Live Madinah

makkah1

dushwari

اسرائیلی فوج کی راکٹ کے جواب میں غزہ پر فضائی بمباری(مزید اہم ترین خبریں )

مقبوضہ بیت المقدس ۔ 25جنوری(فکروخبر/ذرائع ) اسرائیلی فوج نے سوموار کو علی الصباح غزہ کی پٹی میں حماس کے ایک تربیتی کیمپ پر فضائی حملہ کیا ہے۔اسرائیلی فوج نے ایک بیان میں دعویٰ کیا ہے کہ یہ بمباری فلسطینیوں کے راکٹ حملے کے جواب میں کی گئی ہے۔اسرائیلی فوج نے سوموار کو ٹویٹر پر اپنے سرکاری اکاؤنٹ پر اطلاع دی ہے کہ ''اتوار کی شب غزہ کی پٹی سے ایک راکٹ فائر کیا گیا تھا اور یہ اسرائیل کے جنوبی علاقے کی جانب گرا تھا لیکن اس سے کوئی جانی یا مالی نقصان نہیں ہوا تھا''۔اسرائیلی فوج کے مطابق 2014ء میں جنگ کے خاتمے کے بعد سے غزہ کی پٹی سے اسرائیلی علاقے کی جانب کم سے کم تیس راکٹ فائر کیے جاچکے ہیں۔

صہیونی فوج نے غزہ کی حکمراں اسلامی تحریک مزاحمت (حماس) پر ان تمام راکٹ حملوں کا الزام عاید کیا ہے حالانکہ ان میں سے بہت سے راکٹ فلسطین کی دوسری مزاحمتی تنظیموں نے چلائے تھے۔داعش سے روابط رکھنے والے بعض جنگجو گروپوں نے حالیہ مہینوں کے دوران اسرائیل پر متعدد راکٹ حملوں کی ذمے داری قبول کرنے کا دعویٰ کیا تھا لیکن اسرائیل ان تمام حملوں کا حماس ہی کو ذمے دار قرار دیتا چلا آرہا ہے۔


عراق میں ایران کی حمایت یافتہ ملیشیا کے حوالے سے بیان پر سعودی سفیر طلب 

وزارت خارجہ نے سعودی سفیر کے بیان کو سفارتی پروٹوکول کی خلاف ورزی اور غلط معلومات پر مبنی قرار دیدیا 

بغداد۔25جنوری(فکروخبر/ذرائع ) عراقی وزارت خارجہ نے کہا ہے کہ عراق میں ایران کی حمایت یافتہ ملیشیا کے حوالے سے سعودی سفیر کے بیان پر انہیں طلب کرلیا گیا۔عراق میں تعینات سعودی سفیر ثامر ال سبحان نے ال سماریہ ٹی وی کو انٹرویو کے دوران کہا تھا کہ عراق میں فرقہ وارانہ کشیدگی سے بچنے کے لیے پیرا ملٹری گروپوں کے اتحاد ’حاشد ال شابی‘ ملیشیا کو داعش کے خلاف جنگ کا معاملہ عراقی آرمی اور دیگر سیکیورٹی فورسز پر چھوڑ دینا چاہیے۔ثامر ال سبحان کا کہنا تھا کہ حاشد ال شابی نامی فورسز کی سنی عرب اور کرد علاقوں میں ضرورت نہیں، کیونکہ وہ عراقی معاشرے کے بیٹوں کو قابل قبول نہیں۔عراقی وزارت خارجہ نے سعودی سفیر کے اس بیان کو سفارتی پروٹوکول کی خلاف ورزی اور غلط معلومات پر مبنی قرار دیا۔وزارت خارجہ کی جانب سے پیرا ملٹری گروپوں کے اتحادحاشد ال شابی‘ملیشیا کی حمایت میں جاری بیان میں کہا گیا کہ یہ ملیشیا دہشت گردی کے خلاف لڑتے ہوئے ملکی خود مختاری کا دفاع کر رہی ہے اورمسلح افواج کے کمانڈر اِن چیف کے احکامات کے تحت کام کر رہی ہے۔عراقی قانون سازوں کی جانب سے بھی حال ہی میں عراق میں تعینات ہونے والے سعودی سفیر کے بیان کو اندرونی معاملات میں مداخلت قرار دیتے ہوئے سخت تنقید کا نشانہ بنایا گیا ٗکچھ نے ثامر ال سبحان کو ہٹانے کا بھی مطالبہ کیا۔دوسری جانب پارلیمان میں موجود سنی عرب بلاک اور عراقی فورسز کے اتحادیوں نے سعودی سفیر کے بیان کو انتہائی فطری قرار دیتے ہوئے ان کے خلاف سیاسی مہم کو تنقید کا نشانہ بنایا۔


عالمی پابندیاں ہٹتے ہی ایرانی صدر حسن روحانی تجارتی معاہدوں کے لیے یورپ کے دورے پر روانہ

تہران۔25جنوری(فکروخبر/ذرائع)عالمی پابندیاں ہٹتے ہی ایرانی صدر حسن روحانی تجارتی معاہدوں کے لیے یورپ کے دورے پر روانہ ،پہلے مرحلے میں اٹلی پہنچ رہے ہیں جہاں وہ اہم تجارتی معاہدوں پر دستخط کریں گے۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق حس روحانی کا یہ دورہ جوہری معاہدے کے بعد ایران پر سے عائد بین الاقوامی پابندیوں کے ہٹنے کے ایک ہفتے بعد ہو رہا ہے۔اطلاعات کے مطابق صدر حسن روحانی اطالوی کمپنیوں سے تقریبا 18 ارب امریکی ڈالر کا معاہدہ کریں گے۔جبکہ اپنے یورپی سفر کے دوسرے مرحلے میں وہ فرانس میں طیاروں کے متعلق ایک اہم معاہدہ کرنے والے ہیں۔صدر روحانی تاجروں اور حکومت کے وزرا پر مشتمل ایک 120 رکنی وفد کی سربراہی میں روم اور پیرس کے پانچ دنوں کے دورے پر جا رہے ہیں ۔اٹلی میں وہ اپنے ہم منصب سرجی میٹریلا اور وزیر اعظم میٹیو رینزی کے ساتھ بات چیت کریں گے۔خبر رساں ادارے روئٹرز کے مطابق ایران کے ایک سینیئر اہلکار نے کہا کہ یہ انتہائی اہم دورہ ہے۔ یہ صفحہ پلٹنے اور مختلف شعبوں میں ہمارے ملک کے ساتھ تعاون کا دروازہ کھولنے کا وقت ہے۔صدر روحانی دوسرے مرحلے کے دوران پیرس میں یورپی کمپنی ایئربس کے ساتھ 114 طیارے کی خرید کے معاہدے کو حتمی شکل دیں گے۔اس کے علاوہ تہران امریکی کمپنی بوئنگ سے بھی طیارے خریدنے کا ارادہ رکھتا ہے۔سنہ 1979 میں اسلامی انقلاب کے بعد سے ایران مغربی ممالک سے طیارے خریدنے کے لیے جدوجہد کرتا نظر آیا ہے۔ ایران میں مسافر پرانے طیاروں کی وجہ سے گھنٹو ایئرپورٹ پر انتظار کرتے ہیں۔ عام ایرانیوں کے لیے نئے طیارے جوہری معاہدے کے ضمن میں ہونے والی پیش رفت کی فوری علامت کے طور پر سامنے آئیں گے۔ ہفتہ کو ایران اور چین نے 17 معاہدوں پر دستخط کیے جن میں توانائی سمیت تجارت کے فروغ کے لیے 60 کھرب کے معاہدے ہوئے۔خیال رہے کہ گذشتہ ہفتے ایران کی جانب سے جوہری پروگرام کو ختم کرنے کے معاہدے کے بعد بین الاقوامی پابندیاں ہٹائی گئی ہیں۔


شام ٗ لتاکیہ کا آخری قصبہ بھی باغیوں کے ہاتھ سے نکل گیا 

دمشق ۔25جنوری(فکروخبر/ذرائع )شام کی سرکاری فوج نے شمال مغربی ساحلی صوبے لتاکیہ میں باغیوں کے زیرِ قبضہ آخری قصبے کو بھی واگزار کرالیا ہے۔حکام کے مطابق سرکاری فوج نے ربیعہ نامی قصبے کا کنٹرول سنبھال لیا ہے جو ترکی کی سرحد سے صرف 10 کلومیٹر دور واقع ہے۔حکام کے مطابق ربیعہ باغیوں کے زیر قبضہ صوبے لتاکیہ کے ان ایک درجن علاقوں میں سے ایک ہے جن کا قبضہ سرکاری فوج نے حالیہ چند روز کے دوران واگزار کرایا ۔میڈیا رپورٹ کے مطابق ربیعہ 2012ء سے شام کے حکومت مخالف باغیوں کے قبضے میں تھا جس پر اس عرصے کے دوران مختلف اوقات میں مختلف باغی گروہ قابض رہے۔شام کے سرکاری ٹی وی نے ربیعہ پر سرکاری فوج کے قبضے کا دعویٰ کیا جس کی شام میں پرتشدد واقعات کی معلومات اکٹھی کرنے والی برطانوی تنظیم سیرین آبزرویٹری فار ہیومن رائٹس نے بھی تصدیق کی ۔آبزرویٹری کے مطابق سرکاری فوج نے گزشتہ دو روز سے قصبے کا تین جانب سے محاصرہ کیا ہوا تھا اور اس کے نواح میں واقع 20 دیہات پہلے ہی سرکاری فوج کے قبضے میں چلے گئے تھے۔آبزرویٹری نے دعویٰ کیا کہ ربیعہ پر قبضہ کرنے والے شامی فوجی دستوں کو روسی طیاروں کی فضائی مدد اور روسی فوجی افسران کی تکنیکی معاونت بھی حاصل تھی۔آبزرویٹری کے مطابق لتاکیہ میں باغیوں کے زیرِ قبضہ تقریباً تمام اہم قصبات پر کنٹرول کے بعد اب شامی فوج کا اگلا ہدف وہ راہداریاں ہیں جن کے ذریعے ترکی کی سرحد سے شام کے شمالی علاقوں میں سرگرم باغیوں کو رسد پہنچائی جاتی ہے۔لتاکیہ میں شامی باغیوں کو سرکاری فوج کے سامنے ایسے وقت میں پسپائی اختیار کرنا پڑ ی ہے جب آئندہ ہفتے شامی تنازع کے فریقین کید رمیان جنیوا میں اقوامِ متحدہ کی کوششوں سے براہِ راست مذاکرات ہونے والے ہیں۔شام کیلئے اقوامِ متحدہ کے خصوصی ایلچی اسٹیفن ڈی مستورا نے کہاکہ ان کی خواہش ہے کہ مذکرات اپنے طے شدہ نظام الاوقات کے تحت پیر کو ہی شروع ہوں لیکن مذاکرات کے شرکا کی فہرست پر اتفاق نہ ہونے کے باعث مذاکرات التوا کا شکار ہوسکتے ہیں۔


نائیجیریا میں’’ہیمرج وائرس ‘‘ سے 76 افراد ہلاک،چوہے مار زہر کی فروخت پر پابندی عائد 

ابوجاء ۔ 25 جنوری (فکروخبر/ذرائع) نائیجیریا میں ہیمرج وائرس سے لاحق ہونے والے لسا بخار کے باعث 76 افراد کی ہلاکت کے بعد چوہے مار زہر کی فروخت پر پابندی عائد کردی گئی۔ذرائع ابلاغ کے مطابق شمالی ریاست کانو کے دارالحکومت کانو میں ہیمرج وائرس بڑی مقدار میں پایا گیا ہے جہاں کیڑے مار زہروں کی بڑے پیمانے پر فروخت ہوتی ہے۔شہر کے کیمیکل کے تاجروں کے صدر شیہو ادریس بیچی نے صحافیوں کو بتایا کہ اس مہینے کے اوائل میں جب سے اس وباء کا علم ہوا ہے ، کیمیکل ادویات کی فروخت میں چار گنا اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے۔انھوں نے کہا کہ لوگ کیمیائی ادویات کی خرید میں تیزی دکھارہے ہیں جس کے نتیجے تاجروں کا کاروبار میں بھی تیزی آئی ہے۔


پاکستان کو مذاکرات کی حمایت نہ کرنے والے گروپوں کے خلاف کارروائی کرنی چاہیے ٗافغان صدر 

لندن۔25جنوری(فکروخبر/ذرائع ) افغان صدر اشرف غنی نے کہا ہے کہ پاکستان کو مذاکرات کی حمایت نہ کرنے والے گروپوں کے خلاف کارروائی کرنی چاہیے ٗ اپریل تک طالبان کے ساتھ مذاکرات شروع نہ ہوئے تو تصادم میں تیزی آئیگی ٗداعش کی جڑیں افغانستان میں نہیں ٗداعش کے دہشت گرد غلط لوگوں کے مدمقابل آئے ہیں ٗافغان عوام بدلہ لینے کیلئے تیار ہیں ٗ دولت اسلامیہ نامی تنظیم کو دفن کردینگے ۔برطانوی نشریاتی ادارے کو دیئے گئے انٹرویو میں اشرف غنی نے کہا کہ ہمارے پاس وقت بہت کم ہےٗ آئندہ دو ماہ ہمارے لئے بہت اہم ہیں ٗاگر اپریل تک طالبان کے ساتھ مذاکرات شروع نہ ہوئے تو تصادم میں تیزی آئے گی جس کے اثرات پورے خطے پر پڑیں گے کیونکہ یہ مسائل، ایک دوسرے سے جڑے ہوئے ہیں اور ان کا حل صرف ایک ملک میں طاقت کا استعمال نہیں ہے۔ عالمی برادری کو یہ سمجھنا ہوگا کہ افغانستان میں جاری لڑائی دنیا بھر میں ہونے والی بڑی جنگ کا ایک حصہ ہے جو پاکستان کو بھی اپنی لپیٹ میں لیے ہوئے ہے۔ پاکستان کو ان گروپوں کے خلاف کارروائی کرنی چاہیے جو مذاکرات کی حمایت نہیں کرتے۔افغان صدر نے کہاکہ داعش کی جڑیں افغانستان میں نہیں ہیں، ان کی درندگی کی وجہ سے افغان عوام ان سے دور ہو گئی ہے، داعش کے دہشت گرد غلط لوگوں کے مدمقابل آئے ہیں،افغان عوام ان سے بدلہ لینے کے لیے تیار ہیں۔ وہ وعدہ کرتے ہیں کہ خود کو دولت اسلامیہ کہلانے والی اس شدت پسند تنظیم کو دفن کردیں گے۔انھوں نے کہا کہ میری زیادہ تر کوششیں علاقائی ہم آہنگی پیدا کرنے پر ہیں وہ خطہ جہاں ماضی میں دشمنیاں رہی ہیں۔


امریکہ میں جیل سے بھاگنے والے تین خطر ناک مجرموں کی تلاش کا کام شروع کر دیا گیا

واشنگٹن ۔25جنوری(فکروخبر/ذرائع )امریکہ میں جیل سے بھاگنے والے تین خطر ناک مجرموں کی تلاش کا کام شروع کر دیا گیا ہے۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق شمالی کیلی فورنیا کی اورنج کاوئنٹی میں واقع جیل سے فرار ہونے والے تین خطر ناک مجرموں جو ناتھن ٹائیو،بیک ڈونگ،اور حسین تیری کی تلاش کا کام شروع کر دیا گیا ٗحکام کے مطابق تینوں مجرموں میں ایک قتل کا مجرم بھی شامل ہے۔ حکام کے مطابق مزکورہ مجرمان بستروں کی چادروں کی مدد سے سیکورٹی حکام کو چکمہ د ے کر فرار ہوئے تھے۔دوسری جانب اورنج کاؤنٹی کی میئر سینڈرا ہیچر کا کہنا ہے کہ خطرناک مجرمان کی تلاش کا کام تیزی سے جاری ہے اور انھیں جلد دوبارہ گرفتار کرلیا جائے گا۔


بم کی دھمکی کے باعث ترک مسافر طیارے کو ہیوسٹن سے آئر لینڈ کے ایئرپورٹ کی جانب موڑ دیا گیا 

ٹیکساس۔25جنوری(فکروخبر/ذرائع ) بم کی دھمکی کے باعث ترک مسافر طیارے کو ہیوسٹن (ٹیکساس) سے آئر لینڈ کے ایئرپورٹ (شینن) کی جانب موڑ دیا گیا، سی این این کے مطابق عہدیداروں کے مطابق دھمکی تحریری طور پر ملی تھی استنبول کی جانب جانے والا بوئنگ 777 بحفاظت آئر لینڈ میں لینڈ کر گیا، طیارے میں 209 مسافر سوار تھے جنہیں ایئرپورٹ کے محفوظ مقام پر منتقل کر کے طیارے کی تلاشی لی گئی۔

امریکی ریاست الاسکا کے جنوب میں 6.8 شدت کا زلزلے محسوس کیا گیا

مٹانوسکا کے 4900 صارفین زلزلے کے باعث بجلی سے محروم ہوگئے ٗ حکام 

واشنگٹن۔25جنوری(فکروخبر/ذرائع )امریکی ریاست الاسکا کے جنوب میں 6.8 شدت کا زلزلے محسوس کیا گیا۔امریکی جیولوجیکل سروے کے مطابق یہ زلزلے 1030 جی ایم ٹی پر امریکی علاقے اولڈ الیمنا میں آیا تھا ٗابتدائی طور پر زلزلے کی شدت 7.1 بتائی گئی تھی تاہم بعد میں اسے تبدیل کیا گیا ٗ اس کی زیر زمین گہرائی 127 کلو میٹر تھی۔یو ایس جی ایس کے مطابق زلزلے میں جانی یا مالی نقصان کے کم امکانات ہیں اور اردگرد کے شہروں میں معمولی جھٹکے محسوس کیے جاسکتے ہیں۔مقامی ٹیلی ویژن اسٹیشن کے مطابق مٹانوسکا کے 4900 صارفین زلزلے کے باعث بجلی سے محروم ہوگئے ہیں۔علاقے کی پاور کمپنی کے مطابق نقصان کا جائزہ لیکر بجلی بحال کرنے کی کوشش شروع کر دی گئی ادھر ہوائی کے سونامی سینٹر نے کہا ہے کہ زلزلے کے باعث سونامی کا کوئی خطرہ نہیں۔سینٹر کے مطابق زلزلے کی گہرائی کے باعث اس سے سونامی جنم نہیں لے سکتاہے۔


امریکی ایوان نمائندگان میں برفانی طوفان کے باعث ووٹنگ کا عمل منسوخ

واشنگٹن ۔ 25 جنوری (فکروخبر/ذرائع) امریکی ایوان نمائندگان نے برفانی طوفان کے باعث رواں ہفتے قانون سازی پرہونے والی ووٹنگ کو منسوخ کر دیا۔ذرائع ابلاغ کے مطابق یہ بات اکثریتی لیڈر کیون میک کارتھی کے دفتر سے جاری ہونے والے ایک بیان میں کہی گئی ہے۔ہاؤس کی جانب سے آئندہ ووٹنگ یکم فروری کو متوقع ہے۔کانگریس کا اجلاس پہلے ہی ایک ہفتہ تاخیر کا شکار ہے کیونکہ ڈیموکریٹس کا بالٹیمور میں سالانہ اجلاس(کل) بدھ کو شروع ہو رہا ہے۔ واضح رہے کہ امریکا میں برفانی طوفان کے باعث کم ازکم 24افراد ہلاک، لاکھوں افراد متاثر اور ہزاروں پروازیں منسوخ ہو چکی ہیں۔