Live Madinah

makkah1

dushwari

دیار بکر۔ 03 ستمبر (فکروخبر/ذرائع)ترکی کے جنوب مشرقی علاقے میں رات سے جاری جھڑپوں میں سکیورٹی فورسز کے آٹھ اہلکار اور کالعدم کردستان ورکرز پارٹی ( پی کے کے) کے گیارہ جنگجو ہلاک ہوگئے ہیں۔ترکی کے ایک سکیورٹی ذریعے نے ہفتے کے روز بتایا ہے کہ ایران کی سرحد کے نزدیک واقع صوبے وان میں جمعے اور ہفتے کی درمیانی شب کرد باغیوں اور سکیورٹی فورسز کے درمیان لڑائی شروع ہوئی تھی۔سرکاری خبررساں ایجنسی اناطولو نے ایک مقامی گورنر کے حوالے سے بتایا ہے کہ علاقے میں جھڑپوں کے بعد کرد باغیوں کے خلاف فضائی کارروائی جاری ہے اور لڑاکا جیٹ سے ان کے ٹھکانوں کو نشانہ بنایا جارہا ہے۔گذشتہ روز ترکی کے کرد اکثریتی جنوب مشرقی علاقے میں فضائی حملوں اور جھڑپوں میں پی کے کے کے ستائیس جنگجو ہلاک ہوگئے تھے جبکہ ترک سکیورٹی فورسز کے سات اہلکار مارے گئے تھے۔

داعش نے بم حملے کی ذمے داری قبول کر لی،مہلوکین میں 25 شیعہ جنگجو شامل

دمشق ۔ یکم فروری (فکروخبر/ذرائع)شام کے دارالحکومت دمشق میں نواسیِ رسول حضرت سیدہ زینب رضی اللہ عنہا کے مزار کے نزدیک اتوار کے روز دو خودکش بم دھماکے ہوئے ہیں جن کے نتیجے میں کم سے کم ساٹھ افراد جاں بحق اور ایک سو بیس سے زیادہ زخمی ہوگئے ہیں۔داعش نے اس حملے کی ذمے داری قبول کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔برطانیہ میں قائم شامی آبزرویٹری برائے انسانی حقوق نے بتایا ہے کہ بارود ایک کار میں نصب کیا گیا تھا اور حملہ آور نے پہلے اس کو دھماکے سے اڑا دیا ہے۔

غذائی قلت سے بے حال شامی نونہال کی دل دہلا دینے والی ویڈیو

دبئی ۔07جنوری(فکروخبر/ذرائع )انسانی حقوق کے رضاکاروں نےشامی دارالحکومت دمشق کے مضافاتی علاقے مضایا کے محصور اور بھوک سے متاثرہ شہریوں کو فوری امداد کی فراہمی یقینی بنانے کا مطالبہ کیا ہے۔الحدث ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق دمشق کے نواحی علاقے مضایا میں بڑی تعداد میں مقامی آبادی اور آس پاس کے مہاجرین بدترین غربت اور بھوک کا شکار ہیں۔ مقامی شہری گھاس پھوس ، پتے سمیت کتوں اور بلیوں کا گوشت کھانے پر مجبور ہیں۔انسانی حقوق کے کارکنوں نے ایک یاداشت پر دستخطی مہم شروع کی ہے جس میں اقوام متحدہ سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ وہ مضایا کے متاثرین کی فوری امداد کو یقینی بنائے اور بھوک کےشکار شہریوں کی زندگیاں بچانے میں ان کی مدد کرے۔

دمشق۔21دسمبر( فکروخبر/ذرائع )شام کے دارالحکومت دمشق کی مغربی کالونی المزہ میں سڑک کنارے نصب بارودی سرنگ کے دھماکے سے فوجی بس میں سوار 10اہلکار شدید زخمی ہو گئے ہیں۔شام کی سرکاری خبر رساں ایجنسیسانا نے اپنی رپورٹ میں بتایا ہے کہ دمشق پولیس المزہ کالونی میں ہونے والے دہشت گردانہ واقعے کی تحقیقات کر رہی ہے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ اتوار کے روز مسافروں کو لے جانے والی ایک فوجی بس سڑک کے کنارے نصب بم پھٹنے سے بری طرح متاثر ہوئی جس کے نتیجے میں بس میں سوار دس افراد زخمی ہوئے ہیں۔شام کے سرکاری ٹی وی پر نشر کی گئی دھماکے کی فوٹیج میں کئی افراد کو لہولہان اسپتالوں میں لے جاتے دکھایا گیا ہے۔