dushwari

شمیم اقبال خاں

اسلام نے عورت کوجو عزت و احترام دیا ہے اس کو دیکھ کر اسلام دشمن عناصر اسے ہضم نہیں کر پا رہے ہیں اور یہی وجہ ہے کہ عورت کے اسلامی لباس اور پردہ کی تہذیب کو لوگ پچھڑے پن کی علامت بتاتے رہتے ہیں۔ مسلم عورتوں کے پردے کی مخالفت بہت شدت سے کی جاتی ہے۔ان کو نہیں معلوم کہ اسلام نے پہلے سے چلے آرہے پردہ کے نظام کو رائج کیا ہے نہ کہ ایجاد کیا ہے۔ ان کویہ بھی نہیں معلوم کہ مقدس کتاب ’وید‘ اور عیسائی اور ’بودھ‘ مذاہب میں عورتوں کے لیے پردے کے احکامات ہیں جس کی پابندی ہونی چاہئے لیکن وہ لوگ نہیں کرتے۔

فکروخبر تحقیقی مضمون

۱)اللہ کی معیت:اللہ تعالیٰ فرماتا ہے کہ جس وقت بندہ میرا ذکر کرتا ہے اور میری یاد میں اس کے ہونٹ حرکت کرتے ہیں تو اس وقت میں اپنے اس بندہ کے ساتھ ہوتا ہوں ۔(بخاری)

۲)ذکر کی فضیلت :ایک آدمی نے کہا کہ اے اللہ کے رسول ﷺاحکام الٰہی مجھ پر بہت زیادہ ہوگئے ہیں مجھے کوئی ایسی چیز بتائیں جس کا میں ہمیشہ اہتما م والتزام رکھوں آپﷺنے فرمایا اپنی زبان ہر وقت ذکر الٰہی میں مشغول رکھ۔(ترمذی حسن)

صرف علماء دین ہی مشترکہ عقائد پر متحد ہوکر اُمّت کو یکجہتی کا پیغام دے سکتے ہیں

ظہیر الدین صدیقی, اورنگ آباد

ہر مسلمان کی دلی خواہش ہے کہ مسلمانوں میں اتحادقائم ہو، ہر دینی و ملی تنظیم اس بات پر زور دیتی ہے کہ اُمّت میں اتحاد وقت کی اہم ترین ضرورت ہے، اصلاح معاشرہ کا کوئی جلسہ اتحاد اُمّت کے مشوروں کے بغیر اختتام پذیر نہیں ہوتا، جمعہ کے خطبات میں اکثر خطیبان ملّت مسلمانوں کو اتحاد و اتفاق کی اہمیت سے آگاہ کرتے رہتے ہیں، سماجی تنظییں اور سماجی خدمت گار ہر وقت اس بات پر زور دیتے رہتے ہیں کہ قوم کو متحد ہو کر اپنے مسائل کو حل کرنا ہوگا، سیاسی قائدین کی عین خواہش ہوتی ہے کہ مسلمان متحد ہوکر اپنے حق رائے دہی کا استعمال کریں، مدرسوں اور درسگاہوں میں طلباء کو اتحاد کا درس دیا جاتا ہے۔

Urdu-Arabic-Keybaord11

ISLAMIC-MESSAGES