dushwari

حفیظ نعمانی

ذیقعدہ کے آخری ہفتہ سے یہ فکر روز بروز بڑھ رہی تھی کہ عیدالاضحی کیسے منائی جائے گی؟ حکومت کی طرف سے نہ کوئی بیان تھا اور نہ مسلم تنظیموں کی طرف سے کوئی آواز ہر طرف سکوت اور سناٹا تھا۔ عازمین حج کے معاملہ میں جو حکومت کا رویہ رہا وہ قابل تعریف کہا جائے گا۔ کئی برس سے خادم الحجاج کا مسئلہ اختلاف کی وجہ سے پھنسا ہوا تھا اسے بھی حکومت نے صاف کردیا اور مرکزی حج کمیٹی کا وہی فیصلہ باقی رکھا کہ مسلمان سرکاری ملازم ہی جائیں گے۔

عارف عزیز (بھوپال)

ہندوستان میں کافی عرصہ سے اس موضوع پر بحث ہورہی کہ مذہب کا سیاسی استعمال کس حد تک مناسب ہے۔ آئے دن پارلیمنٹ کے اندر اور اس کے باہر بھی یہ بات کہی جاتی ہے کہ ایسے عناصر جو سیاست بالخصوص الیکشن کے موقع پر لوگوں کے مذہبی جذبات بھڑکا کر ان کا استحصال کرتے ہیں ایسے لوگوں پر پابندی عائد کی جائے۔ بظاہر قانون کی رو سے ایسی پابندی عائد بھی ہے لیکن عملاً سیاست داں اس طرح کے عمل کو شجر ممنوعہ نہیں سمجھتے بلکہ ضرورت کے مطابق سیاست میں مذہب کو داخل کردیتے ہیں

محسن رضا ضیائی

عیدالاضحیٰ مسلمانوں کا ایک عظیم اور مقدس تہوارہے،جسے اسلام میں تین دن تک منانا مشروع ہے،ہر سال ۱۰؍ذی الحجہ سے لے کر ۱۲؍ذی الحجہ تک پوری دنیا میں منایاجاتاہے ۔ہمارے ملک ہندوستان میں عیدِ قرباں کایہ عظیم الشان تہوار امن و شانتی ،مسرت و خوشی اور اتحادویکجہتی کے ساتھ منایاگیا ۔ملک میں کہیں سے بھی کسی ناخوشگوار واقعے کی کوئی اطلاع موصول نہیں ہوئی۔البتہ عالمی سطح پر مسلمانوں کی تشویش ناک صورت حال ،خاص طور سے شام ،عراق ،فلسطین،کشمیراوربرما میں جاری مسلم کش فسادات اورقتلِ عام کو لے کرکافی رنج وغم اور خوف وہراس محسوس کیا گیا۔

Urdu-Arabic-Keybaord11

ISLAMIC-MESSAGES