dushwari

حافظ محمد ہاشم قادری مصباحی، جمشیدپور

آج کل ذ رہ ذ رہ سی بات پر لڑا ئی جھگڑا عا م ہو گیا ہے ،نفسا نفسی کا عالم ہے۔ اب تو حال یہا ں تک پہنچ گیاہے کہ معمو لی معمولی سی بات پر قتل کر دینا عام ہو گیا ہے۔ چھو ٹی سی بات پر باپ بیٹے کو اور بیٹا باپ کو، بھائی بھائی کو اور بھا ئی بہن کو، شو ہر بیوی کو اور قریبی رشتے دارو دوست کو مار ڈ النے کو تیار ہو جا تا ہے انسان کی جان مچھر اور مکھی سے بھی کمتر ہوگئی ہے۔ آئے دن قتل کے وا قعات بڑھ ر ہے ہیں۔ بو ریوں اور سوٹ کیسوں میں بھر ی لاشیں مل رہی ہیں روزانہ درجنو ں جھگڑ ے اور قتل کے واقعا ت معمول کی بات ہو گئی ہیں۔ کسی کو احساس زیاں (نقصان، خسا رہ ) T DETRIMENتک نہیں ہو رہا ہے ،قاتل ناحق کے دل میں انسا نیت کے درد کی رمق تک باقی نہیں رہی ہے۔ اس کا دل محبت،ہم در دی، انکسا ر ی اور انسان دوستی سے خا لی ہو چکا ہے حتیٰ کہ انسان انسان کے خون کا پیا سا بن چکا ہے آ ج کا انسان شاید اللہ اور اس کے رسولﷺ کے وہ احکا مات نہیں پڑ ھا ہے۔

حافظ محمد ہاشم قادری صدیقی

اللہ رب العزت و رسول کریم ﷺ اور آخرت پر ایمان رکھنے والا شخص مومن ہے اور مومن کسی کی امانت میں خیانت نہیں کر سکتا کیونکہ امانت داری پر عمل بھی ایمان کا حصہ ہے۔ نبی کریم ﷺ ظاہری اعلان نبوت کے پہلے ہی صادق الامین کے بابرکت لقب سے جانے پہچانے جاتے تھے اور آج بھی وہ لقب مواجۂِ رسول اللہ ﷺ حرمِ پاک مدینہ شریف کی جالیوں میں لکھا ہوا ہے۔ ناچیز خود حج کی سعادت سے باور ہوچکا ہے اور جالیوں کو بغور دیکھنے کا شرف حاصل کر چکا ہے جن میں آپ کا لقب مبارک ’’ صادق الامین‘‘ لکھا ہوا ہے۔ آپ ﷺ نے ارشاد فرمایا : لا ایمان لمن لا مانۃ لہ (جس کے اندر امانت نہیں اس کے اندر ایمان نہیں۔

حافظ محمد ہاشم قادری صدیقی

) الحمد للہ کہ ہم اسلام کے ماننے والے ہیں۔ مذہب اسلام نے اپنے پیروکاروں کو زندگی کے ہر شعبے میں زندگی گزارنے کا شعور بخشا اور بے شمار نعمتوں سے مالا مال فرمایا۔ زندگی گزارنے کی جو بنیادی ضروریات بتائی جاتی ہیں ان میں روٹی، کپڑا اور مکان اول درجہ کی حیثیت رکھتے ہیں۔ اسلام نے جو احکام ہم پر عائد کئے ہیں ان میں سے پانچ اہم شعبے ہیں۔ (۱) عقائد(۲) عبادات(۳) معاملات(۴) معاشرت (۵) اخلاق۔دین ان پانچ شعبوں سے مکمل ہوتا ہے۔ اگر ان میں سے ایک کو بھی چھوڑ دیا جائے گا تو پھر دین مکمل نہیں ہوگا۔ عقائد بھی درست ہوں، عبادات بھی صحیح طریقے سے انجام دینا چاہئے۔ لوگوں کے ساتھ لین دین ، معاملات بھی اسلامی طریقہ یعنی شریعت (جو اسلامی قانون ہے) کے مطابق ہونا چاہئے۔

حافظ محمد ہاشم قادری صدیقی 

سب خوبیاں اللہ کے لیے جو مالک و پالنہار ہے سارے جہاں والوں کا۔ اللہ رب العزت نے انسانوں بلکہ کائنات کی تمام مخلوق کو بے شمار نعمتوں سے نوازا ہے جس کا ذکر قرآن میں موجود ہے۔ ارشاد باری تعالیٰ ہے ۔وان تعدو نعمت اللہ لاتحصو ھا۔ترجمہ: اور اگر اللہ کی نعمتیں گنو تو انہیں شمار نہ کر سکو گے۔ (سورۃ ابراہیم، آیت ۳۳، سورۃ نحل، آیت ۱۷)نعمتوں کا احسا س و لذت اس کی ضرورت کے مطابق ہوتا ہے۔ پانی اور ہوا انسانی زندگی ہی نہیں بلکہ کائنات کے وجود و بقا کے لئے خالقِ کائنات کی پیدا کردہ نعمتوں میں سے عظیم نعمت ہے۔ انسان کی تخلیق سے لے کر کائنات کی تخلیق تک سبھی چیزوں میں پانی اور ہوا کی جلوہ گری نظر آتی ہے۔

بدھ, 09 مارچ 2016 14:06

مہیلاؤں سے سد ویوہار

حافظ محمد ہاشم قادری صدیقی

پیارے دوستو! اللہ تعالیٰ نے مرد وعورت کو یکساں (برابر) اہمیت دی ہے اور دونوں کو مناسب ذمہ داریوں کا متحمل (ذمہ دار ) بنایا ہے ،مردوں کو بیوی ،بچوں کی تمام ذمہ داریاں دیں تو عورت کو شوہر ،بچوں اور گھر کی دیکھ بھال کا ذمہ دار بنایا۔ یہ دونوں اپنی اپنی ذمہ داریوں کے بارے میں اللہ کے یہاں جواب دہ ہوں گے۔ انسانی زندگی کی بنیاد مرد و عورت کے پاکیزہ تعلقات پر ہے۔ اسلام نے عورت کو خوش خبری دی ہے۔ اللہ کے رسول ﷺ نے فرمایا: مومنین میں کامل ایمان والا وہ شخص ہے جو اپنے اخلاق میں سب سے اچھا ہو اور تم میں سے زیادہ بہتر وہ لوگ ہیں جو اپنی بیویوں کے لئے سب سے بہتر ہوں۔

حافظ محمد ہاشم قادری صدیقی

 پیٹ کی بھوک ختم کرنے کی خاطر تو انسان کچھ بھی کر گزرتاہے۔ اسی پیٹ کے لئے لوگ طرح طرح کے پیشے اپناتے ہیں۔ آجکل بھیک مانگنا بھی نفع بخش تجارت پیشے کی صورت اختیار کر چکاہے۔ شہر میں فقراء کی تعداد بہت بڑھ گئی ہے۔ بس اسٹاپ پر کھڑے ہوں یا ٹریفک سگنل پر، شہر میں ہوں یا دیہات میں ، سفر میں ٹرینوں اوربسوں میں ہوں ، پیدل ہوں یا سواری پر۔اللہ کے نام پر کچھ دے دیں،دو دن سے بھوکا ہوں ،گھر میں کچھ کھانے کو نہیں، اللہ کے لئے میری مدد کریں۔اسی قسم کے الفاظ آپ کے کانوں کو ضرور سننے کو ملیں گے۔

Urdu-Arabic-Keybaord11

ISLAMIC-MESSAGES