوائی کی تھی۔ اس انتخابات میں انہیں اسٹار کمپینر میں شامل نہیں کیا گیا تھا۔ مسٹر سنہا نے حال ہی میں اپنی زندگی پر لکھی کتاب ‘اے نتھنگ بٹ خاموش’کے رسم اجرا کے موقع پر کہا تھا کہ پارٹی کو انہیں اسٹار کمپینر نہیں بنائے جانے کا خمیازہ بھگتنا پڑا۔


گنگا کو دنیا کی سب سے صاف شفاف ندی بنا دوں گی: اوما

نئی دہلی۔31جنوری(فکروخبر/ذرائع )آبی وسائل، ندیوں کے فروغ اور گنگا کے تحفظ کی وزیر اوما بھارتی نے آج کہا کہ گنگا دنیا کی 10 سب سے زیادہ گندی دریاؤں میں شمار ہے لیکن انہوں نے اسے بہت صاف شفاف بنانے کا عزم کیا ہے اور آئندہ چھ سات سال میں وہ اسے دنیا کی سب سے زیادہ صاف دریاؤں میں شامل کر دیں گی۔گنگا کی صفائی کے مشن میں دیہی علاقوں کی شرکت یقینی بنانے کے لئے یہاں منعقد ‘سووکش گنگا گرامین سہبھاگیتا’ پروگرام میں گنگا کے کنارے آباد 1600 سے زیادہ پنچایتوں کے پردھانوں سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ مقامی لوگوں کی شرکت کے بغیر یہ کام ممکن نہیں ہے ۔ ان کی وزارت نمامی گنگے پروجیکٹ کے تحت گنگا ندی کو پوری طرح صاف بنانے کے لئے مرکز سے ملی 20 ہزار کروڑ روپے کی رقم کا پورا استعمال کرے گی اور گنگا کو دنیا کی سب سے صاف ندیوں میں شامل کرے گی۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے سڑک اور جہاز رانی کے وزیر نتن گڈکری نے کہا کہ آئندہ چھ سات ماہ کے دوران گنگا کی صفائی کا کام زمینی سطح پر شروع ہو جائے گا اور مودی حکومت کی اسی میعادکار میں گنگا کی صفائی کا خواب پورا کر دیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ گنگا کے ذریعے براہ راست اور بالواسطہ طور پر ایک کروڑ 40 لاکھ لوگوں کو روزگار دستیاب ہوتا ہے اور اب گنگا کی صفائی کے مشن میں ان کی روزی روٹی کو ذہن میں رکھتے ہوئے کام میں تیزی لائی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ وہ بھی محترمہ بھارتی کے ساتھ اس مشن سے منسلک ہیں اور اس پروگرام کو پوراکرنے میں پیسے کی کمی نہیں ہونے دی جائے گی۔ اس سمت میں جو بھی کام شروع ہوگا، اسے معینہ مدت میں پورا کیا جائے گا۔


حادثے میں ماں بیٹے کی موت، نانا زخمی

جونپور۔31جنوری(فکروخبر/ذرائع )اتر پردیش میں جونپور کے بدلاپور علاقے میں بس کی زد میں آنے سے موٹر سائیکل سوار ماں بیٹے کی موت ہو گئی اور نانا زخمی ہو گئے ۔پولیس کے مطابق سنگرامو حلقہ کے رہنے والے پرنس موریہ کی اہلیہ سیتا دیوی (28)اپنے والد رام اودھ کے ساتھ ایک سالہ بیٹے کو لے کر موٹر سائیکل سے گلزار گنج مندر جا رہی تھی۔ اس دوران پیچھے سے آ رہی ریاستی ٹرانسپورٹ بس نے سروخنپور کے پاس موٹر سائیکل کو ٹکر مار دی۔ تصادم کے بعد سیتا اور اس کا بیٹا بس کی زد میں آ گئے اور دونوں کی موقع پر ہی موت ہو گئی۔حادثے میں زخمی رام اودھ کو ضلع اسپتال میں داخل کیا گیا ہے ۔ حادثے کے بعد ڈرائیور فرار ھوگیا۔ فرار ڈرائیور کی تلاش کی جا رہی ہے ۔


مویشی چوروں کی فائرنگ سے 4 افراد زخمی

مراد آباد۔31جنوری(فکروخبر/ذرائع ) اترپردیش میں ضلع مراد آباد کے کندرکی علاقے میں مویشی چوروں نے آج چار افراد کو گولی مار کر زخمی کردیا۔پولیس کے مطابق نگلا کمال کے رہنے والے سنیل، بوکر سنگھ، بھیم سنگھ اور بابو رام سنگھ علی الصبح مراد آبادمزدوری کیلئے جا رہے تھے ۔ دریں اثنا مویشی چوری کرنے کے ارادے سے نکلے بدمعاشوں نے سرسی امارت پور گاؤں کے پاس انہیں پولیس جوان سمجھ کر گولی مار دی جس سے چاروں زخمی ہوگئے ۔گولی کی آواز سن کر گاؤں والے اس جانب دوڑے جنہیں دیکھ کر مویشی چور موقع سے فرار ہوگئے ۔ واقعہ کے اطلاع ملتے ہی موقع پر پہنچی پولیس نے رپورٹ درج کرکے فرار مویشی چوروں کی تلاش شروع کردی ہے ۔ زخمیوں کو ضلع اسپتال میں داخل کرایا گیا ہے ۔

Urdu-Arabic-Keybaord11

ISLAMIC-MESSAGES