Live Madinah

makkah1

dushwari

میانمار کی فوج نے مسلمانوں پر تشددسے خود کو بری الذمہ قراردیدیا

روہنگیا مسلمانوں کو نسل کشی جیسی صورتحال کا سامنا ، فوج کو حالات کی ذمہ داری قبول کرنا ہوگی،برطانوی وزیراعظم

لندن/ینگون۔14نومبر2017(فکروخبر/ذرائع )میانمار کی فوج نے روہنگیا مسلمانوں پر تشدد، قتل اور اجتماعی زیادتی کے واقعات سے خود کو بری الذمہ قراردیدیا ہے ۔اقوام متحدہ کے سینئر عہدیدار نے میانمار کی فوج کو اجتماعی زیادتی اور انسانیت کے خلاف دیگر جرائم کا مرتکب قرار دیا تھا۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق برطانوی وزیراعظم نے کہاکہ روہنگیا مسلمانوں کو نسل کشی جیسی صورتحال کا سامنا ہے ،میانمار کی انتظامیہ اور فوج کو حالات کی ذمہ داری قبول کرنا ہوگی ۔

جنرل مونگ مونگ سوئے رخائن میں عسکریت پسندی کے خلاف نام نہاد آپریشن کا انچارج تھا، میانمار فوج کے منظم جرائم کی تصدیق بنگلادیش میں پناہ گزین کیمپوں کے دورے کے بعد کی گئی ۔میانمار کی فوج کی رپورٹ میں 6 لاکھ مسلمانوں کے ملک چھوڑنے کے ذمہ دار فوجی جنرلوں کے تبادلے کی کوئی وجہ نہیں بتائی گئی ہے ۔امریکی وزیرخارجہ کے دورے کے موقع پر میانمار حکومت کو سخت پیغام دیے جانے کا امکان ہے ۔