Live Madinah

makkah1

dushwari

حوثیوں کا یمن کے سابق صدرعلی عبداللہ صالح کے قتل کا دعوی

صنعاء:05؍ڈسمبر2017(فکروخبر/ذرائع)یمن کے سابق صدر علی عبداللہ صالح کو قتل کر دیا گیا۔صالح کی زیر قیادت پارٹی جنرل پیپلز کانگریس پارٹی کی طرف سے صالح کی موت کی تصدیق کر دی گئی ہے۔دعوے کے مطابق انتظامیہ پر قابض حوثیوں نے معزول صدر علی عبداللہ صالح کے گھر کو اڑا دیا لیکن ایران کی نیم سرکاری خبر رساں ایجنسی تسنیم کے مطابق صالح کو معارب فرار ہونے کے دوران حوثیوں کی طرف سے ہلاک کر دیا گیا ہے۔یاد رہے کہ گزشتہ ہفتے تک عبداللہ صالح کے حامی دستے حوثی باغیوں کے شانہ بشانہ ملک کے موجودہ صدر عبدالربو منصور ہادی کے خلاف لڑ رہے تھے،

تاہم دارالحکومت صنعا کی مرکزی مسجد پر کنٹرول کے حوالے سے دونوں فریقوں کے درمیان لڑائی میں شدت آ گئی تھی جس میں گزشتہ ہفتے بدھ کی رات تک 125 سے زیادہ افراد ہلاک اور 238 زخمی ہو چکے تھے۔اسی دوران سنیچر کو علی عبداللہ صالح نے سعودی عرب کی قیادت میں صدر ہادی کی حمایت میں لڑنے والے اتحاد کو پیشکش کی تھی کہ اگر وہ یمن پر بمباری روک دیں اور اس کا محاصرہ ختم کر دیں تو وہ باہمی تعلقات میں ایک نئے دور کے لیے تیار ہیں۔سعودی اتحاد اور مسٹر ہادی کی حکومت نے عبداللہ صالح کے اس بیان کا خیر مقدم کیا تھا لیکن حوثیوں نے الزام لگایا کہ مسٹر صالح اصل میں اس اتحاد کاتختہ الٹ رہے ہیں جس پر انھوں نے کبھی بھروسہ نہیں کیا تھا۔دارالحکومت صنعاء میں حوثیوں اور صالح فورسز کے درمیان جاری جھڑپوں میں تیزی لانے کے لئے فوج کو ہنگامی آپریشن کا حکم دیا گیا ہے۔صدر عبدالربو منصور ہادی نے فوج کو ہنگامی طور پر دارالحکومت صنعاء میں آپریشن کا حکم دیا ہے۔ہادی نے اپنے حکم میں کہا ہے کہ صالح سے منسلک فورسز کے ساتھ مل کر کثیر تعداد میں فرنٹ کھولیں اور مختلف سمتوں سے صنعاء میں داخل ہوں۔اس دوران دارالحکومت صنعاء میں ایران کے سفارت خانے کو مارٹر گولوں کے ساتھ ہدف بنایا گیا۔فوجی ذرائع سے موصول معلومات کے مطابق یمن میں سابق صدر علی عبداللہ صالح کے حامیوں اور حوثیوں کے درمیان صنعاء میں جاری جھڑپوں کے دوران ایران کے سفارت خانے کو مارٹر گالوں سے نشانہ بنایا گیا ہے۔اس بارے میں تاحال کوئی معلومات موجود نہیں ہیں کہ سفارت خانے کو کہاں سے نشانہ بنایا گیا ہے تاہم سفارت خانے کی عمارت سے دھواں اٹھتا دیکھا گیا ہے۔ایمن میں اقوام متحدہ کے انسانی امداد کے نائب کوآرڈینیٹر جیمی میک گولڈ رِک نے دارالحکومت صنعاء میں منتخب حکومت مخالفین کے درمیان جاری جھڑپوں کو ختم کرنے کی اپیل کی ہے۔