dushwari

بی جے پی فرقہ واریت کو فروغ دے رہی ہے : کارکنان کا الزام 

اگرتلہ 10؍ دسمبر 2017(فکروخبر/ذرائع)    تری پورہ میں آئندہ سال کے انتخابات کے اختتام پر، کانگریس کو آج اس وقت بڑی کامیابی ملی جب بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے ایک ہزار کارکنوں نے کانگریس میں شمولیت اختیار کر لی۔ پارٹی تبدیلی کا ایک دلچسپ پہلو یہ بھی ہے کہ یہ بی جے پی کارکنان پہلے کانگریس میں ہی تھے اور ایک سال پہلے انڈین نیشنل اسٹوڈنٹس یونین کے سابق ریاستی صدر مجیب الاسلام مجمدار کی قیادت میں بی جے پی میں شامل ہوئے تھے، لیکن اب انہوں نے یہ کہتے ہوئے پھر کانگریس کا دامن تھام لیا کہ بی جے پی آئینی معیار پر عمل نہیں کر رہی اور فرقہ وارانہ سیاست کو فروغ دے رہی ہے۔

منکال وائدیا کو ٹکٹ ملنے کے اشارے 

بھٹکل 06؍ دسمبر 2017(فکروخبر نیوز) ریاستی وزیر اعلیٰ سدارامیا نے آج ضلع اتراکنڑا کے دو روزہ دورے کا آغاز بھٹکل سے کیا ۔ کانگریس کی جانب سے منعقدہ ایک عظیم الشان پروگرام میں انہوں نے شرکت کرتے ہوئے ایک ہزار دو سو روپئے کے ترقیاتی منصوبوں کا افتتاح کیا ، اسی طرح منی سودھا کی سنگِ بنیاد اور سرکیوٹ ہاؤ س کی نو تعمیر شدہ عمارت کا بھی افتتاح کیا۔ قریب پاؤنے ایک بجے بذریعہ ہیلی کاپٹر وہ بھٹکل پہنچے ، ۔ انہوں نے عوام سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مذکورہ ترقیاتی کاموں کی منظور ی کے لیے یہاں کے رکنِ اسمبلی منکال ایس وائدیا ہی کی کوششیں کارفرماہیں ،

بھٹکل05؍ دسمبر 2017(فکروخبرکی خصوصی رپورٹ ) 6دسمبر کو بھٹکل میں منعقد ہورہے کانگریس کے پروگرام سے سیاستدان اپنی اپنی روٹیاں سینکنے کی کوشش کررہے ہیں۔ یہ پروگرام اس حیثیت سے بھی اہمیت کا حامل ہے کہ وزیر اعلیٰ سدارامیا 6 اور 7؍دسمبر کو ضلع اتراکنڑا کا دورہ کررہے ہیں اور اس کی شروعات بھٹکل ہی سے کرنے جارہے ہیں اور اس موقع کا فائدہ ہر کوئی اٹھانا چاہتا ہے ۔ ضلع بھرکی اسمبلی سیٹوں میں سب سے زیادہ دلچسپ بھٹکل اسمبلی سیٹ ہے جس کو لے کر عوام میں چہ میگوئیوں کا بازار گرم ہے۔ آنے والے اسمبلی انتخابات میں یہ سیٹ اہمیت کی حامل اس حیثیت سے بھی ہے

احمد آباد:04؍ڈسمبر2017(فکروخبر/ذرائع)گجرات اسمبلی انتخابات کیلئے کانگریس نے اپنا انتخابی منشور جاری کردیا ہے۔ انتخابی منشور میں پارٹی نے ریاست کے تقریبا سبھی طبقوں کو خوش کرنے کی کوشش کی ہے۔ 100 صفحات پر مشتمل منشور میں جہاں پاٹیداروں کیلئے ریزرویشن اور کسانوں کے قرض معافی کا اعلان کیا گیا ہے ، وہیں کسانوں کیلئے مفت پانی اور بجلی بل کو آدھا کرنے کا بھی وعدہ کیا گیا ہے۔ریاستی کانگریس کے صدر بھرت سنگھ سولنکی نے کانگریس کا انتخابی منشور جاری کرتے ہوئے کہا کہ اس مرتبہ گجرات میں کانگریس پارٹی کا وزیر اعلی بننا تقریبا طے ہے ۔

ممبئی :02؍ڈسمبر2017(فکروخبر/ذرائع)جنوبی ممبئی میں تاریخ آزاد میدان میں واقع ممبئی ریجنل کانگریس کمیٹی کے صدردفتر میں راج ٹھاکرے کی پارٹی مہاراشٹر نونرمان سینا کے کارکنان نے زبردستی گھس کر بڑے پیمانے پر توڑپھوڑکی اور اسے ایک سرجیکل اسٹرائیک قراردیا ،ایم این ایس کے سکریٹری سندیپ دیشپانڈے نے ایک ٹوئیٹ میں کہاکہ ایم این ایس کی طرف سے بھیاسنجے نروپم کے دفتر پر یہ سرجیکل اسٹرائیک ہے اور ہم سے اینٹ کا جواب پتھر سے ملے گا۔

ڈاکٹر اسلم جاوید 

ہما چل پردیش کے بعد اب گجرات اسمبلی انتخابات کی ہمہ ہمی ہے اور صاف نظر آتا ہے کہ بی جے پی کے قومی صدر امت شاہ ،وزیر اعظم نریندر مودی اورتقریبا ساری بی جے پی نے ہی اس اسمبلی انتخاب کو اپنے وجود ،اپنی انا اور بقا کا مسئلہ بنا لیا ہے۔بی جے پی اور مرکزی حکومت کی سرگرمیوں کو دیکھ کر محسوس ہوتا ہے کہ اس وقت ساری مرکزی سرکار گجرات میں منتقل ہوچکی ہے اوربی جے پی کوئی قومی پارٹی نہیں بلکہ آر جے ڈی ،سماجو ا دی پارٹی اورپی ڈی پی کی طرح گجرات کی ایک مقامی جماعت ہے ،

نازش ہما قاسمی 

سیاسی گلیاروں میں شور ہے، قیاس آرائیاں کی جارہی ہیں، اخبارات کی سرخیاں یقین دہانی کرا رہی ہیں، احوال و کوائف احساس دلا رہے ہیں، راہل گاندھی کو کانگریس پارٹی بہت ہی اہم ذمہ داری سپرد کرنے جاری ہے۔ 4؍دسمبر کو ان کی صدارت کا اعلان ہونا تقریباً طے مانا جارہا ہے، گجرات اسمبلی انتخابات میں ان کی صدارت جان ڈال سکتی ہے، وہ کارکنان میں جوش بھر سکتے ہیں، کانگریس کی ڈوبتی کشتی کے کھویا ثابت ہوسکتے ہیں، ایسے دعوی کئے جارہے ہیں، قصیدہ خوانی کا دور شروع ہو چکا ہے، حالانکہ ذہن میں چند سوالات ہیں، جو راہل کی قائدانہ صلاحیتوں کو مشکوک کرتے ہیں ۔

حفیظ نعمانی

2015-16 ء میں کون سوچ سکتا تھا کہ گجرات یا کسی بھی بی جے پی حکومت والی ریاست میں امت شاہ اور پارٹی کے خلاف کوئی کانوں میں بات بھی کرسکتا ہے۔ پورے ملک پر وزیر اعظم نریندر مودی کا سایہ تھا اور دوسرا چہرہ امت شاہ کا سمجھا جاتا تھا جن کو بی جے پی کے بزرگ لیڈر اور نامور صحافی ارون شوری نے بھی پورا آدمی تسلیم کیا تھا۔ گجرات کے الیکشن کے بارے میں خیال یہ تھا کہ وزیر اعظم تو دہلی میں بیٹھے رہیں گے اور امت شاہ گجرات کے دو تین چکر لگاکر دفتر میں بیٹھ کر اُمیدواروں کی لسٹ بنا دیں گے اور وزیر اعظم کی آخری نظر کے بعد وہ میڈیا کو دے دی جائے گی۔

سورت:20نومبر2017(فکروخبر/ذرائع)گجرات اسمبلی انتخابات کو لے کر بی جے پی کے بعد اب کانگریس کی مشکلات بھی بڑھتی ہوئی نظر آرہی ہیں۔ اتوار کو دیر رات امیدواروں کی پہلی فہرست جاری کرنے بعد سے ہی کانگریس اور ہاردک پٹیل کے حامیوں کے درمیان دراڑ پڑ جانے کی خبریں ہیں ۔ بتایا جارہا ہے ہے کہ ٹکٹوں کی تقسیم کو لے کر پاٹیدار انامت آندولن سمیتی پاس لیڈر ہاردک اور کانگریس کارکنان کے درمیان دیر رات تک سورت میں ہاتھا پائی چلتی رہی ۔

مودی نے اپنے صنعتکار دوست کیلئے ملکی سلامتی سے سمجھوتہ اورخزانے کو ناقابل تلافی نقصان پہنچایا،ترجمان کی پریس کانفرنس 

نئی دہلی۔16نومبر2017(فکروخبر/ذرائع) اپوزیشن جماعت کانگریس نے مودی حکومت پر رافیل جنگی طیارے کے سودے میں تمام قوانین کو بالائے طاق رکھنے کا الزام لگاتے ہوئے کہا ہے کہ وزیر اعظم نریندر مودی نے اپنے صنعتکار دوست کیلئے ملک کی سلامتی سے تو سمجھوتہ کیا اور ساتھ ہی اس سے سرکاری خزانے کو ناقابل تلافی نقصان پہنچے گا اور اس سودے سے گھپلے کی بو آرہی ہے۔

صفحہ 1 کا 5

Urdu-Arabic-Keybaord11

ISLAMIC-MESSAGES