Live Madinah

makkah1

dushwari

قاہرہ : ۔30اپریل(فکروخبر/ذرائع)مصری حکومت نے ہفتے کے روز سوشل میڈیا پر گردش میں آنے والی ان خبروں کی تردید کی ہے جن میں کہا گیا تھا کہ ملک میں حفظِ قرآن اور مبلغین تیار کرنے والے تمام مکاتب کو بند کر دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔سماجی یک جہتی کی وزارت کی جانب سے واضح کیا گیا ہے کہ اس نوعیت کا کوئی بھی فیصلہ صادر نہیں ہوا ہے۔وزارت کی جانب سے جاری بیان میں بتایا گیا ہے کہ وہ دیکھ بھال اور ترقیاتی نوعیت کی مختلف سرگرمیوں کے سلسلے میں مقامی سوسائٹیوں کو اجازت نامے جاری کر رہی ہے اور ہسپتالوں اور طبی مراکز کی انتظامیہ کے واسطے وزارت صحت کی جانب سے اجازت نامے جاری کیے جاتے ہیں۔ تاہم جہاں تک اسکولوں اور تعلیمی مراکز کا تعلق ہے اس کے اجازت نامے وزارت تعلیم جاری کرتی ہے جب کہ مبلغین کے مراکز کی صورت میں یہ اجازت نامے وزارت اوقاف کی جانب سے جاری کیے جاتے ہیں۔

الدرباسیہ [شام]: ۔29اپریل(فکروخبر/ذرائع)شام میں کرد پیپلز ڈیفنس یونٹ کے سربراہ نے کہا ہے کہ گذشتہ ایک ہفتے سے ترکی اور شام کی سرحد پر کرد جنگجوؤں اور ترک فوج کے درمیان فائرنگ کے واقعات کے بعد امریکا نے دونوں ملکوں کی سرحد کی نگرانی کا فیصلہ کیا ہے۔العربیہ  کے مطابق  حمایۃ الشعب  کے سربراہ شرفان کوبانی نے کہا کہ ترکی کی سرحد کے قریب الدرباسیہ قصبے میں کرد جنگجوؤں اور امریکی حکام کے درمیان ایک اہم ملاقات ہوئی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ فی الوقت امریکی فوج ترکی اور شام کی سرحد کی باقاعدگی کے ساتھ مانیٹرنگ نہیں کرے گی تاہم اس حوالے سے رپورٹ سینیر امریکی فوجی عہدیداروں تک پہنچائی جائے گی۔

 دمشق:27 اپریل (فکروخبر/ذرائع)اسرائیل نے دمشق کے بین الاقوامی ہوائی اڈے میں واقع فوجی نوعیت کے اہداف پر جمعرات کی صبح پانچ فضائی حملے کئے ہیں۔ اس امر کا انکشاف روسی خبر رساں ادارے "سپٹنک" نے ایک نشریئے میں کیا ہے۔لندن میں قائم انسانی حقوق آبزرویٹری کے مطابق اسرائیلی حملوں کے بعد دمشق بین الاقوامی ہوائی اڈے پر زور دار دھماکے سنے گئے جس کے بعد حملوں کی جگہ سے آگے کے مرغولے اٹھتے دیکھے گئے۔آبزرویٹری کے مطابق دھماکوں کی وجوہات معلوم نہیں ہو سکیں۔ادھر برطانوی خبر رساں ایجنسی "رائیٹرز" نے شامی اپوزیشن کے حوالے سے بتایا کہ دمشق ہوائی اڈے کے اس حصے کو نشانہ بنایا گیا ہے جسے ایران کی سپورٹ اور حمایت حاصل ہے۔الغوطہ میڈیا سینٹر نے دھماکے کے بعد ایک ویڈیو جاری کی ہے جو کافی دور سے بنائی گئی ہے۔

ایران:26اپریل(فکروخبر/ذرائع)ایران میں صدر حسن روحانی کی خصوصی مندوب برائے حقوق نسواں کی طرف سے اعتراف کیا گیا ہے کہ ملک میں جرائم پیشہ عناصر دھڑلے کے ساتھ خواتین کی اسمگلنگ کا مکروہ کاروباری جاری رکھے ہوئے ہیں۔العربیہ کے مطابق ایرانی حکومت میں شامل خواتین سے متعلق امور کی ڈائریکٹر اشرف گرامی زادگان نے ایک انٹرویو میں اعتراف کیا کہ ملک میں خواتین کی غیرقانونی اسمگلنگ اور خریدو فروخت کا دھندہ اب بھی جاری ہے۔ انہوں نے کہا کہ تہران حکومت ملک میں خواتین کی تجارت اور ان کی اسمگلنگ کے مکروہ دہندے کی روک تھام کے لیے موثر اقدامات کررہی ہے۔ خیال رہے کہ ایرانی حکومت اس سے قبل یہ دعویٰ کرتی رہی ہے کہ ملک میں خواتین کی اسمگلنگ کا کوئی کاروبار نہیں۔ایلناخبر رساں ادارے کو دیے گئے انٹرویو میں اشرف گرامی زادگان نے کہا کہ ملک میں خواتین کی اسمگلنگ کی روک تھام کے لیے متعدد تجاویز سامنے آئی ہیں۔

واشنگٹن  ۔ 25 اپریل (فکروخبر/ذرائع)امریکی حکومت نے اپریل کے اوائل میں ادلب کے علاقے خان شیخون میں ایک مبینہ کیمیائی حملے میں قصور وار قراردیے گئے 271 شامی سرکاری عہدیداروں کے اثاثے منجمد کرتے ہوئے انہیں مکمل طور پر بلیک لسٹ کردیا ہے۔العربیہ  کے مطابق امریکی وزارت خزانہ کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ اسد رجیم سے وابستہ ان سرکاری اہل کاروں پر تعزیرات عائد کی گئی ہیں جو خان شیخون میں رواں ماہ کے اوائل میں کیے گئے سارن گیس کے مبینہ حملے میں قصور وار قرار دیے گئے ہیں۔ اس حملے میں درجنوں شہری جاں بحق ہوگئے تھے۔امریکی وزیر خزانہ اسٹیو منوشن نےکل پیر کو اپنے ایک بیان میں بتایا کہ خان شیخون میں کیمیائی حملے کے ملزمان کے امریکا میں موجود تمام اثاثے منجمد کرنے کے احکامات جاری کر دیے گئے ہیں۔ یہ 271 اہل کار شام کے سائنسی مطالعے اور تحقیقی مرکز کے ملازمین ہیں۔

ریتلے طوفان کے باعثداعش نے گھات لگا کرفوجیوں پرحملہ کردیا

بغداد:۔24اپریل(فکروخبر/ذرائع)عراق کے سیکیورٹی حکام نے خبر دی ہے کہ ملک کی مغربی گورنری الانبار میں الرطبہ کے مقام پرداعش کے تازہ حملے میں کم سے کم نو فوجی ہلاک اور تین اغواء کرلیے گئے ہیں۔عراقی فوج کے ایک ذریعے نےالعربیہ کوبتایا کہ داعشی جنگجوؤں نے الرطبہ کے علاقے الصقار میں عراقی بارڈر سیکیورٹی فورسز کی تین گاڑیوں کو گھات لگا کرحملے کا نشانہ بنایا جس کےنتیجے میں ان گاڑیوں میں موجود نو فوجی ہلاک ہوگئے۔ جنگجوؤں نے تین فوجیوں کو یرغمال بنالیا جب کہ ایک گاڑی بھی لاپتا ہے جوممکنہ طور پرداعش نے قبضے میں لے لی ہے۔ذرائع کے مطابق داعشی جنگجوؤں نے خراب موسم سے فائدہ اٹھاتے ہوئے فوجی گاڑیوں پرحملہ کیا۔ حملے سے قبل مغربی انبار میں ریت کا شدید طوفان آیا تھا۔ جس کے نتیجے میں زیادہ دور صاف دکھائی نہیں دے رہا تھا۔خیال رہے کہ مغربی الانبار کے تین اہم علاقے اب بھی داعش کے زیرتسلط ہیں۔ ان میں شام سے متصل القائم شہر خاص طور پراہمیت کا حال ہے۔

میشل عون کی حزب اللہ بارے مبہم پالیسی باعث تشویش

واشنگٹن -۔23اپریل(فکروخبر/ذرائع)حسب معمول ایک نئی انتظامیہ کی طرح امریکا کی نئی حکومت لبنان کی موجودہ امن امان اور سیاسی صورت حال پر گہری نظر رکھے ہوئے ہے۔ اس کےساتھ ساتھ امریکا نے ایران کے بارے میں سابقہ حکومت کی پالیسی ترک کرتے ہوئے زیادہ جرات مندانہ اور سخت موقف اپنایا ہے۔العربیہ کے مطابق نئی امریکی انتظامیہ لبنانی شیعہ ملیشیا حزب اللہ کی طرف سےخطے کو درپیش خطرات سے نمٹںے کے لیے پرعزم دکھائی دیتی ہے مگر امریکیوں کے لیے لبنانی صدر میشل عون کی حزب اللہ بارے مبہم پالیسیوں پر تشویش بھی لاحق ہے۔ امریکی یہ جاننا چاہتے ہیں کہ آیا صدر عون کا حزب اللہ کے بارے میں موقف کیا ہے اور وہ مستقبل میں اس خطرناک جنگجو گروپ سے کس طرح نمٹنا چاہتے ہیں؟۔

ایران۔22اپریل(فکروخبر/ذرائع)ایران میں انسانی حقوق کے لیے کام کرنے والی ایک تنظیم کی طرف سے جاری کردہ سالانہ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ گذشتہ ایک سال کے دوران 530 افراد کو پھانسی دی گئی۔ ان میں ایران کے عرب اکثریتی صوبہ اھواز اور کردستان کے 44 کارکن بھی شامل ہیں۔ ایرانی ریاست نے ملزمان پربغاوت اور اللہ اور اس کے رسول کے خلاف جنگ کے الزام کے تحت انقلاب عدالتوں میں مقدمات چلائے۔ عدالتوں کی طرف ہونے والی سزاؤں کے بعد انہیں موت کے گھاٹ اتار دیا گیا۔العربیہ  کے مطابق ایرانی انسانی حقوق گروپ کی طرف سے جاری کردہ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ایرانی حکام کی طرف سے اللہ اور اس کے رسول کے خلاف جنگ کا الزام اکثر سیاسی قیدیوں پر بھی عاید کیا جاتا ہے مگر آج تک اس کی کوئی واضح تعریف نہیں کی جاسکی ہے۔ایرانی پولیس پرامن سرگرمیوں کے الزام میں گرفتار افراد کے خلاف بھی ممنوعہ اپوزیشن گروپوں سے تعلقات جوڑ کرانہیں پھانسی دلوانے کی کوششیں کرتی رہی ہے۔

اسلام آباد ۔۔ 20 اپریل (فکروخبر/ذرائع)صوبہ پنجاب ضلع پسرور میں 3 برقع پوش بہنوں نے 13 سال قبل مبینہ طور پر 'توہین رسالت' کا ارتکاب کرنے والے ایک شخص کو فائرنگ کر کے قتل کردیا۔واقعے کے بعد پولیس تینوں بہنوں کو گرفتار کرنے میں کامیاب ہوگئی جن کی شناخت امینہ، افشین اور رضیہ کے ناموں سے ہوئی ہے۔مقامی اخبار 'ڈان نیوز' کے مطابق پولیس کا کہنا تھا کہ 3 خواتین ایک مذہبی رہنما مظہر حسین سید کے گھر پر گئیں اور ان کے بیٹے سے ملنے کی خواہش ظاہر کی۔جس وقت 45 سالہ فضل عباس ان خواتین کے سامنے آئے تو تینوں بہنوں نے اپنے ساتھ لائے گئے آتشی اسلحہ سے اس پر فائرنگ کردی جس سے وہ موقع پر ہی ہلاک ہوگیا۔فضل عباس کی ہلاکت کے بعد خواتین نے نعرے لگائے کہ انھوں نے مبینہ طور پر توہین رسالت کا ارتکاب کرنے والے کو قتل کردیا ہے۔ملزمان خواتین نے اپنے بیان میں پولیس کو بتایا کہ فضل عباس نے 2004 میں توہین رسالت کا ارتکاب کیا تھا،

مصر۔19 اپریل (فکروخبر/ذرائع)مصر کے جزیرہ نما سیناء میں ایک عیسائی عبادت گاہ کے قریب منگل کے روز فائرنگ کے ایک واقعے میں ایک پولیس اہلکار ہلاک اور تین زخمی ہوگئے۔ دوسری جانب شدت پسند تنظیم  داعش نے اس حملے کی ذمہ داری قبول کی ہے۔تنظیم نے دعویٰ کیا ہے کہ اس نے مصری پولیس اور گرجا گھر کو نشانہ بنایا ہے۔ تاہم گرجا گھر کی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ فائرنگ کے نتیجے میں کسی قسم کا جانی یا مالی نقصان نہیں ہوا۔العربیہ  کے مطابق مصری وزارت داخلہ کے حکام نے بتایا کہ مسلح شدت پسندوں نے جزیرہ سینا میں پہاڑی علاقے میں دیر سینٹ کیتھرین کے قریب پولیس کی ایک پارٹی پر حملہ کردیا۔ پولیس کی جوابی فائرنگ میں دہشت گرد بندوق چھوڑ کر فرار ہوگئے، فائرنگ کے نتیجے میں ایک پولیس اہلکار ہلاک اور تین زخمی ہوگئے۔ مقتول پولیس اہلکار کی شناخت جمال محمد سعید امین کے نام سے کی گئی ہے۔ زخمیوں کو اسپتال منتقل کردیا گیا ہے۔