dushwari

نیو یا رک۔11اکتوبر2017(فکروخبر/ذرائع ) یمن کے لیے اقوام متحدہ کے خصوصی ایلچی اسماعیل ولد الشیخ احمد نے کہا ہے کہ ان کی تمام تر کوششوں کا مقصد یمن میں متحارب فریقین کو بات چیت کے لیے مذاکرات کی میز پر لانے پر مرکوز ہیں۔ حوثی باغیوں کی جانب سے خلیجی ممالک پر راکٹ حملے کرنا انتہائی خطرناک اقدام ہے۔ اس طرح کی کارروائیوں کے نتیجے میں خطے میں کشیدگی اور عدم استحکام میں مزید اضافہ ہوسکتا ہے۔سلامتی کونسل کے اجلاس سے خطاب میں یو این مندوب کا کہنا تھا کہ یمن کے کئی شہر مسلسل تشدد کی لپیٹ میں ہیں۔

سعودی عرب اپنی علاقائی سالمیت کے تحفظ کے لیے بھی کوشاں ہے،کرنل حمید کی گفتگو

سعودی عرب:10؍اکتوبر2017(فکر وخبر /ذرائع)سعودی عرب کی قیادت میں عرب اتحاد کی یمن میں صدر عبد ربہ منصور ہادی کی قانونی حکومت کی بحالی کے لیے مارچ 2015ء میں فوجی مداخلت کے بعد سے سرحدی علاقوں میں جھڑپیں جاری ہیں۔ حوثی باغی سعودی سکیورٹی فورسز کی جانب گولہ باری کرتے رہتے ہیں اور وہ سرحدی علاقے میں دراندازی کی ناکام کوشش کرتے رہتے ہیں۔سرحدی علاقے میں تعینات سعودی سکیورٹی فورسز نے گولہ باری سے اڑنے والے گردوغبار سے بچنے کے لیے اپنی چوکیوں میں گیس ماسک بھی بڑی تعداد میں رکھے ہوئے ہیں۔

دبئی ۔09اکتوبر2017(فکروخبر/ذرائع )سعودی عرب میں کنگ سلمان ہیومنیٹیرین ایڈ اینڈ ریلیف سینٹر نے اعلان کیا ہے کہ مملکت نے اپریل 2015 سے اب تک یمن کو 8.2 ارب ڈالر بطور امداد پیش کیے ہیں۔شاہ سلمان مرکز کے ترجمان نے پیر کے روز دارالحکومت ریاض میں ایک پریس کانفرنس میں بتایا کہ "ہم نے یمن میں بچوں کے لیے 80 سے زیادہ منصوبوں کے لیے سپورٹ پیش کی"۔مرکز کی جانب سے یہ باور کرایا گیا ہے کہ امداد کا کافی سارا حصہ حوثیوں کے زیر قبضہ علاقوں میں موجود یمنی شہریوں تک پہنچایا گیا۔