dushwari

فرانسیسی صدر تین روزہ دورے پر بھارت پہنچ گئے(مزید اہم ترین خبریں)

نئی دہلی ۔ 24 جنوری (فکروخبر/ذرائع) فرانس کے صدر فرانسوا اولاندے تین روزہ دورے پر اتوار کو بھارت پہنچ گئے۔ ذرائع ابلاغ کے مطابق فرانسیسی صدر بھارت کے یوم جمہوریہ کی مرکزی تقریب میں مہمان خصوصی ہوں گے۔ اپنے دورے کے آغاز پر انٹرویو دیتے ہوئے فرانسیسی صدر نے کہا کہ بھارت کو 36 فرانسیسی لڑاکا طیارے فراہم کرنے اقدامات جاری ہیں۔ انہوں نے کہا کہ رافیل لڑاکا طیاروں کی فراہمی کیلئے دونوں ممالک کے درمیان روابط استوار ہیں اور اس ضمن میں بعض تکنیکی مسائل ہیں جنہیں حل کیا جائے گا۔

قبل ازیں گزشتہ سال اپنے دورہ فرانس کے دوران بھارتی وزیراعظم نریندر مودی نے کہا تھا کہ بھارت فرانس سے 36 لڑاکا طیارے حاصل کررہا ہے۔ فرانسیسی صدر نے کہا کہ بھارت اور فرانس دہشتگردی کے خلاف جنگ میں پر عزم ہے۔ فرانسیسی صدر کے دورے کے دوران بھارت اور فرانس کے درمیان تعاون کے کئی سمجھوتوں پر دستخط کا امکان ہے۔ 


ممبئی ایئر پورٹ کو بم سے اڑانے کی ملی دھمکی، ہائی الرٹ جاری

ممبئی۔24جنوری(فکروخبر/ذرائع)ممبئی ایئرپورٹ کو بم سے اڑانے کی دھمکی ملی ہے۔ کنٹرول روم میں شام 6 بجے دھمکی بھرا فون آیا جس میں یہ دعوی کیا گیا کہ 2 فروری سے پہلے ایئرپورٹ کو اڑا دیا جائے گا، جس کے بعد اس کی تحقیقات شروع کر دی گئی۔یہ پتہ لگانے کی کوشش ہو رہی ہے کہ آخر اس دھمکی میں کتنی سچائی ہے۔ آپ کو بتا دیں کہ 26 جنوری کو لے کر ملک بھر میں الرٹ جاری کیا گیا ہے۔ دہشت گردانہ حملوں کے خدشات کے درمیان ممبئی کو خاص طور سے محتاط رہنے کو کہا گیا ہے، جس کے بعد سے مایا نگری میں خاصی چوکسی برتی جا رہی ہے۔وہیں انٹیلی جنس ایجنسیوں نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ 26 جنوری یا اس سے پہلے دہشت گرد حملے کی سازش رچ سکتے ہیں، جسے دیکھتے ہوئے ممبئی سمیت پورے مہاراشٹر میں ہائی الرٹ جاری کیا گیا ہے۔ ساتھ ہی وزیر اعلی نے پیر کو سیکورٹی ایجنسیوں کی اعلیٰ سطحی میٹنگ بھی بلائی ہے۔


نوجوانون کے قتل کے خلاف پلوامہ کے کئی علاقوں میں چوتھے روز بھی ہڑتال

سرینگر ۔ 24 جنوری (فکروخبر/ذرائع) کشمیر میں ضلع پلوامہ کے علاقے نائنہ بٹہ پورہ میں فورسز کے ہاتھوں دو نوجوانوں کے قتل کے خلاف کئی علاقوں میں مسلسل چوتھے روز بھی مکمل ہڑتال کی گئی جبکہ بنڈنہ پلوامہ میں لوگوں نے احتجاجی مظاہرے بھی کئے۔ نمائندے کے مطابق ضلع کے نائنہ ، برا بنڈنہ، گھاٹ، بٹہ پورہ، میلہورہ، گلزار پورہ، کھیلن، ریشی پورہ اوردیگر علاقوں میں مکمل ہڑتال رہی۔ علاقے میں تمام کاروباری سرگرمیاں بند رہیں اور سڑکوں پر گاڑیوں کی آمد ورفت معطل رہی جس سے معمولات زندگی مفلوج ہو کررہ گئے۔ نائنہ میں علیحدگی پسندہنماؤں کے علاوہ سینکڑو ں لوگوں نے جاں بحق ہونے والے نوجوان پرویز احمد کے گھر جاکر تعزیت کی اور اہل خانہ سے اظہاریکجہتی کیا۔ لوگ پرویز احمد گورو کے قتل میں ملوث فورسز کے اہلکاروں کے خلاف فوری کارروائی کا مطالبہ کر رہے ہیں۔ لوگوں کا کہنا ہے کہ انتظامیہ کی خاموشی سے صاف ظاہر ہوتا ہے کہ وہ اس سلسلے میں کوئی کارروائی نہیں کرنا چاہتی ہے۔ ادھر بنڈنہ میں بھی لوگوں کی بڑی تعداد نے جاں بحق نوجوان شارق احمد بٹ کے گھر جاکران کے اہل خانہ سے تعزیت اور یکجہتی کا اظہارکیا۔


سخت ترین حفاظتی انتظامات اورسردی کی شدید لہر کے بیچ بخشی اسٹیڈیم سرینگر میں فل ڈریس ریہرسیل 

سرینگر۔24جنوری(فکروخبر/ذرائع)سخت ترین حفاظتی انتظامات اورسردی کی شدید لہر کے بیچ اتوارکو بخشی اسٹیڈیم سرینگرسمیت وادی کے تمام ضلع صدر مقامات پر26جنوری کی تقریبات کی حتمی تیاریوں کے سلسلے میں فُل ڈریس ریہرسیل کا انعقاد کیا گیا۔اس دوران دو روز قبل ہی وادی کے چپے چپے پر پولیس اور نیم دستوں کی بھاری تعداد میں تعیناتی عمل میں لائی گئی ہے اور اہم تنصیبات کے گردونواح میں غیر معمولی حفاظتی بندوبست کئے گئے ہیں ۔شہر میں بخشی اسٹیڈیم کے گردونواح میں گاڑیوں اور لوگوں کی آمدورفت محدود کئے جانے کی وجہ سے بعض علاقوں میں زبردست ٹریفک جام دیکھنے کو ملا۔نمائندے کے مطابق26جنوری کے پیش نظر پوری ریاست میں حسب سابقہ ہائی الرٹ جاری کرتے ہوئے پولیس اور سیکورٹی ایجنسیوں کو چوکنا رہنے کی ہدایت دی گئی ہے اور انہیں بالخصوص ان مقامات کی کڑی نگرانی کرنے کیلئے کہا گیا ہے جہاں 26جنوری کی تقاریب منعقد ہو رہی ہیں ۔ادھر کنٹرول لائن اورسرحدوں پر تعینات فورسز کو بھی چوکس رہنے کی ہدایت دی گئی ہے۔ سرینگر کے بخشی اسٹیڈیم میں26جنوری کووادی کی سب سے بڑی تقریب منعقد ہورہی ہے جس کے پیش نظر اسٹیڈیم کے چاروں طرف خار دار تار لگاکر اسٹیڈیم کو مکمل طور پر سیل کردیا گیا ہے۔اسٹیڈیم کے آس پاس سے گذرنے والی سڑکوں پر لوگوں اور گاڑیوں کی آمدورفت محدود کئے جانے کے نتیجے میں رام باغ، سولنہ، اقبال پارک، جواہر نگر بنڈ اور ملحقہ علاقوں میں زبردست ٹریفک جام نے مسافروں کو سخت پریشانیوں میں مبتلا کردیا۔اسکے علاوہ اسٹیڈیم کے گردونواح میں واقع کئی عمارات کو بھی پولیس اور سیکورٹی ایجنسیوں نے اپنی تحویل میں لے لیا ہے اورشہر کے واحد فلائی اوور،ائر پورٹ ،سیکریٹریٹ،ہائی کورٹ و اسمبلی کمپلیکس اور ریلوے اسٹیشن سمیت اہم سرکاری و فوجی عمارات اور تنصیبات پر فورسز کی چوکسی بڑھا دی گئی ہے۔صبح سخت سردیوں کے دوران بخشی اسٹیڈیم سرینگر میں انتہائی کڑے حفاظتی بندوبست کے تحت فل ڈریس ریہرسیل کا اہتمام کیا گیا جس میں پولیس ، سی آر پی ایف ، آرمڈ پولیس ، بی ایس ایف ، ہوم گارڈ، آگزیلری پولیس،این سی سی کیڈٹس، اور زنانہ پولیس کے دستوں کے علاوہ اسکولی بچوں کی ایک بڑی تعداد نے حصہ لیا۔ 


محکمہ موسمیات کی آنے والے کچھ دنوں میں بارشیں اور برف باری کی پیشن گوئی 

سرینگر۔24جنوری(فکروخبر/ذرائع) بالائی علاقوں کے ساتھ ساتھ میدانی علاقوں میں آنے والے کچھ دنوں میں ہلکی سے درمیانی درجے کی بارشیں اور برف باری کی پیشن گوئی کی ہے ۔ذرائع ابلاغ کے مطابق وادی کشمیر میں رواں ما ہ کے دوران مسلسل موسم خشک رہنے کی وجہ سے جہاں سردیوں کی لہر میں اضافہ ہو گیا ہے وہیں موسم میں تبدیلی نہ آنے کی وجہ سے لوگ مختلف بیماریوں میں مبتلا ہو گئے ہیں ۔ادھر محکمہ موسمیات نے وادی کشمیر میں خشک موسم سے لوگوں کو نجات ملنے کے امکانات ظاہر کرتے ہوئے آنے والے کچھ دنوں میں بارشیں اور برف باری ہونے کی پیشن گوئی کی ہے ۔محکمہ موسمیات کے مطابق ریاست جموں کشمیر میں مغربی ہوائیں داخل ہو رہے ہیں جس کی وجہ سے 26جنوری سے وادی کے بالائی علاقوں اور میدانی علاقوں میں ہلکی سے درمیانی درجے کی بارشیں یا برف باری ہو سکتی ہے جبکہ 28جنوری سے مزید بارشیں اور برف باری ہو سکتی ہے ۔محکمہ کے مطابق میدانی علاقوں میں بارشیں جبکہ وادی کے پہاڑی اور بالائی علاقوں میں برف باری ہو سکتی ہے ۔محکمہ موسمیات کے مطابق رواں موسم میں چلہ کالان کا زیادہ تر حصہ خشک دیکھنے کو ملا اور صرف ایک دوبار وادی کشمیر کے باائی علاقوں میں برف باری جبکہ میدانی علاقوں میں بارشیں دیکھنے کو ملی ۔


ڈرپ اریگیشن موزوں ترین ٹیکنالوجی ہے۔۔ماہرین زراعت

نئی دہلی۔24 جنوری(فکروخبر/ذرائع)ماہرین زراعت نے ناہموار کھیتوں ، نہری پانی کی کمی اور زیرزمین ناقص پانی والے علاقوں میں ڈرپ اریگیشن کو موزوں ترین ٹیکنالوجی قراردیا ہے اورکہاہے کہ فلٹریشن سسٹم ، فرٹیگشن یونٹ ، پائپ نیٹ ورک اور ڈرپ لائن کے ذریعے پانی ، کھاد ، دیگر کیمیائی اجزاء پودوں کی ضرورت کے مطابق اس کی جڑوں تک پہنچائے جاسکتے ہیں جس سے نہ صرف پانی او رکھاد کی بچت ہو تی ہے بلکہ پیداوار میں بھی شاندار اضافہ ہوتا ہے۔ انہوں نے کہاکہ چونکہ کاشتکاری اب ایک مکمل کاروبار بن چکی ہے لہٰذا اسے بے پناہ اخراجات ، توانائی کے بحران ، پیداواری عوامل ، مزدوروں کی عدم دستیابی جیسے مسائل سے بچا کرمناسب منافع کمایا جاسکتاہے۔ایک ملاقات کے دوران انہوں نے کہاکہ ڈرپ اریگیشن سے فصل کو پانی ، ہوا ، غذائی اجزاء ضرورت کے مطابق یکساں طورپر ملتے رہتے ہیں اس لئے فصل بغیر کسی دباؤ کے نشو و نماپاتی ہے جس سے فصل کامعیار بھی بہترہوتاہے۔ انہوں نے بتایاکہ اس ضمن میں مزید رہنمائی کیلئے ماہرین زراعت کی خدمات سے بھی استفادہ کیاجاسکتاہے۔


سازشوں سے ہوشیار رہیں مسلمان:احسان الحق ملک 

لکھنؤ۔24جنوری(فکروخبر/ذرائع)پچھڑا سماج مہا سبھا نے کہا ہے کہ 1925سے مسلمانوں کے ساتھ سازش رچی جا رہی ہیں ،ان سازشوں کے وجہ سے ہی مسلم قوم خوف زدہ ہی نہیں اس کا جینا ہی مشکل ہو گیا ہے اور اس سے نجات پانے کے لئے ایک ہی راستہ ہے جس طرح مذہب کے نام پرمسلمان متحد ہوتا ہے اسی طرح مسلمانوں پر ہونے والے ظلم ناانصافی بھید بھاؤ کو لیکر پورے ملک کے مسلمان جب تک سڑکوں پر نہیں اترتے تب تک ان پریشانیوں سے نجات حاصل نہیں کر پائیں گے ۔اور اگر مسلمان متحد نہیں ہوئے تو پورے ملک سے ان کا وجود ہی ختم ہو جائے گا۔اب وقت آگیا ہے کہ الگ الگ فرقوں میں نہ بٹ کرایک ساتھ مل کراپنی آواز بلند کریں ،تبھی ان کے مسائل حل ہوں گے ۔یہ جانکاری آج یہاں جاری ایک بیان میں مہا سبھا کے قومی صدر احسان الحق ملک نے دی۔ملک نے یہ بھی بتایا کہ ان تمام ساشوں کا نشانہ صرف مسلم ہے۔اور اسے غلام بنانے کے لئے طرح طرح کی سازشیں کی جا رہی ہیں آج اس ملک کا مسلم غلام بن چکا ہے اور اس کی تعلیمی،سماجی اور سیاسی ڈھانچہ تہس نہس ہو چکا ہے ملک کے قومی دھارے میں مسلمانوں کو جوڑنے کی دیا جانے والا نعرہ ایک جملہ ہے کبھی بھی اس ملک کے مسلمانوں کے ساتھ برابری کا درجہ دینے کی کوشش نہیں کی گئی بلکہ اسے اس ملک کا غدار ثابت کرنے کی ہر ممکن کوشش کی جا رہی ہے اور یہ مسلمان اپنے اس ملک سے بے پناہ محبت کرتا ہے پھر بھی اسے شک کے نگاہ سے دیکھا جاتا ہے،ملک نے یہ بھی بتایا کہ مسلمان اپنی وفاداری کا کتنا بھی ثبوت دے لیکن اسے غدار ہی سمجھا جاتا ہے ۔ملک نے ان سبھی مولانا سے کہا ہے کہ اپنے کو مقدمہ کی پیروی کا دعویٰ کرتے ہیں وہ مقدمہ بنائے جانے کی سازش کو روکنے میں لگیں تاکہ فرضی مقدمہ نہ قائم ہوں اور نہ کوئی غلط گرفتاریاں ہوں ۔ْملک نے سبھی مسلمانوں سے اپیل کی ہے کہ ایک ساتھ متحد ہو کر اپنے مسائل کو حل کریں تبھی ان کو ظلم ناانصافی اور تمام طرح کی پریشانیوں سے نجات حاصل ہو پائے گا۔ورنہ ان کا وجود ہی ختم ہو جائے گاْ۔


سنندا پشکر پر بہت کچھ کہنا ہے لیکن تفتیش مکمل ہونے کے بعد: تھرور

جے پور۔24جنوری(فکروخبر/ذرائع)سننداپشکر کی زہر سے موت ہونے کی ایف بی آئی کی رپورٹ کے کچھ دنوں بعد ان کے شوہر اور سابق مرکزی وزیر ششی تھرور نے دعوی کیا ہے کہ انہیں اس معاملے میں بہت کچھ کہنا ہے لیکن وہ اس کی انکوائری کے ختم ہونے کا انتظار کریں گے۔ تھرور نے جے پور لٹریچر فیسٹول سے الگ کہا کہ میں آخری بار یہ کہتا ہوں کہ جب تک پولیس معاملے کی تفتیش مکمل نہیں کر لیتی اس وقت تک پالیسی طور پر اور نظریاتی طور پر میں اس موضوع پر تبصرہ نہیں کروں گا۔تھرور نے کہا کہ پولیس کے نتیجے پر پہنچنے پر اور اسے عدالت میں پیش کرنے پر مجھے بہت کچھ کہنا ہے۔ لیکن اس وقت تک ایسا کہنا غلط ہوگا اور میں ایسا نہیں کروں گا۔ سنندا ??کی موت کے سلسلے میں گزشتہ سال جنوری میں دہلی پولیس نے قتل کا معاملہ درج کیا تھا۔ ایمس کے میڈیکل بورڈ نے ان کی موت کی وجہ زہر سے ہونا مانا تھا۔ بورڈ نے ایف بی آئی کی رپورٹ کی بنیاد پر اپنا خیال دیا تھا۔غور طلب ہے کہ 51 سال کی سنندا ??کو جنوبی دہلی کے ایک پانچ ستارا ہوٹل میں 17 جنوری 2014 کی رات مردہ پایا گیا تھا۔ اس سے ایک دن پہلے ہی ان کی پاکستانی صحافی مہر ترار کے ساتھ ٹوئٹر پر بحث ہوئی تھی۔ تھرور کے ساتھ مہر کے مبینہ تعلقات کو لے کر ایسا ہوا تھا۔


علی گڑھ مسلم یونیورسٹی اور جامعہ ملیہ اسلامیہ کے اقلیتی کردار کا مسئلہ آئینی نہ ہوکر بادشاہ کی نیت کا ہے۔۔اعظم خان

رامپور۔24جنوری(فکروخبر/ذرائع)اترپردیش کے وزیر شہری ترقیات محمد اعظم خاں نے کہا ہے کہ علی گڑھ مسلم یونیورسٹی اور جامعہ ملیہ اسلامیہ کے اقلیتی کردار کا مسئلہ آئینی نہ ہوکر بادشاہ کی نیت کا ہے۔ انھوں نے کہا کہ وزارت قانون اور وزارت فروغ انسانی وسائل بھی بھارتیہ جنتا پارٹی سرکار کا ایک حصہ ہیں۔ اس لئے اب جو کچھ ہوگا ظاہر ہے بادشاہ کے اشارہ پر اور جیسا پارٹی وآر ایس ایس چاہے گی ویسا ہی ہوگا۔ اعظم خاں نے کہا کہ دونوں ہی اقلیتی ادارے ہیں اور مرکزی سرکار سے منظور شدہ ہیں۔ اسی لئے دونوں یونیورسٹیاں مرکزی سرکار کے نشانہ پر ہیں۔ کابینہ وزیر اپنی رہائش گاہ پر صحافیوں سے گفتگو کررہے تھے۔ انھوں نے وزیر اعظم نریندرمودی کے امبیڈکر یونیورسٹی میں تقریب کے دوران جذباتی ہونے پر نشانہ لگاتے ہوئے کہا کہ بہت اچھی بات ہے ایسے سبھی موقعوں پر جذباتی ہوجانا چاہئے۔ مودی جی کو گجرات، مظفر نگر اور دادری کے معاملہ پر بھی جذباتی ہونا چاہئے تھا ۔اعظم خاں نے کہا کہ جذباتیت کا ایک پیمانہ ہونا چاہئے۔ کیونکہ وہ ہندوستان کی 125کروڑ عوام کے بادشاہ ہیں۔ انھوں نے کہا کہ اظہار رائے کی آزادی تو ختم نہیں کی جاسکتی ۔ اتنا بڑا حادثہ ہوا ہے اور جس طرح سے موت ہوئی اس سے پورا ملک فکر مند ہے ۔کہا یہ جارہا ہے کہ یہ خود کشی نہیں قتل ہے۔ کسی کو مرنے کے لئے اکسانا اور ایسے حالات سے گذارنا کہ وہ مرنے کے لئے مجبور ہوجائے۔ ایسے میں جن لوگوں نے یہ حالات پیدا کئے ہیں ان کے خلاف 120 B کی کاروائی ہونا چاہئے۔اعظم خاں نے پنڈت جواہر لال نہرو کے ذریعہ سبھاش چندر بوس کے تعلق سے لکھے گئے مکتوب کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ نہروجی نے سبھاش چندربوس کو جنگی مجرم کہا ہے یہ چونکانے والی بات ہے۔ کابینہ وزیر نے کہا کہ دوسری عالمی جنگ کے مجرم موسولونی سے سبھاش چندر بوس کی برابری کرنا افسوسناک ہے۔ اس کی جتنی بھی مذمت کی جائے وہ کم ہے۔ صحافیوں کے ایک سوال کے جواب میں کابینہ وزیر اعظم خاں نے کانگریس جنرل سیکریٹری راہل گاندھی کو ٹافی چوسنے کی نصیحت دے ڈالی۔ انھوں نے راہل گاندھی کے بُندیل کھنڈ دورہ پر طنز کرتے ہوئے کہا کہ وہ آج کل بہت کود پھاند کررہے ہیں اور کافی تھک جاتے ہیں۔ اس لئے انھیں اپنے ساتھ تھوڑی لیمن ڈراپ اور ٹافیاں لے جانا چاہئیں جسے وہ خود بھی چوساکریں اور بچوں کو بھی دیں۔ اعظم خاں نے کہا کہ راہل گاندھی کی جو امیج ہے ملک میں انھیں سنجیدگی سے نہیں لیا جاتا ہے۔ 

میاں اشرفی جیلانی کچھوچھوی نے مسلمانوں کو جھگڑے فساد سے باز رہتے ہوئے متحد ہوکر پیار اور محبت سے رہنے کی تلقین کی

رامپور۔24جنوری(فکروخبر/ذرائع) کچھوچھہ شریف سے تشریف لائے آل انڈیا علماء اور مشائخ بورڈ کے قومی صدر مولانا سید اشرف میاں اشرفی جیلانی کچھوچھوی نے مسلمانوں کو جھگڑے فساد سے باز رہتے ہوئے متحد ہوکر پیار اور محبت سے رہنے کی تلقین کی ہے۔ انھوں نے کہا کہ ہمیں شیطان کی حرکات سے ہمیشہ ہوشیار رہنے کی ضرورت ہے۔ کیونکہ وہ انسان کو نیک کام اور نیکی کے راستے سے بھٹکاکر ہمیشہ برے کام کرانے کی کوشش کرتا ہے۔ جھگڑا فساد کرانا بھی شیطان کا ہی کام ہے۔ مولانا کچھوچھوی گذشتہ شب اتحادالملت امن کمیٹی کی جانب سے قصبہ سیفنی میں منعقدہ محسن انسانیت کانفرنس سے خطاب کررہے تھے۔ مولانا نے کہا کہ جو لوگ اللہ کے پیارے نبی اور ولیوں کے بتائے راستے پر عمل کر زندگی بسر کرتے ہیں اللہ تعالیٰ انھیں ہمیشہ ہر دکھ و پریشانی سے محفوظ رکھتا ہے۔ انھوں نے کہا کہ مسلمانوں کو چاہئے کہ چغلی ، جھوٹ اور ہر غلط کام سے پرہیز کریں کیونکہ اس سے اللہ رب العزت ناراض ہوتا ہے۔ مولانا نے کہا کہ عالموں پر فرض ہے کہ وہ صحیح بات عوام تک پہنچائیں اور عالم لوگوں کو اسلام کا پیغام اور سنت نبوی کی تعلیم دے کر اپنے فرض سے ادا ہو جاتے ہیں لیکن ان کی بات پر عمل کرنا لوگوں کا فرض بنتا ہے۔ مولانا اشرف کچھوچھوی نے اس دوران لوگوں سے 20مارچ کو دہلی میں منعقد ہونے والی سنی کانفرنس میں شرکت کی بھی اپیل کی۔کانفرنس کو سید وسیم اشرف نے بھی خطاب کیا۔ اس سے قبل امام قصبہ سیفنی قاری عتیق الرحمن کی زیرصدارت منعقدہ جلسہ کا آغاز تلاوت قرآن پاک سے کیا گیا بعدازاں قاری رضوان الدین اشرفی نے نذرانہ نعت سرورکونین ﷺ پیش کیا۔ اس موقع پر ڈاکٹر مولانا مبین اشرف، قاری اکبر علی، قاری مظہر اشرفی، نعیم آزاد، محمد حسن، غلام یٰسین، شہزاد علی، مختار حسین، سلیم احمد، وغیرہ خصوصی طور پر موجود رہے۔

Urdu-Arabic-Keybaord11

ISLAMIC-MESSAGES