dushwari

ریاض ۔۔یکم فروری 2017(فکروخبر/ذرائع )سعودی عرب کے نائب ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان سے جاپان کے سابق چیف آف اسٹاف اور سینئر ایڈمرل کاٹسوٹوشی کوانو نے دارالحکومت الریاض میں ملاقات کی ہے۔انھوں نے ملاقات کے دوران میں دونوں ملکوں میں تعلقات اور خاص طور پر دونوں مسلح افواج کے درمیان تعاون بڑھانے کے حوالے سے امور پر تبادلہ خیال کیا ہے۔

رياض :05 دسمبر:2016 (فکروخبر/ذرائع)خادم حرمین شریفین شاہ سلمان بن عبدالعزيز کو متحدہ عرب امارات کے سب سے بڑے شہری اعزاز "آرڈر آف زاید" سے نوازا گیا۔ سعودی فرماں روا کو یہ اعزاز ابوظبی کے ولی عہد شیخ محمد بن زاید آل نہیان کی جانب سے دیا گیا۔ہفتے کی شب ابوظبی کے "قصرِ مشرف" میں خادم حرمین شریفین کے اعزاز میں عشایہ دیا گیا جو ان دنوں متحدہ عرب امارات کے دورے پر ہیں۔اس موقع پر شاہ سلمان کے استقبال کے لیے متحدہ عرب امارات کے نائب صدر اور دبئی کے حکمراں شیخ محمد بن راشد آل مکتوم اور ابوظبی کے ولی عہد شیخ محمد بن زاید آل نہیان موجود تھے۔عشایے سے قبل خادم حرمین شریفین نے متحدہ عرب امارات کی سپریم کونسل کے ارکان سے مصافحہ کیا۔

الریاض ۔30 نومبر :2016(فکروخبر/ذرائع)سعودی عرب کے مختلف علاقوں میں شدید بارشوں اور سیلاب کے نتیجے میں سات افراد جان سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں،متعدد زخمی ہوگئے ہیں اور بیسیوں سیلاب میں گِھر کررہ گئے ہیں۔اطلاعات کے مطابق تین سعودی شہری بیشہ میں شدید بارشوں کے نتیجے میں جاں بحق ہوئے ہیں۔ دو افراد بھا میں مارے گئے ہیں اور دو تارک وطن القنفذہ شہر طوفان برق وباراں کے دوران بجلی گرنے سے جاں بحق ہوئے ہیں۔سعودی عرب کے مختلف علاقوں میں طوفانی بارشوں کے نتیجے میں بیسیوں مکان تباہ ہوگئے ہیں یا سیلابی ریلوں میں بہ گئے ہیں۔ سڑکیں زیر آب آگئی ہیں اور کئی گاڑیاں الٹ گئی ہیں۔ملک کے مختلف شہروں میں نکاسی آب کا نظام بھی درہم برہم ہو کررہ گیا ہے۔

ریاض۔24نومبر(فکروخبر/ذرائع)سعودی عرب میں مرحوم شاہ عبداللہ کے قتل کی منصوبہ بندی کرنے والے افراد کا مقدمہ شروع ہو گیا ۔ مشتبہ ملزمان کا تعلق دہشت گرد تنظیم القاعدہ سے بتایا گیا ہے۔سعودی میڈیا کے مطابق مقدمے کی کارروائی شروع ہونے پر استغاثہ نے عدالت کو بتایا کہ مبینہ افراد اپنی سرگرمیوں کی تفصیلات انتہا پسند عسکری گروپ القاعدہ کے سربراہ کو تواتر سے فراہم کرتے رہے ہیں۔ سکیورٹی حکام نے مرحوم شاہ عبداللہ بن عبدالعزیز کے قتل کی سازش کو ناکام بناتے ہوئے چار مبینہ حملہ آوروں کو حراست میں لے لیا تھاتاہم یہ نہیں بتایاگیا کہ قتل کرنے کی منصوبہ بندی کس دور میں کی گئی تھی اور حملہ آور اپنے منصوبے پر کب عمل کرنے کی کوشش میں تھے۔

ریاض ۔05نومبر(فکروخبر/ذرائع )مسجد حرام کے امام وخطیب [امام کعبہ] الشیخ ڈاکٹر خالد الغامدی نے یمن کے ایران نواز حوثی باغیوں کو مقدس مقامات پرحملوں کی بناء پر یہودیوں کے مشابہ قرار دیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ جس طرح فلسطین میں قابض یہودی مسجد اقصیٰ کی آئے روز بے حرمتی کرتےاور مقدس مقامات کی توڑُپھوڑ کرکے اسلام دشمنی کا مظاہرہ کرتے ہیں، اسی طرح یمن کےحوثی مکہ معظمہ پر میزائل حملے اور دہشت گردی کی کارروائیاں کرکے اسلام دشمنی کا ثبوت دے رہے ہیں۔ اسلام سے بغض، نفرت اور دشمنی میں حوثی باغی یہودیوں ہی کی مانند ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ جس طرح اللہ تعالیٰ نے یہودیوں کی چالوں اور ریشہ دوانیوں کو ناکام ونامراد کیا ہے،

ریاض ۔یکم نومبر (فکروخبر/ذرائع )سعودی عرب کی ایک فوج داری عدالت نے عسیر کے علاقے کی جامع مسجد کے امام وخطیب اور سرکردہ عالم دین کو ایک فنکار کو کافر کہنے اور ان کے خلاف نازیبا زبان استعمال کرنے پر ڈیڑھ ماہ قید کا حکم دیا ہے۔العربیہ  کے مطابق عسیر کے علاقے کے سرکردہ مذہبی رہ نما نے حال ہی میں ایک بیان میں سعودی فن کار ناصر القصبی کے خلاف کافر اور دیوث  جیسے نازیبا الفاظ استعمال کیے تھے جس پر القصبی نے عدالت سے رجوع کیا تھا۔ عدالت نے فوری کارروائی کرتے ہوئے ملزم کو طلب کیا اور اسے 45 دن تک جیل میں قید رکھنے کے ساتھ ملازمت سے برطرف کرنے کا حکم دیا ہے۔

الریاض ۔30اکتوبر(فکروخبر/ذرائع )امام کعبہ اور حرمین شریفین کی نگراں کمیٹی کے چیئرمین الشیخ عبدالرحمان السدیس نے کہا ہے کہ یمن کے حوثی باغیوں نے میزائل سے صرف مکہ معظمہ کو نشانہ بنانے کا سنگین جرم نہیں کیا کہ مکہ مکرمہ پرحملہ کرکے ڈیڑھ ارب مسلمانوں پر حملہ کیا گیا ہے۔مکہ معظمہ میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے الشیخ عبدالرحمان السدیس نے کہا کہ ایرانی حمایت یافتہ یمنی شیعہ باغیوں نے مکہ پر میزائل حملہ کرکے وہاں پر موجود مقدس مقامات کو نشانہ بنانے اور ڈیڑھ ارب مسلمانوں کے جذبات کو مشتعل کرنے کی مذموم کوشش کی ہے۔خیال رہے کہ دو روز قبل یمن کے حوثی باغیوں نے الصعدہ کے مقام سے مکہ مکرمہ کی سمت میں ایک بیلسٹک میزائل داغا تھا تاہم سعودی عرب کے میزائل شکن نظام نے باغیوں کے میزائل کو فضاء ہی میں تباہ کردیا تھا۔

الریاض ۔26اکتوبر(فکروخبر/ذرائع ) سعودی عرب کے فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز سے شامی حزب اختلاف کے اعلیٰ مذاکراتی کمیشن کے رابطہ کار ریاض حجاب نے الیمامہ محل میں ملاقات کی ہے اور ان سے شام کی تازہ صورت حال پر تبادلہ خیال کیا ہے۔شاہ سلمان نے ان سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سعودی عرب اپنے شامی بھائیوں کے ساتھ کھڑا ہے۔انھوں نے شام میں جاری تنازعے کے جنیوا اول سمجھوتے کے مطابق سیاسی حل کے لیے سعودی مملکت کی جانب سے حمایت کا اعادہ کیا ہے۔

الریاض ۔21اکتوبر(فکروخبر/ذرائع )اردو کا ایک مشہور مقولہ ہے: انصاف وہ جو سب کو ہوتا ہوا نظر آئے۔دور جدید ہو یا قدیم، بیشتر ممالک شاہی یا حکمراں خاندانوں سے تعلق رکھنے والے چشم وچراغ سنگین جرائم پر سزاؤں سے بچتے چلے آرہے ہیں۔معمولی غلطیوں یا نا انصافیوں کا تو کہنا ہی کیا۔ سعودی عرب میں بھی بادشاہت ہے اور شاہی خاندان کے کسی فرد کے ظلم کے خلاف لوگ عدالت سے رجوع کرسکتے ہیں۔ملزم کا تعلق کسی بھی خاندان سے ہو،سب سے ایک سا سلوک ہوتا ہے۔اس کی حالیہ منفرد مثال منگل کے روز ایک سعودی شہزادے ترکی الکبیر کا قصاص میں سر قلم کیا جانا ہے۔وہ شاہی خاندان کا دوسرا فرد ہے جس کا قصاص میں سر قلم کیا گیا ہے۔قبل ازیں ستر کے عشرے میں سعودی فرمانروا شاہ فیصل بن عبدالعزیز کو شہید کرنے والے ان کے سگے بھتیجے کو تہ تیغ کیا گیا تھا۔

الریاض ۔ 20 اکتوبر (فکروخبر/ذرائع)سعودی عرب کے دارالحکومت الریاض میں ایک خصوصی فوجداری عدالت نے داعش کی مدح سرائی میں شاعری کرنے اور نظمیں لکھنے والے شخص کو چھے سال قید کی سزا سنائی ہے اور اس کے بیرون ملک جانے پر پابندی عاید کر دی ہے۔اس سعودی شہری پر داعش کی حمایت میں تکفیری نظریہ اختیار کرنے ،جنگ زدہ علاقوں میں اس انتہا پسند گروپ کے ساتھ مل کر لڑنے کی منصوبہ بندی ایسے الزامات میں فرد جرم عاید کی گئی تھی۔اس پر داعش میں شمولیت کے لیے انتہا پسندوں سے روابط رکھنے اور امن عامہ میں خلل ڈالنے کا بھی الزام تھا۔اس سعودی نے سوشل میڈیا پر مختلف اکاؤنٹس بنا رکھے تھے۔ اس کا مقصد داعش کے صفحات تک زیادہ سے زیادہ رسائی حاصل کرنا تھا۔وہ جنگ زدہ علاقوں میں جانے کے لیے اس گروپ کے ساتھ ان ہی اکاؤنٹس کے ذریعے برقی مراسلت کیا کرتا تھا۔

صفحہ 1 کا 11