dushwari

نفع بخش امت

مولانا قاضی مجاہد الاسلام قاسمی

اہل حق چونکہ برسر حق ہیں ، ذات حق کے تابعدار ہیں اور حق ہی کا پرچم وہ لہراتے ہیں ، اس لئے کتاب حق ، قرآن عظیم اور رسول برحق ؐ کی سنت حقہ نے انہیں خیر و شر کی آویزش میں قدم قدم پر رہنمائی کی ہے ، باطل کی سازشوں اور مکرو فریب سے انہیں آگاہ کیا ہے اور ان کی زندگی کی شاہراہ کا تعین کردیا ہے کہہ دیجئے یہ میری راہ ہے ، بلاتا ہوں اﷲ کی طرف سمجھ بوجھ کر میں اور جو میرے ساتھ ہیں یہ شاہراہ حق کبھی بھی اہل حق کی نگاہ سے اوجھل نہیں ہوسکتی ،

زندگی کے ہر ہر موقع کے لئے ایسی واضح ہدایات ، خیر و شر کی رستخیزی کے دوران راہ عمل اور مستقبل کے بارے میں واضح ترین پیشن گوئیاں اور رہنمائیاں اس قدر تفصیل کے ساتھ بتادی گئی ہیں کہ کسی عذر کی گنجائش باقی نہیں رہتی ، اور یہ ہے راستہ تیرے رب کا سیدھا ، ہم نے واضح کردیا نشانیوں کو غور کرنے والوں کے واسطے بلکہ کتاب حق و ہدایات نے تو اہل حق کو یہاں تک آگاہ کرکے چوکنا کردیا کہ باطل کا انتہائی مطمع نظر کیا ہے اور وہ اہل حق سے کیا چاہتا ہے ، اور ہرگز راضی نہ ہونگے تجھ سے یہود اور نصاریٰ جب تک تو تابع نہ ہو ان کے دین کا ، کہدے کہ جو راہ اﷲ بتلادے وہی راہ سیدھی ہے ۔
زمانہ اب اپنے اختتام کی طرف گامزن ہے قیامت کی سچی آمد کی علامات کا دور ظہور جاری ہے ، نبوی پیشن گوئیوں کے مطابق نژاد بولہبی اپنے پورے شدو مد کے ساتھ چراغ مصطفویؐ کو گل کرنے پر آمادہ ہوا چاہتا ہے ، اہل حق کے لئے بڑے سخت امتحانات اور آزمائشیں آنے والی ہیں ، فتنوں کی یورش ، بارش کے قطرو ں کی طرح ہمہ گیر اور سمندر کی موجوں کی طرح بھیانک ہوگئی ۔ ایسے نازک وقت میں بھی اہل حق ، دین پر ثابت قدم رہیں گے گوکہ انہیں دین پر عمل کرنے کے لئے پھولوں کی سیج نہیں بلکہ آگ کے انگاروں پر چلنا پڑے گا۔ موجودہ حالات میں جس تیزی کے ساتھ تبدیلی آرہی ہے ، نئی صف بندیاں وجود میں آرہی ہیں اور نئے نئے خطرات سراٹھارہے ہیں ، علمبردار ان حق و انصاف کے لئے دین کی ہدایات کی روشنی میں یہ وقت ایک بنیادی اور بڑا لمحہ فکریہ ہے ، افکار و تصورات کے لئے بھی سلوک و عمل کے لئے بھی اور نشان راہ کے تعین کے لئے بھی۔ اب اس عہد میں ہمارے لئے ضروری ہے کہ (۱) نئے فتنوں کو خوبصورت الفاظ و ذرائع ارسال کے ذریعہ اور مصنوعی پس منظر کے ساتھ الیکٹرانک اور پرنٹ میڈیا کے ذریعہ پیش کئے جارہے ہیں، ہم ان کو شناخت کریں ، رسائل ابلاغ کے ذریعہ عالم گیر یت کے نام پر جو اخلاق و تہذیب ، انسانی معاشرہ کے کانوں اور آنکھوں کے ذریعہ دماغ تک پہنچائی جارہی ہے ، وہ انسان کی طبعی خواہش کو پورا کرتی ہے اس لئے وہ ذہن کو تیزی کے ساتھ گمراہی کی طرف لے جارہی ہے ، خاص کر نئی نسل ان نظریات سے تیزی کے ساتھ متاثر ہوتی جارہی ہے (۲) اس عالمگیر اور آفاقیت (گلوبلائزیشن) اور ورلڈ آرڈر کے نام پر اسلامی قوانین کی تصویر اور اس کے چہرہ کو بگاڑنے کی منظم اور مصنوبہ بند کوشش کی جارہی ہے ، بڑے بڑے سیاسی رہنماؤں نے اس کی اس طرح تاویل کی ہے گویا مسلمان الگ ہیں اوراسلام الگ ، یہاں تک وہ کہتے ہیں کہ ہماری لڑائی مسلمانوں سے نہیں ، اسلامی آتنگ واد اور اسلامی دہشت گردی سے ہے ، ظاہر ہے کہ مطلقا جس اسلام کو ایسا مذہب قرار دیا جائے گا جس میں دہشت گردی کی تعلیم دی جاتی ہو تو کس مسلمان کو ، ان کے کس ادارے کو ، ان کی تعلیم کے کن مراکز کو ، ان کی تہذیبی ، اجتماعی اور سماجی تنظیموں کو کیسے بخشا جائے گا (۳) یہ بھی امر ، مسلمانوں کے دیکھنے کا ہے کہ وہ کسی فطری عدم توازن کا شکار تو نہیں ہیں اور جہاد کے نام پر اسلامی تعلیمات کے دئے ہوئے نظریہ اور پس منظر پر ان کی نگاہ ہے یا نہیں، یا فوراً ہر بات میں نعرے لگادینا اور میدان میں اتر آنا اور جنگ آزادی کی ہو یا کوئی سی بھی ، غریبوں ، بوڑھوں بچوں اور عورتوں وغیرہ طبقات کو اپنی طاقت کا نشانہ بنانا ، کیا ان بے قصور لوگوں کے ساتھ یہ رویہ اختیار کرنے کی اجازت اسلام نے دی ہے ۔ (۴) کیا یہ ضروری نہیں ہے کہ مسلمان ، زندگی کے ہرامر میں نہ صرف اپنے اور اپنے رشتہ داراوں اور اہل مذہب کے لئے بلکہ پوری انسانیت کے لئے نفع بخش ثابت ہوں ۔ (۵) مسلمانوں میں کوئی ایسی مضبوط اور مرتب تنظیم موجود نہیں، جس کا مقصد عالم انسانیت کو مدد پہونچانا ، معاشی انحطاط کو دور کرکے لوگوں کو مناسب روزی روٹی فراہم کرنے کی جدوجہد کرنا ، ان کے بچوں کو اچھی اور اعلیٰ تعلیم دلانا اور انکی بچیوں میں ہنرمندی پیدا کرنا ہو، ۔۔پس آج کے عہد میں مسلمانوں کو ایک نفع بخش امت کی حیثیت سے جینا ہوگا ، جس کے خطوط خود سیرت نبویؐ اور سیرت صحابہؓ و تابعین ؒ سے مل جاتے ہیں ، دوسری طرف باطل کے پروپگنڈہ کے ذریعہ اسلام کی تصویر کو بگاڑنے کی جو کوشش ہورہی ہے اس کو اپنے عمل سے دور کرکے اسلام کی صحیح تصویر کو آشکارا کرنا ضروری ہے ۔
(سہہ ماہی بحث نظر ، پٹنہ ، شمارہ ۔۵۵ ، جلد ۔۴۱)

12؍ نومبر 2017
ادارہ فکروخبر

Urdu-Arabic-Keybaord11

ISLAMIC-MESSAGES