Live Madinah

makkah1

dushwari

ترک حکومت کی امریکی صدر کے فیصلہ پرشدید مذمت

انقرہ:07؍ڈسمبر2017(فکروخبر/ذرائع)ترکی کے وزیر خارجہ خارجہ مولود چاوش اولو نے امریکہ کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے القدس کو اسرائیل کے دارالحکومت کے طور پر تسلیم کرنے کے فیصلے کی شدید مذمت کی ہے۔چاوش اولو نے سوشل میڈیا پر بیان دیتے ہوئے کہا ہے کہ " امریکی انتظامیہ کی جانب سے القدس کو اسرائیل کے دارالحکومت کے طور پر تسلیم کیے جانے اور سفارت خانے کو القدس منتقل کرنے سے متعلق غیر ذمہ دارانہ بیان پر اپنے شدید ردِ عمل کا اظہار کرتا ہوں اور اس فیصلے کی شدید مذمت کرتا ہوں

انہوں نے کہا کہ یہ فیصلہ بین الاقوامی قوانین اور اقوام متحدہ کی قرادادوں کی کھلم کھلا خلاف ورزی ہے۔ترکی وزارتِ خارجہ نے امریکی انتظامیہ کے اس فیصلے کو غلط فیصلہ قرار دیتے ہوئے اس پر نظر ثانی کرنے اور بلاسوچے سمجھے اقدامات اتھانے سے گریز کرنے کی اپیل کی ہے۔ترکی صدر کے ترجمان ابراہیم قالن کا کہنا ہے کہ امریکی صدر ٹرمپ کا  القدس  کو اسرائیل کے دارالحکومت کے طور پر تسلیم کرنے کافیصلہ  ترکی کی نظر میں کوئی حیثیت نہیں رکھتا ہے۔انہوں نے  ٹرمپ کے اشتعال انگیز فیصلے  کے بارے میں اپنے ٹوئٹر  اکاونٹ  پر  صدر ٹرمپ کے فیصلہ کو بے معنی اور بے حیثیت قرار دیتے ہوئے کہا کہ ہم امریکی انتظامیہ کے اس فیصلے کو مسترد کرتے ہوئے اس کی شدید مذمت کرتے ہیں۔  پوری دنیا ، بین الاقوامی  قوانین،  اور اقوام متحدہ  کی قراراداوں  کو مسترد  کرنے والے اس فیصلے  کو ہم مسترد کرتے ہیں  اور فلسطینی  عوام  کے شانہ بشانہ  ہونے  کا ایک بار پھر اظہار کرتے ہیں