Live Madinah

makkah1

dushwari

مصری عوام کو تفصیلات بتانے کے لیے جلد ایک پریس کانفرنس کا انعقاد بھی کیا جائے گا،پارٹی بیان

قاہرہ:12؍جنوری2018(فکروخبر/ذرائع)مصر میں سابق چیف آف اسٹاف لیفٹننٹ جنرل سامی عنان کی جماعت نے اعلان کیا ہے کہ پارٹی سربراہ سامی عنان کو مارچ میں ہونے والے صدارتی انتخابات کے لیے بطور امیدوار نامزد کیا گیا ہے۔میڈیارپورٹس کے مطابق پارٹی کے بیان میں کہاگیاکہ عنان اپنی نامزدگی اور انتخابات میں حصّہ لینے پر آمادہ ہیں اور اس حوالے سے مصری عوام کو تفصیلات بتانے کے لیے ایک پریس کانفرنس کا انعقاد کیا جائے گا۔

صدارتی انتخابات 26 سے 28 مارچ تک ہوں گے۔ بیرون ملک پولنگ 16، 17 اور 18مار چ کو ہوگی

قاہرہ:09؍جنوری2018(فکروخبر/ذرائع)مصر کے سپریم الیکشن کمیشن نے رواں سال ہونے والے صدارتی انتخابات کا شیڈول جاری کردیا ہے۔العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق الیکشن کمیشن کی طرف سے صدارتی انتخابات کی تاریخ، امیدواروں کی نامزدگی کی شرائط، انتخابات کے پہلے اور دوسرے دور کی تاریخوں، انتخابی مہم کے دوران زیادہ سے زیادہ اخراجات کی حد اور انتخابی نشانات کے حصول کی شرائط جاری کردی ہیں۔

ممبئی:18؍ڈسمبر2017(فکروخبرذرائع)گجرات اور ہماچل پردیش میں بی جے پی کی کامیابی کے بعد ایک مرتبہ پھر ای وی ایم پر سوال کھڑے ہو گئے ہیں۔ کانگریس کے رہنما سنجے نروپم نے کہا کہ گجرات میں جو نتائج آئے ہیں ان میں گجراتی عوام کا کوئی دخل نہیں ہے کیونکہ یہ فیصلہ عوام کا نہیں بلکہ ای وی ایم کا ہے۔انہوں نے کہا کہ جب پورا گجرات بی جے پی کے خلاف تھا، وزیر اعظم کے انتخابی جلسوں میں کرسیاں خالی نظر آتی تھیں تو پھر یہ جیت گجرات کے عوام نے نہیں دلائی بلکہ یہ ای وی ایم نے دلائی ہے۔

نازش ہما قاسمی

دو مرحلوں میں ہونے والے گجرات انتخابات مکمل ہوچکے ہیں؛ پہلے مرحلے میں ۶۸ فیصد اور دوسرے مرحلے میں ۷۰ فیصد ووٹ ڈالے گئے ہیں ووٹ فی صد کا بڑا تناسب کسی بڑی تبدیلی کی جانب اشارہ کرتا ہے ویسے اس الیکشن میں جو طوفان بدتمیزی برپا کیا گیا اس کی مثالیں کم ہی ملتی ہیں، ایک دوسرے پر طعن و تشنیع کی گئ الزام تراشی کی گئ، عزت کی نیلامی کا بازار گرم کیا گیا وہ اوچھی گھٹیا اور نیچ سیاست کی اعلی ترین مثال ہے؛ منی شنکر ایئر کا وزیر اعظم کو نیچ کہنا پھر اس کے جواب میں وزیر اعظم کا سابق وزیر اعظم ڈاکٹر منموہن سنگھ نائب صدر جمہوریہ حامد انصاری وغیرہ کو گجرات الیکشن جیتنے کیلیے پاکستان سے ساز باز کرنے کا الزام لگانا اور اس پر اڑے رہنا ایک گٹھیا اور ناقابل معافی حرکت تھی۔

واشنگٹن:14؍ڈسمبر2017(فکروخبر/ذرائع) امریکی ریاست الاباما کے سینیٹ الیکشن میں 25 سال بعد صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جماعت ری پبلکن پارٹی کے امیدوار کو شکست ہوگئی ہے۔غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابقامریکی ریاست آلاباما میں سینیٹ کے ضمنی الیکشن میں ڈیموکریٹک پارٹی کے امیداور ڈگ جونز نے کامیابی حاصل کر لی ہے۔ صدر ٹرمپ نے جونز کو ان کی کامیابی پر مبارکباد تو دی ہے تاہم ساتھ ہی یہ بھی کہا کہ دوڑ ابھی ختم نہیں ہوئی۔ذرائع ابلاغ کے مطابق اس الیکشن میں تریسٹھ سالہ ڈگ جونز نے اتنی زیادہ برتری حاصل کر لی ہے کہ اب انہیں شکست نہیں دی جا سکتی۔

حفیظ نعمانی

2014ء کا الیکشن ہو یا اس کے بعد ہونے والا اسمبلی کا الیکشن ہو یا بلدیاتی الیکشن ہر الیکشن وکاس اور سب کا ساتھ سب کا وکاس کے نعرہ سے شروع ہوتا ہے اور پھر گلی کوچوں میں ہوتا ہوا وہ اجودھیا اور رام مندر پر آجاتا ہے یا ہندو مسلمانوں کے درمیان دیوار کو اور مضبوط کردیتا ہے۔ پہلا الیکشن جو نریندر مودی صاحب نے وزیر اعظم کے اُمیدوار کی حیثیت سے لڑا تھا اس میں سب سے زیادہ زور ’سب کا ساتھ سب کا وکاس‘، گجرات ماڈل اور کانگریس مکت بھارت پر دیا تھا اور جیسے جیسے الیکشن شباب پر آیا اس میں وہ ساری گندگی مل گئی جو ملک کی جہالت اور فرقہ پرستی کی دین ہے۔

احمد آباد:04؍ڈسمبر2017(فکروخبر/ذرائع)گجرات اسمبلی انتخابات کیلئے کانگریس نے اپنا انتخابی منشور جاری کردیا ہے۔ انتخابی منشور میں پارٹی نے ریاست کے تقریبا سبھی طبقوں کو خوش کرنے کی کوشش کی ہے۔ 100 صفحات پر مشتمل منشور میں جہاں پاٹیداروں کیلئے ریزرویشن اور کسانوں کے قرض معافی کا اعلان کیا گیا ہے ، وہیں کسانوں کیلئے مفت پانی اور بجلی بل کو آدھا کرنے کا بھی وعدہ کیا گیا ہے۔ریاستی کانگریس کے صدر بھرت سنگھ سولنکی نے کانگریس کا انتخابی منشور جاری کرتے ہوئے کہا کہ اس مرتبہ گجرات میں کانگریس پارٹی کا وزیر اعلی بننا تقریبا طے ہے ۔

حفیظ نعمانی

اُترپردیش کا بلدیاتی الیکشن ایسا میچ تھا جس میں صرف ایک ٹیم اس طرح کھیل رہی تھی کہ ٹیم کے کوچ اور صلاح کار بھی ہر قدم پر موجود تھے اور دوسری ٹیمیں ایسے کھیل رہی تھیں کہ اس کے کھلاڑی کو جرسی دے دی گئی تھی اور کہہ دیا تھا کہ اپنے بل بوتہ پر مقابلہ کرو۔ بی جے پی کے پارٹی صدر ،صوبہ کے وزیر اعلیٰ، نائب وزیر اعلیٰ اور ہر وزیر پوری طرح الیکشن لڑرہا تھا وزیر اعلیٰ آدتیہ ناتھ یوگی نے 30 سے زیادہ ریلیاں کیں۔ انہیں یہ الیکشن جیت کر ثابت کرنا تھا کہ انہوں نے آٹھ مہینے میں اتنے کام کئے ہیں کہ شہریوں نے خوش ہوکر ہر جگہ کامیاب کرادیا۔

برلن:21؍نومبر2017(فکروخبر/ذرائع)جرمن چانسلر انگیلا میرکل نے کہا ہے کہ وہ اقلیتی حکومت سازی کی بجائے ملک میں نئے انتخابات کروانے کو ترجیح دیں گی۔ ان کا کہنا تھا کہ وہ نئے انتخابات کے لیے تیار ہیں۔ ان کا یہ بیان مخلوط حکومت سازی کی ناکامی کے بعد سامنے آیا ہے۔ قبل ازیں جرمن صدر فرانک والٹر شٹائن مائر نے سیاسی جماعتوں سے ذمہ دارانہ رویہ اختیار کرنے کی درخواست کی تھی۔ برلن میں شٹائن مائر نے کہا کہ سیاسی جماعتوں کو چاہیے کہ وہ مخلوط حکومت کے قیام کو ممکن بنائیں۔ جرمن صدر نے مزید کہا کہ وہ ممکنہ اتحاد کے لیے جاری مذاکرات میں شریک تمام جماعتوں کے سربراہوں سے خود بھی بات چیت کریں گے۔

نقطہ نظر:ڈاکٹر محمد منظور عالم

حکومت کی متعدد اقسام میں جمہوریت اس وقت سبھی پر فائق ہے ،دنیا کے بیشتر ممالک میں جمہوری نظام رائج ہے ،یہ طرز حکومت انسانی دماغ کی پیداوار ہے اور اس میں بظاہر اقتدار اور حکومت کی باگ دوڑ عوام کے ہاتھوں میں ہوتی ہے ، ان کے پاس کسی کو تخت پر بیٹھانے تو کسی سے چھیننے کا مکمل اختیار ہوتاہے ،متعینہ مدت پر انتخاب کا ہونا عوام کومزید طاقتور بناتاہے اوراس طرح ان کے ہاتھوں میں ہی اسٹیٹ اور ملک کا مستقبل ہوتاہے ،

صفحہ 1 کا 3