dushwari

تازہ ترین خبر:

حفیظ نعمانی

انسان سے بعض غلطیاں ایسی ہوجاتی ہیں جو غیرارادی ہوتی ہیں پھر اس کی تلافی نہیں ہوسکتی اور وہ غلطی زندگی بھر اپنے سے خود کو شرمندہ کرتی رہتی ہے۔2013ء کے ستمبر کی کوئی تاریخ تھی میری زندگی کی پہلی کتاب رودادِ قفس کے ہندی ایڈیشن کی رونمائی کی تقریب ہونے والی تھی۔ میں نے اپنے جیل کے رفیق عبدالحکیم وارثی کو ٹیلیفون کیا کہ تم تو خود اس کتاب کا ایک کردار ہو اس لئے تمہارا آنا ضروری ہے۔ انہوں نے وعدہ کرلیا اور تقریب کے دن سے ایک دن پہلے شام کو وہ میرے پاس آئے مگر اس حال میں آئے کہ ایک صاحب ان کو پوری طرح سہارا دے رہے تھے۔ میں دیکھ کر حیران رہ گیا اور معلوم کیا کہ یہ کیا ہوگیا؟ انہوں نے علالت کی تفصیل بتائی اور کہا کہ تقریب میں آنے کے حال میں نہیں ہوں لیکن کتاب لینے اور مبارکباد دینے آیا ہوں۔

ڈاکٹر مظفر حسین غزالی

موجودہ سرکار اپنی میقات کاآخری بجٹ پیش کرچکی ہے۔ بجٹ نے کسی کی امید پر پانی پھیرا تو کئی کے آنگن میں جم کر برسا۔ برسراقتدار پارٹی کے افراد، سرکاری ونیم سرکاری اداروں کے ذمہ داروں نے بجٹ کو امید افزا بتایا تو حزب اختلاف کمیاں تلاشتا دکھائی دیا۔ وزیراعظم نے اسے کسانوں، غریبوں وپسماندہ طبقات کا بجٹ بتاتے ہوئے نئے بھارت کی تعمیر کرنے والا بتایاجبکہ پچھلے بجٹ کو سب کے خوابوں کابجٹ بتایا تھا۔ اس بار کے بجٹ کو وہ ’سب کاساتھ سب کا وکاس‘ کرنے والا بجٹ نہیں کہہ سکتے۔ ویسے اس میں ملک کے پہلے شہری راشٹرپتی سے لے کر اس کے ان داتا کسان، سب کیلئے کچھ نہ کچھ ہے۔ البتہ یہ کچھ نہ کچھ، کچھ کیلئے فوراً حاصل ہونے والی سوغات کی شکل میں ہے، اور زیادہ ترکیلئے ایسے وعدوں کی شکل میں، سرکاریں جنہیں پورا کرنے کی تبھی تک فکر کرتی ہیں، جب تک ان سے متاثر ہونے والے ووٹر کی شکل میں دکھائی دیں۔ اسی لئے کئی لوگ بجٹ کو سبز باغ دکھاکر گمراہ کرنے والا بتارہے ہیں۔

تحریر : مولانا محمد عمرین محفوظ رحمانی

ملت پر کوئی آنچ آئے یا ملک کسی خطرے سے دوچارہواس کے تدارک کے لئے سب سے پہلے علمائے کرام آواز بلند کرتے ہیں۔ ملک و ملت کی آبرو بچانے اور مسلمانوں کے مسائل کو حل کرنے کی کوششیں عام طور پر اسی طبقہ کی مرہونِ منت ہیں، ان کوششوں کی اس ملک میں لانبی تاریخ ہے ۔ آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ اسی تاریخ کا ایک اہم حصہ ہے ۔ مسلمانوں کا یہ مشترکہ و متحدہ پلیٹ فارم ملک وملت کی خدمت اور تحفظ دین و شریعت کا جلی عنوان اور ۲۰؍کروڑ سے زائد مسلمانوں کی آبادی والے اس ملک میں تمام مسالک ، مکاتب فکر اور مختلف طبقات کے مسلمانوں کے دل کی آواز ہے، جو آج سے ۴۴؍سال پہلے اپریل ۱۹۷۳ء میں اسی تاریخی شہرحیدرآباد میں قائم ہوا ،اس وقت کے تمام قابلِ ذکر علمائے کرام اور ملت کے قائدین اس کی تعمیر و تشکیل میں شریک ہوئے اور پھر تحفظِ شریعت اور مسلم پرسنل لاء کی بقاء کے لئے سرگرم عمل رہے۔

Urdu-Arabic-Keybaord11

ISLAMIC-MESSAGES