dushwari

کانگریس ہی نہیں،ملک کے میڈیاکو بھی مارچکا ہے لقوہ

ڈاکٹراسلم جاوید

کانگریس کے نائب صدر راہل گاندھی گزشتہ 11ستمبر2017کوکیلی فورنیا یونیورسٹی میں اپنے خصوصی خطاب میں ملک کے اندر جاری افراتفری ،نفرت اور ہجومی دہشت گردی کے علاوہ مہنگائی جیسے سلگتے ہوئے ایشوز پرمودی حکومت کی سرزنش کرتے ہوئے کہا کہ اس وقت حکومت ہند کی عوام مخالف پالیسیوں کی وجہ سے ساراہندوستان نت نئے مسائل سے دوچار ہے اور المیہ یہ ہے اس کے خلاف آواز اٹھانے والوں کی زبان پر لگام ڈالنے کیلئے غنڈہ گردی کا مظاہرہ کیا جارہا ہے۔

حفیظ نعمانی 

ملک کے حالات رفتہ رفتہ اتنے بگڑتے جارہے ہیں کہ اب تک جو زبانیں اس لئے تالو سے لگی تھیں کہ بی جے پی نہیں تو کون؟ اب وہ بھی تکلف اور شرم چھوڑکر یہ کہنے پر مجبور ہورہی ہیں کہ پیٹرول ڈیزل کی جو قیمت 2014 ء میں تھی بین الاقوامی بازار میں آدھی ہونے کے باوجود ہندوستان میں وہی ہے۔ اور ان کی تائید میں بولنے والے بول رہے ہیں کہ سب سے بڑے ڈاکو تو مرکزی وزیر اور صوبائی وزیر ہیں جو اپنا ٹیکس لے لیتے ہیں اور ہر لیٹر سے 38 روپئے ٹیکس وصول کرلیا جاتا ہے۔ ہم نے دیکھا ہے کہ جب ملک کے حالات کمزور ہوتے ہیں تو سب سے پہلے ڈیزل پیٹرول کے ٹھکانوں کو جنگ کا میدان بنایا جاتا ہے اس لئے کہ وہی جگہ ہے جہاں مڈل کلاس اور اپر کلاس کو ہر حال میں آنا پڑتا ہے۔

حفیظ نعمانی

عربی فارسی مدرسہ بورڈ کے تحت چلنے والے 560 مدارس میں 46 مدارس کی گرانٹ حکومت نے روک دی ہے۔ اگر نظریاتی یا سیاسی بنیاد پر کوئی فیصلہ کرنا ہوتا تو 200 سے زیادہ مدرسوں پر بجلی گرتی۔ اس وقت جو کچھ ہوا ہے وہ اس تحقیق کے نتیجہ میں ہوا ہے جو یوگی سرکار نے آنے کے بعد مدارس کی جانچ کرانے کیلئے کرائی تھی۔ ان 46 مدارس کے بارے میں رپورٹ ملی ہے کہ ان مدرسوں میں پڑھانے والوں اور دوسرے ملازموں کو تنخواہ کم دی جاتی ہے اور زیادہ پر دستخط کرائے جاتے ہیں۔ اور ایسی بھی رپورٹیں ملی ہیں کہ جتنی تنخواہ دی جاتی ہے اس سے زیادہ دکھائی جاتی ہے۔ یا مدارس میں درس تدریس صرف کاغذ پر ہے زمین پر کچھ نہیں ہے۔

Urdu-Arabic-Keybaord11

ISLAMIC-MESSAGES