Live Madinah

makkah1

dushwari

اسلام کا ادنیٰ سپاہی اور آزادی کا محافظ ہوں: ایردوآن(مزید اہم ترین خبریں)

ترک صدر کی کردوں کی حمایت حاصل کرنے کی کوشش

دیار بکر [ترکی] ۔03مارچ(فکروخبر/ذرائع) ترکی کے صدر رجب طیب ایردوآن نے خود کو اسلام کا سپاہی قرار دیا ہے۔ دوسری جانب انہوں نے کرد آبادی کی حمایت کے حصول کے لیے بھی کوششیں تیز کردی ہیں۔العربیہ کے مطابق گذشتہ روز جنوب مشرقی علاقے دیار بکر ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے صدر ایردوآن نے کہا کہ وہ اسلام کے ایک ادنیٰ درجے کے محافظ اور سپاہی ہیں۔ انہوں نے کردوں پر زور دیا کہ وہ دو ہفتے بعد ہونے والے اس دستوری ریفرنڈم کی حمایت کریں جس کے تحت صدر کو غیرمعمولی اختیارات حاصل ہوجائیں گے۔خیال رہے کہ جولائی 2015ء کو ترکی اور کرد علاحدگی پسندوں کے درمیان جنگ بندی ختم ہونے کے بعد دوبارہ محاذ آرائی شروع ہوگئی تھی۔ چند سال پیشتر صدر ایردوآن ہی کی مساعی سے کرد علاحدگی پسندوں اور حکومت کے درمیان تین عشروں کی خون ریز لڑائی کے بعد سیز فائر معاہدہ طے پایاتھا۔

اقوام متحدہ کے اعدادو شمار کے مطابق کردستان ورکرز پارٹی اور [پی کے کے] اور ترکی سیکیورٹی فورسز کے درمیان لڑائی کے نتیجےنے میں دو ہزار افراد ہلاک اور قریبا نصف ملین نقل مکانی پر مجبور ہوئے تھے۔کرد اکثریتی علاقوں میں  نیشنل پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی کو غیر معمولی حمایت حاصل ہے۔ یہ جماعت کردوں کی حامی سمجھی جاتی ہے۔ ترک صدر نے ڈیموکریٹک پارٹی پر بھی شدید تنقید کرتے ہوئے اسے علاحدگی پسندوں کا سیاسی چہرہ قرار دے رکھا ہے۔ گذشتہ روز دیار بکر میں ریفرنڈم کے حوالے سے منعقدہ ایک جلسے سے خطاب میں بھی صدر ایردوآن نے پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی کو کڑی تنقید کا نشانہ بنایا اور ساتھ ہی کرد آبادی پر ریفرنڈم کی حمایت پر زور دیا۔صدر ایردوآن کا کہنا تھ کہ  پی کے کے کے حامی مسلسل  امن، امن  کی رٹ لگائے ہوئے ہیں۔ میں پوچھتا ہوں کہ کیا امن اسلحہ اٹھانے سے قائم ہوتا ہے۔انہوں نے کہا کہ اسلام اور آزادی کے محافظ ہم ہیں۔ اس موقع پر ان کی پارٹی کے ہزاروں کارکنوں نے قومی پرچم اٹھا کر صدر کی تائید میں نعرے بھی لگائے۔حکمراں جماعت آق کو مشرقی ترکی میں غیرمعمولی مقبولیت حاصل رہی ہے۔ مگر دوسری جانب مبصرین کا کہنا ہے کہ حکومت نے 16 اپریل کو ہونے والے ریفرنڈم میں کامیابی کے لیے کردوں کو دبانے کی پالیسی اپنا رکھی ہے۔ مشرقی ترکی میں کردوں کے پانچ پارلیمانی گروپ ہیں جن کی بیشتر قیادت اور منتخب ارکان پارلیمان پابند سلاسل ہیں۔ حالیہ کریک ڈاؤن کے دوران 12 کرد ارکان پارلیمان اور ہزاروں کرد شہریوں کو علاحدگی پسندوں کی حمایت کے الزام میں حراست میں لیا گیا تھا۔پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی نے علاحدگی پسند گروپ پی کے کےسے لا تعلقی کا اعلان کیا ہے جب کہ امریکا اور یورپی یونین بھی  پی کے کے کو دہشت گرد قرار دے چکے ہیں۔

قابض صہیونی فوج کے فدائی حملے میں تین اسرائیلی فوجی زخمی ،فلسطینی حملہ آور شہید

مقبوضہ بیت المقدس۔03مارچ(فکروخبر/ذرائع)فلسطین کے مقبوضہ بیت المقدس شہر میں قابض صہیونی فوج کے گزشتہ روز ہفتے کی شام ایک مزاحمتی حملے میں تین اسرائیلی فوجی زخمی ہوگئے۔ قابض فوج نے جوابی کارروائی میں حملہ آور کو گولی مار دی جس کے نتیجے میں وہ موقع پر شہید ہوگیا۔اسرائیلی پولیس کی طرف سے جارہ کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ ایک فلسطینی مزحمت کار نے بارڈر فورس کے اہلکاروں پرچاقو سے حملہ کیا جس کے نتیجے میں ایک پولیس اہلکار اور دو فوجی زخمی ہوگئے۔دوسری جانب فلسطینی وزارت صحت کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں بیت المقدس میں شاہراہ الواد پر ایک فلسطینی نوجوان کو شہید کئے جانے کی تصدیق کی گئی ہے۔ فلسطینی میڈیا رپورٹس کے مطابق شہید فلسطینی نوجوان کی شناخت احمد زاھر فتحی غزال کے نام سے کی گئی ہے جس کی عمر 17 سال بتائی جاتی۔ فدائی حملے کے بعد اسرائیلی فوج نے بیت المقدس میں وحشیانہ کریک ڈاؤن شروع کیا ہے جس میں 20 فلسطینیوں کو حراست میں لینے کے بعد نامعلوم مقامات پر منتقل کردیا گیا ہے۔قبل ازیں اسرائیل کے عبرانی ٹی وی 10 اپنی رپورٹ میں بتایا تھاکہ ایک مشتبہ فلسطینی نوجوان کے چاقو سے حملے میں دو اسرائیلی فوجی زخمی ہوگئے ہیں۔ جبکہ پولیس کی خاتون ترجمان لوبا السمری کا کہنا ہے کہ زخمیوں ہونیوالے فوجیوں کی تعداد تین ہے۔

فلسطینی قوم اپنے ہیرو مازن فقہا کا خون معاف نہیں کرے گی،اسماعیل ھنیہ

غزہ۔03مارچ(فکروخبر/ذرائع)اسلامی تحریک مزاحمت حماس کے سیاسی شعبے کے نائب صدر اور سابق وزیراعظم اسماعیل ھنیہ نے کہا ہے کہ فلسطینی قوم اپنے ہیرو مازن فقہا کا خون معاف نہیں کرے گی۔ وقت زیادہ دور نہیں جب کہ فقہا کے قاتلوں کو کیفر کردار تک پہنچایا جائے گا۔ فلسطینی میڈیا رپورٹس کے مطابق اسماعیل ھنیہ نے ان خیالات کا اظہار غزہ کی پٹی میں شہدا کی یادگار کی تنصیب کے موقع پر تقریب سے خطاب میں کیا۔ انہوں نے کہا کہ مازن فقہا کے قاتل سزا سے کسی صورت میں نہیں بچ سکیں گے۔ فلسطینی قوم اور مزاحمتی تنظیمیں جس موقف پر آج کھڑی ہیں مستقبل میں اسی موقف پرہوں گی۔انہوں نے کہا کہ غزہ کی پٹی میں چوبیس گھنٹے کی بنیاد پر سیکیورٹی ہائی الرٹ کی گئی ہے۔ اس کے نتائج جلد سامنے آئیں گے اور شہید حماس کمانڈر مازن فقہا کے قاتلوں کو کیفر کردار تک پہنچایا جائے گا۔اسماعیل ھنیہ نے کہا کہ حماس کے رہنماؤں اور کارکنوں پر قاتلانہ حملے اسی دشمن کی سازش ہیں جس نے غزہ کی پٹی پر معاشی پابندیاں عائد کر رکھی ہیں۔ مگر فلسطینی قوم دشمن کی مسلط کردہ پابندیوں سے خوف زدہ اور کمزور نہیں ہوں گے۔ حماس فلسطینی سیکیورٹی فورسز کے ساتھ دشمن کے خلاف کھلی جنگ میں بھرپور معاونت کرے گی۔حماس رہنمانے کہا کہ مازن فقہا کے خون سے اپنے ہاتھ رنگنے والے مجرم اس زمین پر زندہ نہیں رہ سکیں گے۔خیال رہے کہ حال ہی میں غزہ کی پٹی میں نامعلوم افراد نے قاتلانہ حملے میں حماس کے کمانڈر مازن فقہا کو شہید کردیا تھا۔ حماس نے اس سنگین جرم کا الزام اسرائیل پرعائدکیا ہے۔ غزہ میں سیکیورٹی فورسز نے مازن کے قاتلوں کا سراغ لگانے کیلئے سیکیورٹی ہائی الرٹ کر رکھی ہے۔

قابض صہیونی فوج نے مکانات اورکالج کی تعمیرکیلئے فلسطینی اراضی غصب کر نے کا منصوبہ بنا لیا

سلفیت۔03مارچ(فکروخبر/ذرائع)قابض صہیونی فوج نے فلسطین کے مقبوضہ مغربی کنارے کے شمالی شہر سلفیت میں یہودی آباد کاروں کیلئے گھروں اور ایک کالج کی تعمیر کی آڑ میں دسیوں دونم فلسطینی اراضی غصب کرنے کا منصوبہ تیار کیا ہے۔فلسطینی میڈیا رپورٹس کے مطابق تجزیہ نگار اور یہودی توسیع پسندی کے امور کے ماہر خالد معالی نے بتایا کہ اسرائیلی سول انتظامیہ کے ماتحت سپریم کمیٹی برائے تعمیرو مرمت نے شمالی شہر سلفیت میں الکانا نامی یہودی کالونی میں ایک ٹیکنیکل کالج اورمکانات کی تعمیر کے لیے فلسطینی اراضی پر قبضے کا اعلان کیا ہے۔انہوں نے کہا کہ صہیونی انتظامیہ ایک سوچے سمجھے منصوبے کے تحت فلسطینیوں کی زرعی اراضی کی کھدائی کرکے اسے یہودی آباد کاری اور توسیع پسندی کے مقاصد کے لیے استعمال کررہی ہے۔عالمی ماہر قانون نے کہا کہ صہیونی ریاست غرب اردن کے جس قطعہ اراضی پرقبضے کی منصوبہ بندی کررہی ہے وہ دیوار فاصل کی دوسری جانب ہے۔ اس علاقے میں کسی قسم کی توسیع پسندی کو بین الاقوامی فوج داری عدالت اور جنیوا معاہدوں میں خلاف قانون قرار دیا جا چکا ہے۔

استنبول میں’’یوم الارض‘‘ تقریب ترک عوام میں آگاہی کی منفرد کوشش ہے ،مقررین 

استنبول۔03مارچ(فکروخبر/ذرائع)فلسطین میں 41 ویں یوم الارض کی مناسبت سے ترکی کے شہر استنبول میں بھی ایک منفرد تقریب کا اہتمام کیا گیا۔استنبول بلدیہ اور فلسطینیوں سے اظہاریکجہتی میں سرگرم تنظیم فیدارکے اشتراک سے فلسطینی یوم الارض کی مناسبت سے تقریب ترک عوام میں فلسطینیوں پرصہیونی مظالم کو اجاگر کرنا ہے۔تقریب میں تصویری خاکوں کی مدد سے فلسطینی اراضی پرصہیونیوں کے غاصبانہ قبضے، فلسطینیوں کی جبری گھربدری، وحشیانہ قتل عام، گرفتاریوں، یہودی آباد کاری، غزہ کا محاصرہ، مسجد اقصی اور دیگر مقدسات کی بے حرمتی کو اجاگر کیا گیا ہے۔اس موقع پرترکی کے مشہور موسیقی بینڈ براہم نورالقدس نے اپنے مخصوص انداز میں ہلکی پھلکی موسیقی کے انداز میں فلسطینیوں کے ساتھ یکجہتی کا اظہارکیا۔ اس موقع پر مقررین نے خطاب کرتے ہوئے فلسطینی قوم کے خلاف صہیونی ریاست کے منظم جرائم پر روشنی ڈالی اور کہا کہ صہیونی ریاست ایک منظم پالیسی کے تحت فلسطینیوں کی اراضی کے سرقے میں ملوث ہے۔

صہیونی فوج نے فدائی حملے کی منصوبہ بندی کے الزام میں فلسطینی نوجوان کو گرفتار کرلیا

الخلیل۔03مارچ(فکروخبر/ذرائع)قابض صہیونی فوج نے فلسطین کے مقبوضہ مغربی کنارے کے جنوبی شہر الخلیل میں تلاشی کے دوران ایک فلسطینی شہری کو حراست میں لیا ہے جس کے قبضے سے ایک تیز دھار چاقو برآمد کرنے کا دعوی کیا گیا ہے۔ دوسری جانب فلسطینی نوجوان کے حملے میں رام اللہ میں ایک اسرائیلی فوجی کے زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں۔اسرائیلی میڈیا رپورٹس کے مطابق فوج نے غرب اردن کے جنوبی شہر الخلیل میں مسجد ابراہیمی کے قریب سے ایک مشتبہ فلسطینی نوجوان کو حراست میں لیا ہے۔ اس کے قبضے سے ایک چاقو برآمد کیا گیا ہے۔ فوج کا دعوی ہے کہ گرفتار فلسطینی نوجوان اسرائیلی فوج پرحملے کی منصوبہ بندی کررہا تھا۔گرفتار فلسطینی شہری کی شناخت نہیں کی گئی تاہم صہیونی فوج کا کہنا ہے کہ اسے تفتیش کے لیے ایک حراستی مرکز منتقل کردیا گیا ہے۔اس واقعے کی آڑ میں اسرائیلی فوج نے کریک ڈان شروع کیا اور فلسطینی شہریوں کی 500 دکانیں بند کرادیں۔ اس سے قبل الخلیل شہر کے ایک ہزار فلسطینی دکانداروں سے جبرا ان کی دکانیں بند کرادی گئی ہیں۔ادھر ایک دوسری پیش رفت میں رام اللہ میں فلسطینی نوجوانوں کے پتھرا سے ایک اسرائیلی فوجی زخمی ہوگیا۔اسرائیلی فوجی ریڈیو کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ صہیونی فوجی مغربی رام اللہ میں نعلین کے مقام پر اس وقت زخمی ہوا جب فلسطینی شہری فوج کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کر رہے تھے۔ فلسطینی مظاہرین نے صہیونی فوج کی ایک پارٹی پر سنگ باری کی جس کے نتیجے میں ایک اسرائیلی فوجی زخمی ہوگیا۔ زخمی ہونے والے فوجی اہلکار کو اسپتال منتقل کردیا گیا ہے۔

طلبا کیلئے متاثر کن استاد کا ایوارڈ فلسطینی معلمہ نے اپنے نام کرلیا

کرمہ النابلسی کو یہ ایوارڈ برطانیہ کی مشہور عالم آکسفورڈ یونیورسٹی کی طرف سے دیا گیا ہے

رام اللہ۔03مارچ(فکروخبر/ذرائع)فلسطین کی ایک معلمہ کرمہ النابلسی نے برطانیہ میں طلبا کو سب سے زیادہ متاثر کرنے والے استاد کا ایوارڈ اپنے نام کرلیا ہے۔ فلسطینی میڈیا رپورٹس کے مطابق کرمہ النابلسی کو یہ ایوارڈ برطانیہ کی مشہور عالم آکسفورڈ یونیورسٹی کی طرف سے دیا گیا ہے۔آکسفورڈ یونیورسٹی کی ویب سائیٹ پر پوسٹ کی گئی ایک خبر میں بتایا گیا ہے کہ برطانیہ کی مختلف جامعات اور آکسفورڈ یونیورسٹی میں سب سے متاثر کن ٹیچر کیلئے سروے کیا گیا تو حیران کن طور پر ایک فلسطینی خاتون پروفیسر کرمہ النابلس کو سب سے متاثر کن استانی قرار دیا گیا ہے۔کرمہ النابلسی نے یونیورسٹی کے میگزین سے بات کرتے ہوئے کہا کہ میں جانتی ہوں کہ طلبا کا اس طرح کے کسی سروے میں شرکت کرنا حقیقی نتائج تک پہنچنے کی کوشش ہے مگر یہ انعام صرف میری کوششوں کا نہیں بلکہ ہم سب کی مشترکہ مساعی کا ثمر ہے۔متاثر کن ٹیچر ایوارڈ صرف میرے لیے اعزاز کی بات نہیں بلکہ یہ آکسفورڈ یونیورسٹی کے تمام طلبا طالبات،دوسری جامعات کے طلبا اور اساتذہ کی مساعی کی کوششوں کا نتیجہ ہے۔ اس ایوارڈ کا حق دار قرار دینے پرمیں سب کا شکریہ ادا کرتی ہوں۔خیال رہے کہ النابلسی آکسفورڈ یونیورسٹی میں تعلقات عامہ کے مضمون کی استانی ہیں۔ اس کے علاوہ سماجی تحریکوں اور سیاسیاست کے طلبا کے لییوار اینڈ پیس فلاسفی ان کا موضوع ہے۔متاثر کن ٹیچر ایوارڈ جیتنے والی فلسطینی معلمہ برطانیہ کی جامعات اور کالجوں میں اساتذہ یونین کی بھی رکن ہیں۔ اس کے علاوہ وہ سیاہ فام اور نسلی و اقلیتی انجمنوں سے بھی وابستہ ہیں۔

اسرائیل کا ایشیائی ممالک سے 20کروڑ ڈالر کی دوربینیں فروخت کرنے کا معاہدہ

ڈیل اس بات کا ثبوت ہے ایشیائی گاہک اسرائیلی مصنوعات پر بھرپور اعتبار کرتے ہیں،کمپنی ڈائریکٹر

مقبوضہ بیت المقدس۔03مارچ(فکروخبر/ذرائع)اسرائیلی صہیونی فضائی صنعت نے ایشیائی ممالک میں پھیلے اپنے مرکزی گاہکوں کو 20 کروڑ ڈالر کی دوربینیں فروخت کرنے کا اعلان کیا ہے۔عبرانیمیڈیا رپورٹس کے مطابق اسرائیل کی فضائی مصنوعات تیار کرنے والی الٹا کمپنی نے دوربینیں فروخت کرنے کا نیا معاہدہ کیا ہے۔ اس معاہدے کے تحت کمپنی ایشائی ممالک میں اپنے مرکزی گاہک کو دوربیںیں فروخت کرے گا۔کمپنی کے ڈائریکٹر یوسی فائز نے کہا کہ یہ ڈیل اس بات کا ثبوت ہے کہ ایشیائی گاہک اسرائیلی مصنوعات، ان کے معیار اور کارکردگی پر بھرپور اعتبار کرتے ہیں۔ یہ انتہائی اہمیت کی حامل ڈیل ہے اور ہم اس پر بجا طور پرفخر کرتے ہیں۔

غرب اردن میں مکانات کی تعمیر صہیونی ریاست کا مکروہ چہرہہے ، فوری پابندی لگائی جائے ،تنظیم انسانی حقوق

مقبوضہ بیت المقدس۔03مارچ(فکروخبر/ذرائع)فلسطین میں یہودی آباد کاری کے خلاف سرگرم ایک اسرائیلی انسانی حقوق گروپ السلام الآن نے عمونا نامی یہودی کالونی کے متبادل ایک نئی کالونی بسانے کی منظوری کی شدید مذمت کی ہے۔ انسانی حقوق گروپ کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیاہے کہ عدالت کے حکم پرایک ماہ قبل رام اللہ کے قریب سے ایک یہودی کالونی خالی کرنے کے بجائے اس کے متبادل ایک اور یہودی کالونی قائم کرنا مقبوضہ مغربی کنارے کے حصے بخرے کرنے کے مترادف ہے۔فلسطینی میڈیا رپورٹس کے مطابق اسرائیلی انسانی حقوق گروپ نے غرب اردن میں مکانات کی تعمیر کو صہیونی ریاست کا مکروہ چہرہ قرار دیتے ہوئے اس پر پابندی لگانے کا مطالبہ کیا ہے۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ عمونا نامی یہودی کالونی کے متبادل ایک نئی کالونی غرب اردن کے شمالی شہر نابلس میں ایک ایسے مقام پر بنانے کی منظوری دی گئی ہے پورے غرب اردن کو کئی ٹکروں میں تقسیم کرکے رکھ دے گی۔بیان میں کہا گیا ہے کہ نابلس میں متبادل کالونی کیلئے جس جگہ کا انتخاب عمل میں لایا گیا ہے وہ تزویراتی اعتبار سے نہایت اہمیت کا حامل مقام ہے۔ نابلس میں جہاں اب کالونی کی تعمیر کی منظوری دی گئی ہے وہاں پر کالونی کے قیام کا فیصلہ 1992 میں کیا گیا تھا۔ مگر بین الاقوامی دباؤ کے بعد اس مقام پر یہودی کالونی تعمیر نہیں کی گئی تھی۔ اس سے قبل کوئی اسرائیلی حکومت اس علاقے میں کالونی کے قیام کی جرات نہیں کرسکی مگر موجودہ صہیونی حکومت نے ہٹ دھرمی کا مظاہرہ کرتے ہوئے یہاں پر یہودی آباد کاروں کیلئے مکانات بنانے کی منظوری دی ہے۔یہودی آباد کاری کی مخالف اسرائیلی تنظیم کا کہنا ہے کہ صہیونی ریاست نسل پرستانہ پالیسی پرعمل پیرا ہے۔ فلسطینی علاقوں میں غیرقانونی یہودی آباد کار بھی نسل پرستی کی بدترین شکل ہے۔خیال رہے کہ عمونا نامی یہودی کالونی چند2001 میں تعمیر کی گئی تھی۔ یہ کالونیوں فلسطینیوں کی نجی اراضی پر تعمیر کئے جانے باعث اسرائیل سپریم کورٹ نے اسے خالی کرنے کا حکم دیا تھا۔ صہیونی حکومت نے ابھی تک یہ کالونی مکمل طور پرخالی بھی نہیں کی اور اس کی جگہ ایک نئی بستی بسانے کی منظوری دی گئی ہے۔حال ہی میں اسرائیلی حکومت نے غرب اردن کے نابلس شہر میں977 دونم رقبے پر نئی یہودی کالونی کے قیام کی منظوری دی گئی تھی۔

مصر میں پولیس کے مرکز پر بم دھماکہ ایک اہلکار ہلاک 15زخمی 

قاہرہ۔ 03مارچ(فکروخبر/ذرائع) مصر کے نیل ڈیلٹا شہر ٹانٹا میں ایک پولیس تربیتی مرکز کے قریب کل ہوئے بم دھماکے میں ایک پولیس اہلکار ہلاک اور 12 پولیس اہلکاروں سمیت 15 افراد زخمی ہو گئے ہیں۔'الجزیرہ' نے حکام کے حوالے سے بتایا کہ ٹانٹا میں ٹریننگ سینٹر کے قریب موٹر سائیکل میں دھماکہ خیز مواد کو چھپا کے رکھا گیا تھا۔

اسرائیلی پولیس نے چاقو مارنے والے فلسطینی کو گولی مار دی

مقبوضہ بیت المقدس ۔ 03مارچ(فکروخبر/ذرائع) اسرائیلی پولیس نے پرانے مقبوضہ بیت المقدس میں تین لوگوں کو چاقو مارنے والے ایک فلسطینی حملہ آور کو گولی مار دی جس سے اس کی موت ہو گئی۔اسرائیلی پولیس کی خاتون ترجمان لوبا سامری نے کہا ہے پولیس کے ہاتھوں ہلاک ہونے والے شخص نے دو یہودیوں پر چاقو کے وار کیے اور فرار ہوگیا۔پھر کچھ ہی دیر کے بعد اس نے ایک سرحدی محافظ کو چاقو گھونپ دیا، تاہم آداد ذرائع نے ابتک اسرائیلی موقف کی تائید نہیں کی۔ 

جنیوا 5 مذاکرات کا اختتام

دمشق ۔03مارچ(فکروخبر/ذرائع)جنیوا میں شامی وفد کے سربراہ نے کہا ہے کہ جنیوا پانچ مذاکرات کا اختتام ایسی حالت میں ہوا ہے کہ شامی وفد کے سوالات اور تجاویز کا کوئی جواب نہیں دیا گیا ہے۔شام کی سرکاری خبر رساں ایجنسی سانا کی رپورٹ کے مطابق حکومت شام کے وفد کے سربراہ بشار جعفری نے جنیوا پانچ مذاکرات کے اختتام پر کہا ہے کہ یہ بات باعث حیرت ہے کہ مقابل فریق دہشت گردی کے خلاف مہم اور بحران شام کے سیاسی حل کے لئے فکر مند نہیں ۔ بشار جعفری نے کہا کہ شام کے مسلح مخالفین صرف ایک بات کے خواہاں ہیں اور وہ یہ کہ شام کا اقتدار ان کے سپرد کر دیا جائے۔ انھوں نے کہا کہ شام کے مسلح مخالفین صرف بیرونی آلہ کار ہیں اور ان کے وفد نے اس بات کی نشاندہی کردی ہے کہ اسے دہشت گردی کی حمایت کرنے کے علاوہ اور کوئی حکم نہیں ملا ہے۔

عراقی وزیر اعظم کی ملک میں ایران کے کردار کی ستائش

بغداد۔03مارچ(فکروخبر/ذرائع) عراق کے وزیراعظم نے اپنے ملک میں ایران کے مثبت کردار کو سراہا ہے۔عراق کے وزیر اعظم حیدر العبادی نے اپنے ملک میں ایران کے کردار کی ستائش کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایران کے ساتھ عراق کی طویل مشترکہ سرحدیں قائم ہیں اور اسی بنا پر بغداد نے ہمیشہ تہران کے ساتھ بھرپور تعاون پر تاکید کی ہے۔انھوں نے الحرہ ٹی وی سے گفتگو میں یہ بھی کہا کہ عراق و ایران کے، مختلف شعبوں منجملہ اقتصادی و تجارتی شعبوں میں تعلقات فروغ پا رہے ہیں اور عراق کے مقدس شہروں میں زیارتوں کے لئے آنے والے ایرانی شہریوں کی وجہ سے عراق کے بعض صوبوں سے بے روزگاری کا خاتمہ ہوا ہے۔

اگلا ہدف الحدیدہ کو واپس لینا ہے، عرب اتحاد

عدن ۔ 03مارچ(فکروخبر/ذرائع) یمن کی حکومت نے ملک میں اقوام متحدہ کے انسانی امور کی کوآرڈی نیٹر کے اْس منصوبے کا خیر مقدم کیا ہے جس کے تحت یمن کے تمام صوبوں میں بھوک سے دوچار 1.7 کروڑ افراد کو انسانی امداد پہنچانے کے لیے الحدیدہ کی بندرگاہ کے بدلے دیگر متبادل بندرگاہوں کو استعمال کرنے کا پلان تیار کیا گیا ہے۔آئینی حکومت نے واضح کیا ہے کہ عدن اور المکلا کی دو بندرگاہیں اور سعودی عرب کے ساتھ تمام بری گزر گاہوں پر امداد وصول کرنے اور اسے باغیوں کی لوٹ مار سے بچانے کو یقینی بنانے کے لیے تمام تر تیاریاں کر لی گئیں ہیں۔علاوہ ازیں یمنی حکومت اور عرب اتحاد المخا کی بندرگاہ کو بھی دوبارہ سے بحال کرنے پر کام کر رہے ہیں تاکہ وہاں بھی امداد وصول کی جا سکے۔ایسا نظر آ رہا ہے کہ الحدیدہ کا علاقہ عرب اتحادی افواج کا اگلا ہدف ہوگا جب کہ متاثرین کے لیے انسانی امداد کے داخلے پر بھرپور زور دیا جا رہا ہے۔

عراق دہشت گردی مخالف جنگ کے حتمی مراحل میں ہے، انتونیو گوٹیریس

بغداد ۔03مارچ(فکروخبر/ذرائع) اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل انتونیو گوٹیریس نے اپنے عراق کے دورے کو تاریخی قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ میزبان ملک کی داعش کے خلاف جنگ آخری مراحل میں ہے۔انھوں نے کہا کہ ہم عراقی حکومت کی اداروں کی تعمیر اور عراقیوں کو درکار خدمات مہیا کرنے کے لیے کام کررہے ہیں۔انھوں نے یہ باتیں بغداد میں عراقی وزیر خارجہ ابراہیم الجعفری سے ملاقات کے بعد ایک بیان میں کہیں۔ انھوں نے ابراہیم الجعفری اور دوسرے عراقی عہدہ داروں کے ساتھ داعش کے خلاف شمالی شہر موصل میں جاری جنگ کے حوالے سے تفصیلی تبادلہ خیال کیا ۔

مریض کے پیٹ سے 11 برس بعد "بلب" نکال لیا گیا

ریاض ۔03مارچ(فکروخبر/ذرائع) سعودی عرب کے شہر الاحساء میں ڈاکٹروں نے ایک غیر ملکی کے پیٹ سے برقی "بلب" نکالا ہے ، یہ بلب 11 برس سے مذکورہ 21 سالہ نوجوان کے پیٹ میں موجود تھا۔ مریض کا آپریشن شہزادہ سعود بن جلوی ہسپتال میں ہوا۔ایشیائی شہری کو جب ہسپتال کے ہنگامی امداد کے شعبے میں لایا گیا تو وہ متلی اور بخار میں مبتلا تھا۔ فوری اور مکمل معائنے کے بعد ڈاکٹروں کو معلوم ہوا کہ اس کے پیٹ میں کوئی عجیب سی چیز موجود ہے۔مریض کو فوری طور پر آپریشن تھیٹر میں لے جایا گیا تاکہ اس عجیب سی چیز کو( جو ایک بلب تھا) پیٹ سے نکالا جا سکے۔ پیٹ کی صفائی کے بعد آنتوں کو خصوصی آلے کے ذریعے بند کر دیا گیا تاکہ مریض کو مزید کسی قسم کی شکایت نہ ہو۔مریض کے بیان کے مطابق اس نے یہ بلب 10 برس کی عمر میں نگل لیا تھا۔یہ آپریشن تقریبا سوا گھنٹے تک جاری رہا جس میں نو افراد شریک رہے۔

داعش اور طالبان ایک دوسرے کے مد مقابل

کابل ۔03مارچ(فکروخبر/ذرائع) ایرانی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق دہشتگرد گروہ داعش اور طالبان ایک دوسرے کے مد مقابل آ گئے ہیں۔افغانستان کے صوبیغور کے علاقے غلمین میں داعش سے وابستہ دہشتگردوں نے 4 طالبان کو اغوا کرلیا ہے۔غور کے صوبائی کونسل کے رہنما عبدالبصیر قادری کا کہنا ہے کہ غلمین کے بزرگ داعش کے ساتھ اغوا شدہ افراد کی رہائی کے لئے مذاکرات کر رہے ہیں۔غورکے گورنر کے ترجمان نے تصدیق کی ہے کہ اغوا شدہ افراد کا تعلق طالبان سے ہے اورطالبان دہشتگردوں کو داعش سے منسلک قاری رحمت اللہ گروپ نے اغوا کیا ہے۔واضح رہے کہ افغان طالبان نے افغانستان میں داعشی دہشت گردوں سے مقابلہ کرنے کا اعلان کررکھا ہے۔یاد رہے کہ اس سے قبل افغانستان کے چارسدہ نامی علاقے میں داعش اور طالبان کے درمیان جھڑپیں ہوئی تھیں جن کی وجہ سے دونوں دہشتگرد گروہوں کا کافی جانی نقصان ہوا تھا۔