Live Madinah

makkah1

dushwari

تازہ ترین خبر:

مجوزہ قرارداد منظور ہو گئی تو اس سے ایران کے 'بیلسٹک میزائل کی برآمدات روکنے میں مدد ملے گی۔ انٹرویو 

جدہ ۔19فروری2018(فکروخبر /ذرائع) سعودی عرب نے کہا ہے کہ وہ ایران کے بیلسٹک میزائل کے خلاف اقوام متحدہ میں امریکہ اور برطانیہ کی مجوزہ قرارداد کی حمایت کرے گا۔جرمنی کے شہر میونخ میں سکیورٹی کانفرنس کے دوران ایک انٹرویو میں سعودی وزیر خارجہ نے کہا کہ اگر اقوام متحدہ میں ایران کے خلاف مجوزہ قرارداد منظور ہو گئی تو اس سے ایران کے 'بیلسٹک میزائل کی برآمدات روکنے میں مدد ملے گی۔ انٹرویو میں انھوں نے کہا کہ ایران یمن میں حوثی باغیوں، خطے میں 'انتہا پسندی اور جارحیت' اوردہشت گرد گروہوں کی مدد کر رہا ہے۔یاد رہے کہ یمن میں ایران اور سعودی عرب ایک دوسرے کے خلاف پراکسی جنگ لڑ رہے ہیں۔

امریکا اس قیمتی دھات کے 8133.5 ٹن محفوظ ذخائر کے ساتھ پہلے نمبر پر ہے

ریاض۔18فروری 2018(فکروخبر /ذرائع) ورلڈ گولڈ کونسل نے کہا ہے کہ سونے کے محفوظ اثاثے رکھنے والے عرب ممالک میں سعودی عرب سرفہرست ہے۔ورلڈ گولڈ کونسل نے دنیا کے 98 ملکوں میں سونے کے محفوظ اثاثوں کے بارے میں رپورٹ جاری کی ہے جس کے مطابق سعودی عرب سونے کے 322.9 ٹن ذخائر کے ساتھ عرب ملکوں میں سب سے زیادہ سونے کے ذخائر رکھنے والا ملک ہے۔رپورٹ میں بتایا گیا کہ رواں ماہ کے ا?غاز میں دنیا بھر میں سونے کے محفوظ ذخائر بڑھ کر 33 ہزار 790.8 ٹن ہوچکے ہیں جبکہ امریکا اس قیمتی دھات کے 8133.5 ٹن محفوظ ذخائر کے ساتھ پہلے نمبر پر ہے، دوسرے نمبر پر جرمنی، اٹلی تیسرے نمبر پر، چین پانچویں اور روس چھٹے نمبر پر ہے۔

واشنگٹن۔18فروری2018(فکروخبر /ذرائع) بین الاقوامی توانائی ایجنسی آئی اے ای اے نے دعویٰ کیا ہے کہ امریکا خام تیل کی پیداوار میں عالمی لیڈر بن سکتا ہے۔اس سے قبل سوئٹرز لینڈ کے شہر ڈیووس میں سعودی عرب کی وزارت توانائی اور معدنی وسائل کے وزیر خالد الفالح نے زور دیا تھا کہ انٹرنیشنل انرجی ایجنسی کا تیل کی عالمی منڈی سے معتلق پیش گوئی محض قیاس آرائیاں پر مبنی ہیں اور سعودی عرب تیل کی مارکیٹ میں اپنا کردار نہیں کھو رہا۔

جدہ میں معاملات کنٹرول میں ہیں ، خوامخوا بے چینی پھیلانے کی کوشش کی جارہی ہے،ترجمان کی وضاحت

جدہ۔12فروری2018(فکروخبر/ذرائع ) سعودی عرب کے ساحلی شہر جدہ میں زلزلہ کی اطلاعات ہیں تاہم سعودی جیولوجیکل سروے کے آلات میں کسی قسم کے جھٹکے ریکارڈ نہیں ہوئے۔ غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق سعوی جیولیوجیکل سروے بورڈ ترجمان طارق ابا الخیل نے شہریوں اور مقیم غیر ملکیوں کو اطمینان دلایا کہ سوشل میڈیا میں پھیلائی جانے والی خبریں بے بنیاد ہیں۔ جدہ میں معاملات کنٹرول میں ہیں ۔ خوامخوا ہ بے چینی پھیلانے کی کوشش کی جارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ جدہ میں زلزلے کے جھٹکوں کے متعلق اس سے قبل بھی بے پر کی اڑائی جاتی رہی جس کی تردید کی گئی ہے۔ماحولیات اور زلزلوں کے متعلق معلومات فراہم کرنے والے سرکاری ادارے کی رپورٹوں پر یقین رکھا جائے، اس کے علاوہ دیگر تمام ذرائع غیر مصدقہ ہے۔

سمجھوتوں کے تحت حاصل ہونے والی رقم ،جائیداداور کمرشل کمپنیاں قومی خزانے میں آئے ہیں ،شیخ سعود المعجب کا بیان

ریاض۔31جنوری2018(فکروخبر /ذرائع) سعودی عرب کے اٹارنی جنرل شیخ سعود المعجب نے کہا ہے کہ انسداد بدعنوانی مہم میں 437افراد کو گرفتار کیا گیا تھا جن میں سے 381کو سمجھوتے کے بعد رہا کر دیا گیا ہے۔اٹارنی جنرل نے ایک بیان میں کہا ہے کہ بدعنوانی کے خلاف گرفتاریوں سے 106 بلین ڈالر قومی خزانے میں آئے ہیں۔اٹارنی جنرل شیخ سعود المعجب کا کہنا ہے کہ ایک اندازے کے مطابق گرفتار افراد کے ساتھ سمجھوتوں میں 106 بلین ڈالر قومی خزانے میں اثاثہ جات بشمول جائیداد، کمرشل کمپنیوں، سکیورٹیوز، نقدی کی صورت میں آئے ہیں۔بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ بدعنوانی کے الزام میں گرفتار افراد کے کیسز کا ریویو مکمل کر لیا گیا جس کے تحت ان سے مذاکرات اور سمجھوتے ہوئے۔

ریاض۔23جنوری2018(فکروخبر /ذرائع) سعودی پبلک پراسیکیوٹر شیخ سعود المعجب نے واضح کیا ہے کہ بدعنوانی پر زیر حراست لئے جانے والے 90افراد پر لگائے گئے الزامات ختم کردیئے گئے اور انہیں رہا کردیا گیا۔ ملکی میڈیا رپورٹ کے مطابق شیخ سعود المعجب نے اپنے ایک انٹرویو میں انہوں نے زیر حراست افراد کے حقوق کی کسی بھی شکل میں خلاف ورزی کے الزام کو پوری قوت کیساتھ مسترد کردیا۔ انہوں نے کہاکہ تمام ملزمان کو قانونی مشاورت کے اصول کی سہولت حاصل ہے۔بعض کے یہاں وکیل بھی موجود ہیں۔ اکثر لوگوں نے خارجی فریقوں کی ادنی مداخلت کے بغیر رضاکارانہ طور پر تصفیے کا راستہ اختیار کرلیا ہے۔ جو لوگ رہا کئے گئے ہیں ان کی نقل و حرکت پر کسی طرح کی کوئی پابندی نہیں۔

ریاض۔یکم جنوری2018(فکروخبر/ذرائع) سعودی انجمن تحفظ صارفین کے سیکریٹری جنرل ڈاکٹر عبدالرحمن القحطانی نے کہا ہے کہ سعودی عرب میں سالانہ 50 ارب ریال مالیت کی غذائی اشیاء ضائع ہورہی ہیں۔ العربیہ نیوز کے مطابق سعودی انجمن تحفظ صارفین کے سیکرٹری کی کی جانب سے جاری کردہ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ مملکت میں سالانہ 50 ارب ریال مالیت کی غذائی اشیاء ضائع ہورہی ہیں جوکل غذا کا 30 فیصد ہیں۔انھوں نے کہا کہ صارفین نئے حالات سے خود کو ہم آہنگ کریں اور اخراجات کم کریں۔

ریاض۔22دسمبر2017(فکروخبر/ذرائع)اقوام متحدہ میں سعودی سفیر عبداللہ معلمی نے یروشلم کو اسرائیلی دارالحکومت تسلیم کرنے کے امریکی فیصلے کے خلاف جنرل اسمبلی میں قرارداد منظور ہونے کے بعد کہا ہے کہ امریکہ کو ایسا فیصلہ کرنے کا کوئی حق حاصل نہیں ہے۔انھوں نے کہا کہ جنرل اسمبلی نے اس قرارداد پر بڑے پیمانے پر ووٹ ڈال کر امریکہ پر اپنا واضح نکتہ نظر ظاہر کیا ہے۔انھوں نے بی بی سی کو بتایا کہ عالمی برادری نے امریکہ کو پیغام دیا ہے کہ وہ ایسے یکطرفہ فیصلے نہیں کر سکتا۔انھوں نے مزید کہا کہ قرارداد کے حق میں ووٹ ڈالنے والے ممالک کے خلاف امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی دھمکی کہ وہ ان ممالک کی امداد بند کر دیں گے، غلط تھا۔

رہائشی مکانوں کے لیے 21 ارب 30 کروڑ سعودی ریال کے قرضے مختص کیے جائیں گے،شاہی حکمنامہ 

الریاض۔15دسمبر2017(فکروخبر /ذرائع) سعودی عرب کے فرماں روا شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے ایک شاہی فرمان کے تحت نجی شعبے کی امداد کے لیے 19 ارب 20 کروڑ ڈالرز ( 72 ارب سعودی ریال) کی رقم مختص کرنے کی منظوری دے دی ۔سعودی پریس ایجنسی کے مطابق شاہ سلمان نے یہ فیصلہ ولی عہد ،وزیر دفاع اور وزارتی کونسل کے نائب صدر شہزادہ محمد بن سلمان کی جانب سے پیش کردہ سمری کی بنیاد پر کیا ہے۔اس شاہی حکم نامے کے مطابق نجی شعبے کے لیے مختص کردہ رقم میں سے سب سے زیادہ مکانوں کی تعمیر کے لیے آسان شرائط پر قرضوں کی صورت میں دی جائے گی ۔

سعودی عرب روشن خیالی کی جانب رواں دواں
ڈاکٹر محمد عبدالرشید جنید

شام سے روسی فوج کی واپسی ، روسی صدر کی شامی عوام کیلئے خوشخبری یا وارننگ؟ سوال پیدا ہوتا ہے کہ کیا شام کے حالات کنٹرول میں آچکے ہیں اور اپوزیشن جماعتیں شامی صدر بشارالاسد سے کوئی معاہدہ تو نہیں کی جس کی وجہ سے روسی صدر ولادیمیر پوتین نے اپنی فوج کو شام سے بلانے کا فیصلہ کیا ہے۔روس کے وزیر دفاع سرگے لاؤروف کے مطابق روس نے شام سے اپنی فوج کو واپس بلانا شروع کردیا ہے۔شام میں 2011میں شروع ہونے والی خانہ جنگی کے بعد سے اب تک کم و بیش چار لاکھ افراد مارے جاچکے ہیں جن میں معصوم بچے، مردو خواتین اور بوڑھے شامل ہیں۔

صفحہ 1 کا 5