Live Madinah

makkah1

dushwari

رام اللہ ۔۔18اپریل(فکروخبر/ذرائع) اسرائیلی جیلوں میں قید سیکڑوں فلسطینیوں نے اجتماعی بھوک ہڑتال کردی ہے۔ ان سے جیل میں قید معروف فلسطینی لیڈر مروان برغوثی نے اسرائیل کے خلاف احتجاج کے طور پر بھوک ہڑتال کی اپیل کی تھی۔فلسطینی اتھارٹی کے قیدیوں کے امور کے سربراہ عیسیٰ قرق نے کہا ہے کہ قریباً تیرہ سو فلسطینی قیدی بھوک ہڑتال میں حصہ لے رہے ہیں اور یہ تعدد بڑھ سکتی ہے۔ایک غیر سرکاری تنظیم فلسطینی قیدی کلب نے بھوک ہڑتالی قیدیوں کی تعداد پندرہ سو بتائی ہے۔اسرائیلی جیل سروس کے ترجمان عساف لبرٹی نے کہا ہے کہ اتوار کے روز سات سو قیدیوں نے بھوک ہڑتال کا ارادہ ظاہر کیاتھا۔آج سوموار کی صبح سے ہم یہ دیکھ رہے ہیں کہ کل کتنے قیدیوں نے بھوک ہڑتال کی ہے کیونکہ بعض فلسطینی قیدیوں کا کہنا تھا کہ وہ علامتی بھوک ہڑتال کردیں گے اور پھر کھانا کھانا شروع کردیں گے۔واضح رہے کہ مروان برغوثی اسرائیل کے خلاف دوسری انتفاضہ تحریک کے دوران میں کردار پر عمر قید کی سزا بھگت ہیں۔وہ فلسطینیوں میں بہت مقبول ہیں اور رائے عامہ کے جائزوں کے مطابق وہ فلسطینی صدارت کا انتخاب بھی جیت سکتے ہیں۔

 شام:17 اپریل (فکروخبر/ذرائع)شامی حزب اختلاف کے ارکان کے مطابق چار مختلف علاقوں سے 3000 شامی شہریوں کے انخلاء کے عمل کو ایک قافلے پر حملے کے بعد موخر کردیا گیا ہے۔ اس سے قبل شامی صدر کے حامی پناہ گزینوں کے ایک قافلے کو بم دھماکے سے نشانہ بنایا گیا جس کے نتیجے میں 120 افراد ہلاک ہوگئے تھے۔اس موقع پر اس تاخیر کی کسی وجہ کا باضابطہ اعلان نہیں کیا گیا۔ اس اعلان کے وقت ہی دئیر الزور شہر میں داعش کی جانب سے گولہ باری کی گئی جس کے نتیجے میں علاقے کا دورہ کرنے والے دو روسی صحافی زخمی ہوگئے۔روسی فوج کی 'انا' نیوز سروس کے مطابق دونوں صحافی اس کے ملازم ہیں۔ ان میں سے ایک کو بازو میں جبکہ دوسرے صحافی کو ٹانگ اور پیٹ پر زخم آئے ہیں۔ نیوز سروس کے مطابق دونوں روسیوں کو علاقے سے نکال لیا گیا ہے۔اقوام متحدہ شام کے ان چار قصبات سے شہریوں کی منتقلی کے عمل کی نگرانی نہیں کررہی ہے۔ شامی حکومت کے حامیوں کے قصبے فوا اور کفریا کے ساتھ ساتھ حزب اختلاف کے حامی مضایا اور الزبدانی کے شہری کئی سالوں سے محاصرے میں رہنے پر مجبور ہیں اور اب انہیں علاقے سے نکالا جارہا ہے۔

واشنگٹن ۔  15اپریل(فکروخبر/ذرائع)امریکا نے پہلی مرتبہ افغانستان کے مشرقی علاقے میں داعش کے ٹھکانوں پر ایک بہت بڑا (قریباً 245 من وزنی) غیر جوہری بم جی بی یو-43 گرا دیا ہےامریکی فوج نے ایک بیان میں اس کو بموں کی ماں قرار دیا ہے اور کہا ہے کہ اس کو جمعرات کے روز صوبہ ننگرہار میں داعش کے زیر استعمال سلسلہ وار غاروں پر گرایا گیا ہے۔یہ پہلا موقع ہے کہ امریکا نے کسی جنگ میں اس طرح کا اتنا بڑا بم گرایا ہے۔امریکی محکمہ دفاع پینٹاگان کے ترجمان ایڈم اسٹمپ نے کہا ہے کہ ایم سی-130 طیارے کے ذریعے جی بی یو- 43 بم پاکستان کی سرحد کے نزدیک واقع افغان صوبے ننگرہار کے ضلع اچین میں گرایا گیا ہے۔

استنبول ۔12اپریل(فکروخبر/ذرائع) ترک خبر رساں اداروں کے مطابق وزیر صحت رجب اقداگ نے دعویٰ کیا ہے کہ شام کے شمال مغربی شہر ادلب میں ایک مبینہ کیمیائی حملے کے زخمیوں کے طبی معائنے سے پتا چلا ہے کہ انہیں انتہائی مہلک 146سیرین145 گیس سے نشناہ بنایا گیا ہے۔العربیہ کےمطابق ترک خبر رساں ادارے  اناطولیہنے ترکی کے وزیر صحت رجب اقداگ کا بیان نقل کیا ہے۔ اس بیان میں انہوں نے دعویٰ کیا ہے کہ ادلب میں مبینہ کیمیائی حملے سے زخمی ہونے والے شامی شہری ترکی کے اسپتالوں میں زیرعلاج ہیں۔ ماہرین نے ان زخمیوں کے پیشاب اور خون کے نمونوں کا معائنہ کیا ہے۔ تحقیق سے پتا چلا ہے کہ ترکی لائے گئے شہری سیرین گیس کے استعمال سے زخمی ہوئے ہیں۔

دبئی :۔11اپریل(فکروخبر/ذرائع)عراق کے شمالی علاقے سنجار کے حکام نے شدت پسند تنظیم داعش کے ہاتھوں قتل کیے گئے یزیدی قبیلے کی ایک ہزار سے زاید افراد کی باقیات کا انکشاف کیا ہے۔العربیہ نیوز چینل کی رپورٹ کے مطابق سنجار کے قائم مقام چیف جسٹس محما خلیل نے بتایا کہ داعش کی جانب سے بنائی گئی اجتماعی قبروں سے 1646 یزیدیوں کی باقیات برآمد کی گئی ہیں۔خبر رساں ایجنسی اناطولیہ145 سے بات کرتے ہوئے محما خلیل نے بتایا کہ داعشی دہشت گردوں نے یزیدی قبیلے کے سیکڑوں افراد کو بے رحمی کے ساتھ موت کے گھاٹ اتارنے کے بعد انہیں اجتماعی قبروں میں دفن کردیا تھا۔ داعش کی طرف سے تیار کی گئی 31 اجتماعی قبروں کا پتا چلا ہے۔ یہ اجتماعی قبریں نومبر 2015ء اور جنوری 2016ء کے درمیان بنائی گئیں اور ان میں سے اب تک 1646 یزیدی افراد کی میتوں کا پتا چلا ہے۔خیال رہے کہ عراق کی البیشمرگہ کرد فوج نے نومبر 2015ء میں ایک آپریشن کے دوران سنجار کو داعش سے چھڑا لیا تھا۔

مصر :10اپریل(فکروخبر /ذرائع)مصر کے شہروں اسکندریہ اور طنطا میں دو قبطی چرچوں میں دھماکوں کے نتیجے میں کم ازکم 41 افراد ہلاک جبکہ 100 کے قریب افراد زخمی ہو گئے۔سرکاری میڈیا کے مطابق قاہرہ کے شمال میں واقع شہر طنطا میں سینٹ جارج قبطی چرچ میں دھماکہ ہوا۔ سرکاری ٹی وی کے مطابق یہ دھماکا "پام سنڈے" کے موقع پر ہوا ہے جو کہ قبطی عیسائیوں کا سب سے مقدس دن مانا جاتا ہے۔نشانہ بنائے جانے والی دونوں عمارات میں پام سنڈے کی مناسبت سے تقریبات منعقد کی جارہی تھی۔ مصری سرکاری میڈیا کے مطابق قبطی عیسائیوں کے روحانی پیشوا پوپ توادروس دوئم بھی اسکندریہ میں تقریب میں شرکت کے لئے موجود تھے۔

بشار الاسد کو فوری طور پر اقتدار سے ہٹایا جائے

ترکی۔08اپریل(فکروخبر/ذرائع)ترکی کے صدر رجب طیب ایردوآن نے شام کے فوجی اڈے پر امریکا کے مزائل حملوں کی حمایت کرتے ہوئے کہا ہے کہ شام میں اسد رجیم کے ٹھکانوں پر بمباری درست اقدام ہے مگر ایک حملہ کافی نہیں۔ شامی عوام کو اسد رجیم کے مظالم سے نجات دلانے کے لیے موثر اقدامات کرنا ہوں گے۔العربیہ کے مطابق جنوبی ریاست ہاتائی میں ایک جلسے سے خطاب کرتے ہوئے صدر ایردوآن نے کہا کہ شام کے حمص شہر میں الشعیرات کے فوجی اڈے پر امریکی میزائل حملہ درست اقدام ہے اور وہ اس کی بھرپور حمایت کرتے ہیں۔ البتہ اس حملے کو شامی عوام کے تحفظ کے لیے کافی نہیں سمجھتے۔انہوں نے کہا کہ شامی عوام کو اسد رجیم کے مظالم سے بچانے کے لیے مزید اور موثر اقدامات کرنا ہوں گے۔ شام میں محفوظ زون کے قیام سمیت کئی دوسرے اقدامات کی فوری ضرورت ہے تاکہ اسد رجیم سے شہریوں کو تحفظ دلایا جاسکے۔

امریکا نے شامی ائر بیس پر دسیوں ٹام ہاک کروز میزائل داغے

امریکا۔07اپریل(فکروخبر/ذرائع)امریکا نے شام میں باغیوں کے زیر اثر علاقوں میں کیمیائی حملے کے جواب میں شام کے خلاف میزائل سے کئی حملے کیے ہیں۔ امریکی محکمہ دفاع کے مرکز پینٹاگون کا کہنا ہے کہ مشرقی بحیرہ روم میں بحری بیڑے سے تقریبا 50 ٹام ہاک کروز میزائل سے شام کے ایک ہوائی اڈے کو نشانہ بنایا گیا ہے۔صدر ٹرمپ کا کہنا ہے کہ انھوں نے ہی شام کی فضائی بیس پر حملے کا حکم دیا تھا جہاں سے منگل کو شامی فضائیہ نے حملے کیے تھے۔ انھوں نے اس موقع پر 'تمام مہذب ممالک' سے شام میں تنازع کو ختم کرنے میں مدد کرنے کی بھی اپیل کی ہے۔واضح رہے کہ شام کے ادلب کے علاقے خان شیخون میں مشتبہ زہریلی گیس کے حملے میں اب تک 27 بچوں سمیت کم سے کم 72 افراد جاں بحق ہو چکے ہیں۔امریکہ اور اس کے مغربی اتحادیوں نے شام پر فضائی حملے کے دوران کیمیائی ہتھیار استعمال کرنے کا الزام عائد کیا ہے جس کی شامی حکومت نے تردید کی ہے۔

سلامتی کونسل میں مجوزہ قرارداد قابل قبول نہیں ،اس سے مزید عدم استحکام پیدا ہوگا

 شام /روس۔ 06 اپریل (فکروخبر/ذرائع) روسی حکومت کے ترجمان دمتری پیسکوف نے شام کے شمال مغربی صوبے ادلب میں تباہ کن کیمیائی حملے کے باوجود شامی صدر بشارالاسد اور ان کی حکومت کی حمایت میں فوجی کارروائیاں جاری رکھنے کا اعلان کیا ہے۔ترجمان نے کہا ہے کہ روس اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے ہنگامی اجلاس میں یہ موقف اختیار کرے گا کہ یہ شامی حزب اختلاف اس کیمیائی حملے کی ذمے دار ہے۔ مسٹر پیسکوف کا کہنا تھا کہروس کا اسد رجیم کے بارے میں موقف بدستور غیر متبدل رہے گا۔ماسکو میں روسی وزارت خارجہ کے ترجمان نے بھی ایک بیان میں کہا ہے کہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں پیش کردہ مجوزہ قرارداد ان کے لیے ناقابل قبول ہے کیونکہ یہ غلط معلومات پر مبنی ہے اورا س سے خطے میں مزید عدم استحکام ہی پیدا ہوگا۔قبل ازیں روس کی وزارت دفاع نے شامی اپوزیشن کو کیمیائی حملے کا مورد الزام ٹھہرایا تھا۔

شام 04اپریل(فکروخبر/ذرائع)شام کے شمال مغربی صوبے اِدلِب میں زہریلی گیس کے فضائی حملے میں جاں بحق ہونے والوں کی تعداد 60 ہو گئی ہے۔ الحدث نیوز چینل کے مطابق مقامی کارکنان نے بتایا ہے کہ خان شیخون شہر میں منگل کی صبح ہونے والے اس حملے میں جاں بحق ہونے والوں میں اکثریت شہریوں کی ہے۔ادھر شام میں انسانی حقوق کے مانیٹرنگ گروپ کے ڈائریکٹر رامی عبدالرحمن نے فرانسیسی نیوز ایجنسی کو بتایا کہ حملے میں کم از کم 35 افراد جاں بحق ہوئے جن میں نو بچوں سمیت زیادہ اکثریت عام شہریوں کی ہے۔ رامی کے مطابق یہ معلوم نہیں ہوسکا کہ زہریلی گیس کا حملہ کرنے والے طیارے شامی حکومت کے تھے یا روسی فضائیہ کے۔