dushwari

میرٹھ میں طالبہ سے ریپ کے بعد ایم ایم ایس سوشیل میڈیا پر لیک، (مزید اہم ترین خبریں)

دو فرقوں میں کشیدگی: پنچایت نے دی بدلہ لینے کی وارننگ

میرٹھ ۔20جنوری(فکروخبر/ذرائع) یہاں ایک طالبہ سے ریپ کے بعد اس کا ایم ایم ایس وائرل ہونے پر طوفان اٹھا ہے۔آبرو ریزی کی شکار لڑکی کے گھر والوں نے چھ افراد کے خلاف تحریر دی ہے، لیکن گاؤں میں پنچایت کے ارکان کا کہنا ہے کہ اگر پولیس نے جلد کارروائی نہیں کی تو بدلے کی کارروائی بھی ہوگی. معاملہ میں دو فرقوں کی وجہ کشیدگی کا ماحول ہیں.مظفرنگر کے کھتولی کے کیلروڈا گاؤں میں 12 ویں سکول کی طالبہ کے ساتھ ریپ کیا گیا اور اس کا ایم ایم ایس بناکر واٹس ایپ پر ڈال دیا.*

ویڈیو وائرل ہونے پر متاثرہ کے گھر والوں کو معلومات ہوئی.* متاثرہ کے والد نے چھ افراد کے خلاف تحریر دی.* متاثرہ کا کہنا ہے کہ اسے بہلا پھسلا کرلے جایا گیا اور ریپ کیا گیا* غور طلب ہے کہ چار دن پہلے بھی ایک امید کارکن کے ساتھ ریپ کا ایم ایم ایس وائرل ہوا تھا، بدنامی کے ڈر سے اس نے خود کشی کر لی تھی* 
گاؤں کے مشرقی بلاک اہم وریندر سنگھ کا کہنا ہے کہ یہ سازش ہے. صاف کہہ کہ اقلیتی طبقے مصائب دینے والا ہے. اگر پولیس کارروائی نہیں کرتی تو ہمیں جو کرنا ہے اپنے آپ کریں گے.* 

مراٹھی ساہتیہ سمیلن میں مراٹھی قرآن مجید کی ڈیمانڈ

ممبئی ۔20جنوری(فکروخبر/ذرائع)مراٹھی ساہتیہ سمیلن 2016 مورخہ 15 سے 18 جنوری پونہ میں اختتام پذیر ہوا.اس میں اسلامک مراٹھی پبلیکیشن ٹرسٹ IMPT کی جانب سے اسٹال لگائی گئی تھی. اسٹال پر برادران وطن کا ازدہام رہا، لوگوں نے مراٹھی زبان میں کتابیں، قرآن اور اسکی تفسیر دیکھ کر خوشگوار حیرت میں مبتلا ہو ئے، اور مراٹھی قرآن مجید لازماً خریدے.الحمد للہ اب تک 2500 سے زائد قرآن مجید فروخت ہو ئے. جماعت اسلامی پونہ اور جماعت اسلامی پمپری چنچوڑ اور ایس آئی او کے تقریباً 20 رفقاء اسلام کے متعلق غلط فہمیوں کو دور کرنے اور مراٹھی لٹریچر کو متعارف کرانے کا کام انجام دے رہے تھے.لوگوں کی اسلام کے تئیں کچھ جاننے کی خواہش کا اسی بات سے اندازہ لگایا جاسکتا ہے کہ اسلامک مراٹھی پبلیکیشن ٹرسٹ کے اسٹال سے ساری کتابیں ختم ہوگئیں اور بہت سے لوگوں نے اپنے نام رجسٹرڈ کروائے کہ انہیں بعد میں اسلام کے تعلق سے کتابیں اور کتابچہ بھیجا جائے۔ عوام میں اسلام کے تئیں اس دلچسپی کو دیکھتے ہوئے کچھ اور تنظیموں کو آگے آکر مراٹھی میں اسلامک لٹریچر کی اشاعت اوراسکی تقسیم کا کا دائرہ اور وسیع کرنا چاہئے 


پوروانچل ایکسپریس وے پر بھی اتر سکیں گے فائٹر پلین

آگرہ۔20جنوری(فکروخبر/ذرائع)لکھنؤ ایکسپریس وے کی کامیابی کے کے بعد اب اکھلیش حکومت حوصلہ مند ہے. ریاستی حکومت اب سماج وادی پوروانچل ایکسپریس وے بنانے کی تیاریوں میں جٹ گئی ہے. وہیں جمنا ایکسپریس وے پر فائٹر پلین کے دو بار کامیابی کی ٹچ ڈاؤن کے بعد پوروانچل ایکسپریس وے پر بھی فائٹر پلین اتارنے کی سہولت دی جائے گی۔ چیف ایگزیکٹیو نونیت سہگل کیمطابق آگرہ۔لکھنؤ ایکسپریس وے کی طرز پر ہی سماجوادی پوروانچل ایکسپریس وے پر بھی فائٹر پلین اتارنے کی سہولت دی جائے گی. انہوں نے کہا یہ ایکسپریس وے دس اضلاع سے گزرے گا اور 348.10 کلومیٹر لمبا ہو گا.۔نونیت سہگل نے بتایا کہ یہ ایکسپریس وے پردیش کے 10 اضلاع لکھنؤ، بارہ بنکی، امیٹھی، سلطان پور، فیض آباد، امبیڈیرنگر، اعظم گڑھ، مو غازی پور اور بلیا سے گرریگا.۔سماجوادی پوروانچل ایکسپریس وہ تقریبا 348.10 کلومیٹر لمبی ہوگی، جس میں تقریبا 120 میٹر چوڑا ہو جائے گا.۔نہونے بتایا کہ سماج وادی پوروانچل ایکسپریس وے کے راستے پر سروس روڈ بھی مجوزہ کی گئی ہے.۔نونیت سہگل نے بتایا کہ ایکسپریس وے کی تعمیر ہو جانے کے لکھنؤ بلیا کے درمیان سفر تقریبا 4.30 گھنٹے میں مکمل کی جا سکے گی. ابھی تک یہ وقت صرف 6.30 گھنٹے میں ہوتی تھی.۔سماجوادی پوروانچل ایکسپریس وے 8 پیکیجوں میں تقسیم کیا گیا ہے. جس ہر پیکیج میں 40 سے 45 کلومیٹر کی تعمیر کرائی جائے گا.۔نونیت سہگل نے بتایا کہ ابھی زمینوں کے حصول کرنا ہے. اس میں دس ماہ کا وقت لگے گا. اس کے بعد ہی ایکسپریس وے کی تعمیر شروع ہو جائے گا.
فائٹر پلین کے لئے کیا ہوگی خاصیت
۔نونیت سہگل نے بتایا کہ ہم ایسا ایکسپریس وے بنانے جا رہے ہیں جس پر فائٹر پلین آرام سے پرواز بھر سکیں گے اور اتر بھی سکیں گے.
۔نہونے بتایا کہ فائٹر پلین کی پارکنگ کے لئے بھی ایکسپریس وے کے سوا میں جگہ دی جائے گی.
۔سیے بعد ہندوستان بھی ان ممالک میں شمار ہو جائے گا جہاں ایکسپریس وے سے ٹیک آف اور لینڈنگ کی جا سکے گی.
۔نہونے بتایا روڈ رن وے پر جہاں پھولڈیبل ڈواڈر ہوں گے تو پھولڈیبل رن وے لائٹس بھی ہوں گی.
۔ نہیں جہاں جہاں رن وے کے لئے جگہ نشان زد کیا جائے گا وہاں نہ تو موبایٹ ٹاور ہوں گے اور نہ ہی بجلی کے کھمبے ہوں گے.
جمنا اور آگرہ۔لکھنؤ ایکسپریس وے پر دی جا رہی ہے سہولت


یوم جمہوریہ پرحملے کا خدشہ، ہائی الرٹ جاری

نئی دہلی۔20جنوری(فکروخبر/ذرائع)بدنام دہشت گرد تنظیم اسلامک اسٹیٹ (آئی ایس) کے حملے کی فراق میں ہونے کی انٹیلی جنس اطلاعات ملنے کیبعد یوم جمہوریہ کے پیش نظر سکیورٹی کے لیے متنبہ کر دیا گیا ہے. ایسی خبریں ہیں کہ آئی ایس یوم جمہوریہ پر ہندوستان میں دہشت گردانہ حملہ کر سکتا ہے.ذرائع نے منگل کو بتایا کہ نیم فوجی دستوں کو یوم جمہوریہ کے پیش نظر زیادہ توجہ رہنے کے لئے کہا گیا ہے. اس بار یوم جمہوریہ پریڈ میں فرانس کے صدر اولاند فیراسوا مہمان خصوصی ہوں گے. ذرائع نے کہا، '' کسی بھی طرح کے دہشت گردانہ حملے کو روکنے کے لئے 26 جنوری کو فوج کے علاوہ نیم فوجی دستوں کو بھی تعینات کیا جائے گا. ''یوم جمہوریہ کی پریڈ میں صدر پرنب مکھرجی، وزیر اعظم نریندر مودی اور ملک کے سب سے اوپر رہنما موجود رہیں گے. ذرائع نے کہا، '' سیکورٹی سب سے بڑی تشویش ہے اور گزشتہ سال کی طرح ہی اس بار بھی ساری سیکورٹی کے نظام کو کام پر لگا دیا جائے گا. گزشتہ سال کی پریڈ میں امریکہ کے صدر براک اوباما مہمان خصوصی تھے. ''


دلت طالب علم کی خودکشی ، راہل حیدرآباد روانہ ، اویسی کا مرکز پر نشانہ

حیدرآباد / نئی دہلی۔20جنوری(فکروخبر/ذرائع)حیدرآباد میں طالب علم کی خودکشی کے معاملے میں سیاست تیز ہوتی دکھائی دے رہی ہے. کانگریس کے نائب صدر راہل گاندھی آج حیدرآباد پہنچیں گے وہیں اسد الدین اویسی نے بھی مرکزی حکومت پر نشانہ لگایا ہے.راہل گاندھی وہاں پہنچ کر طالب علموں سے ملاقات کریں گے اور پورا معاملہ جانیں گے. اویسی نے کہا کہ اس معاملے سے حکومت کا رخ صاف دکھائی دیتا ہے.
مرکزی وزیر اور وائس چانسلر پر کیس
حیدرآباد یونیورسٹی کے ایک دلت طالب علم کی خودکشی پر پیر کو جم کر ہنگامہ ہوا. انصاف کا مطالبہ کر رہے طالب علموں نے حیدرآباد سے لے کر دہلی تک مظاہرے کئے. پولیس نے اس معاملے میں مرکزی وزیر محنت بڈارو دتاتریہ اور یونیورسٹی کے وائس چانسلر پر ایف آئی آر درج کر لی ہے. ادھر، پورے اپوزیشن نے دتاتریہ کے استعفی کا مطالبہ کیا.
متوفی روہت ویملان پانچ پی ایچ ڈی کے طالب علموں میں شامل تھا جنہیں گزشتہ سال اگست میں حیدرآباد مرکزی یونیورسٹی سے معطل کر دیا گیا تھا. ان پر غلط سرگرمیوں میں ملوث رہنے اور ایک طالب علم رہنما پر حملہ کرنے کا الزام تھا. انہیں ہاسٹل سے بھی باہر نکال دیا گیا تھا. طالب علم کی لاش اتوار کو یونیورسٹی کے احاطے میں ہوسٹل کے کمرے میں لٹکا ملا تھا. لاش کو پیر کو احتجاج کارکردگی کے درمیان پوسٹ مارٹم کے لئے بھیج دیا گیا. مرکزی وزیر دتاتریہ پر الزام ہے کہ انہوں نے انسانی وسائل کی ترقی کے وزیر سمت ایرانی کو خط لکھ کر ان طلباء4 کے نام نہاد ملک مخالف کاموں کے خلاف کارروائی کرنے کی مانگ کی تھی.


آسام نے ملک کو وزیر اعظم دیا مگر دس سال تک کام نہیں کیا : مودی

کوکراجھار۔20جنوری(فکروخبر/ذرائع)آسام کے کوکراجھار میں وزیر اعظم نریندر مودی انتخابی ریلی سے خطاب کرنے پہنچے. ریلی سے خطاب کرتے ہوئے مودی نے ترقی کا منتر دیا. ساتھ ہی سابق وزیر اعظم منموہن سنگھ پر نشانہ لگاتے ہوئے کہا کہ اس ریاست نے دس سال ملک کو وزیر اعظم دیا لیکن یہاں کی ترقی نہیں ہوئی۔ انہوں نے کہا کہ میرا خواب ہے کہ ملک جب آزادی کی ویں جینتی منائے تو ملک کے ہر گھر میں ۲۴ گھنٹے بجلی آئے اور ۲۰۲۰تک ہرایک کے پاس اپنا گھرہو.مودی نے کہا، میں آپ کے درمیان ایسے وقت میں آیا ہوں جب یہاں اتحاد اور خیر سگالی کا نیا ماحول پیدا ہوا ہے. میں آسام کے لوگوں سے وابستگی کے لیے آیا ہوں. آسام میں مودی نے انتخابی مہم کی شروعات کی. اس موقع پر انہوں نے کہا، یہاں جو سال سے وعدے کئے گئے تھے ان کا نمٹا رابھی نہیں ہوا. انہوں نے کانگریس پر حملہ کرتے ہوئے کہا کہ وہ صرف وعدے پہ وعدہ کرتے ہیں اور پھر یہاں وعدہ خلافی پر لوگوں کا غصہ ظاہر ہو رہا ہے. تو میں صرف یہی وعدہ کر نےآیا ہوں کہ میں اپنی بات مکمل کرنے کے لئے جی جان سے کھپ جاتا ہوں.یہ آسام پردیش جس نے ملک کو دس سال وزیر اعظم دیا، گزشتہ سال کانگریس کی حکومت ہو تو یہاں کسی طرح کی کوئی مسئلہ ہونا ہی نہیں چاہیے. انہوں نے کہا کہ یہیں سے منتخب کر کے منموہن سنگھ جی کو وزیر اعظم کے طور پر بھیجا تھا، اس کے باوجود وہ سال میں کچھ نہیں کر پائے اور مجھ سے توقع کرتے ہیں کہ میں ماہ میں سب کچھ کر دوں.
مودی نے بتایا کہ ملک کا مستقبل تین ذرائع سے ہو سکتا ہے. 1. ترقی 2. ترقی 3. ترقی. ترقی سے ہی ملک کا مستقبل تبدیل کرنا ہوگا. آسام کی ترقی کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ اگر یہاں ترقی چاہئے تو یہاں کے انفراسٹرکچر کی ترقی گے. مودی نے راجیو گاندھی کے بیان کو یاد کرتے ہوئے کہا، انہوں نے ٹھیک کہا تھا، روپیہ جو دہلی سے چلتا ہے دیہات تک پہنچتے پہنچتے دس پیسہ ہو جاتا ہے.

Urdu-Arabic-Keybaord11

ISLAMIC-MESSAGES