dushwari

ڈاکٹر محمد منظور عالم

یونیک آڈینٹی پروجیکٹ کی کمیوں کو ذہن نشیں کرتے ہوئے سپریم کورٹ نے پہلے ہی یہ کہہ دیا تھا کہ آدھار کارڈ ضروری نہیں ہے۔ ادھر کچھ وقت سے ایسا لگتا ہے کہ سپریم کورٹ اس نتیجہ پر پہنچا ہے کہ سہولیات اور کچھ قانونی حقوق کی حصولیابی کے لیے آدھار کارڈ کو ضروری قرار نہ دیا جائے۔ اس معاملے کی شنوائی کی تاریخوں کا اعلان ہفتوں پہلے کیا جا چکا ہے اور اس کے بعد ہی صحیح تصویر ابھر کر سامنے آئے گی لیکن تب تک سپریم کورٹ کے احکامات کو درکنار کرتے ہوئے مرکزی اور صوبائی حکومتیں من مانے ڈھنگ سے کام کررہی ہیں۔یہ بھی طے ہونا باقی ہے کہ انفرادیت کا حق بنیادی حق ہے یا نہیں۔ اس بیچ مرکزی حکومت نے سپریم کورٹ میں کہا ہے کہ ہندوستاینوں کو انفرادیت کا کوئی حق حاصل نہیں ہے۔

عارف عزیز(بھوپال)

تاریخ عالم میں بیسویں صدی کو جن غیرمعمولی اور اہم ترقیات کے لئے یاد کیاجاتا ہے ان میں صحافت سرفہرست ہے جس نے مذکورہ صدی کے دوران ایک زبردست طاقت اور ناقابل تسخیر مقام حاصل کرلیا۔ دنیا میں صحافت کا باقاعدہ آغاز کوئی ڈھائی سو برس قبل ہوا ہے لیکن حقیقت میں اس کی ترقی اور پورے کرۂ ارض میں اس کا پھیلاؤ بیسویں صدی کی دین ہے اور آج صحافت نے جو طاقت اور برتری حاصل کرلی ہے دنیا کی تاریخ میں اس کی مثال نہیں ملتی۔صحافت کی اس تیز رفتار ترقی سے متاثر ہوکر اس کو حکمرانی کے چوتھے ستون کا درجہ دیاگیا ہے بالخصوص جمہوری نظام میں مقننہ یعنی قانون سازی، عدلیہ یعنی انصاف اور انتظامیہ یعنی نوکر شاہی کے بعد چوتھی طاقت کی حیثیت سے اگر کسی کو تسلیم کیاجاتا ہے تو وہ صحافت ہے اور اسی لئے ہر جمہوری نظام میں اخبارات کی اہمیت اور جمہوریت کی بقاء واستحکام میں اس کے رول کو نظر انداز نہیں کیاجاسکتا۔

حفیظ نعمانی

بہار کے سابق وزیر اعلیٰ اور ریلوے کے انتہائی مقبول سابق وزیر لالو یادو نہ جانے کتنے ہندوستانیوں کے آئیڈیل تھے اور کتنے تھے جو اُن سے حسنِ ظن رکھتے تھے۔ جن میں خود ہم بھی ہیں۔ سب سے پہلی بار جب چارہ گھوٹالے میں ان کا نام آیا اور انہوں نے کہا کہ اس گھوٹالے کا تو ہم نے ہی بھانڈا پھوڑا تھا اور اس کا الزام ہمارے اوپر ہی لگایا جارہا ہے؟ تو ہمیں بھی یقین آگیا تھا کہ لالو یادو سے انتقام لیا جارہا ہے۔ اور یقین تھا کہ لالو یادو جیسا کسان جانوروں کے چارہ میں ہیرپھیر کر ہی نہیں سکتا۔وقت گذرتا گیا اور لالو نہ ریلوے کے وزیر رہے اور نہ بہار کے وزیر اعلیٰ۔ اور انہوں نے اپنی تعلیم کے نام سے صفر پتنی رابڑی دیوی کو وزیر اعلیٰ بنایا تو ہمیں بہت برا لگا اور خیال ہوا کہ یہ تو وہی ہوا کہ پارٹی اپنی ذاتی جائیداد ہے اگر شوہر نہ ہو تو بیوی، یا بیٹے یا بیٹی؟ اور جو دل و جان سے ساتھ ہیں وہ کیوں نہیں؟

Urdu-Arabic-Keybaord11

ISLAMIC-MESSAGES