dushwari

ہفتہ, 09 دسمبر 2017 09:48

القدس

الشیخ عبدالعزیز مصطفی کامل

دیندار یہودیوں کو قدس میں آباد کرنے کی پالیسی ایک دینی ترتیب کے مطابق ہورہی ہے ، جسکا خاکہ متشدد مذہبی یہودیوں ، حاخاموں ، کاھنوی اور مذہبی علوم کے طلباء و اساتذہ نے تیار کیا ہے اور اسکو نافذ کرنے کی ذمہ داری ، سیاسی اور عسکری لوگوں کی ہے گذشتہ سالوں میں مقدس شہر قدس میں یہودی نو آبادیاں بڑی تعداد میں ، بہت تیزی سے بسائی گئیں۔ نتین یا ہونے اپنی حکومت کے دوران ، شریک پارٹیوں سے کہا تھا کہ میں اس سلسلہ میں بہت آگے تک جانے کے لئے تیار ہو ں ، وہ یہ کہ قدس کو تورات کی وصیت کے مطابق یہودیوں سے آباد کرنا ہے ظاہر ہے کہ اسکی مراد مشرقی قدس ہے کیونکہ مغربی قدس تو فلک بوس عمارتوں سے بھرا ہوا ہے ۔

ہم مشرقی بیت المقدس کو فلسطینی اراضی کا حصہ سمجھتے ہیں، امریکی صدر کے اعلان سے امن کی کوئی خدمت نہیں ہوئی 

لندن:08؍ڈسمبر 2017(فکروخبر/ذرائع)برطانیہ کی وزیراعظم تھریسا مے نے مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیل کا دارالحکومت قرار دینے سے متعلق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا فیصلہ مسترد کردیا ہے۔مرکزاطلاعات فلسطین کے مطابق اپنے ایک بیان میں وزیراعظم تھریسا مے نے کہا کہ انجام کار القدس کو اسرائیل اور فلسطینی ریاست کا مشترکہ دارالحکومت ہونا چاہیے۔ القدس کے بارے میں کوئی فیصلہ عالمی قراردادوں سے ماورا نہیں ہونا چاہیے۔ ہم مشرقی بیت المقدس کو فلسطینی اراضی کا حصہ سمجھتے ہیں اوراس کے بارے میں کوئی بھی اقدام فلسطین اور اسرائیل کے درمیان تنازع کے حل میں کھلم کھلا رکاوٹ قرار دیتے ہیں۔

دوحہ:07؍ڈسمبر2017(فکروخبر/ذرائع):قطرنے امریکی صدر کی جانب سے سفارتخانے کی منتقلی کے اعلان کو فلسطین میں قیام امن کی کوششوں کے لئے موت کا پروانہ قرار دے دیا ہے، امریکی صدر کے اس اقدام کی وجہ سے خطے میں افراتفری اور خطرناک صورت حال پیدا ہوگی۔ٹرمپ نے مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیل کا دارلحکومت تسلیم کر کے مسلمانوں کے خلاف طبلِ جنگ بجا دیا,الجزیرہ ٹی وی کے مطابق قطر کے وزیر خارجہ شیخ محمد بن عبدا لرحمان الثانی نے کہا ہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے بیت المقدس کو اسرائیل کا دارالحکومت قرار دینے کا اعلان ان لوگوں کے لئے ڈوب مرنے کا مقام ہے جو خطے میں قیام امن کے خواہش مند ہیں۔

گذشتہ روز یہودی شرپسندوں نے مذہبی رسومات کی ادائیگی کی آڑ میں مقدس مقام کی بے حرمتی کا ارتکاب کیا تھا

مقبوضہ بیت المقدس:06؍اکتوبر 2017(فکروخبر/ذرائع)یہودیوں کے مذہبی تہوار کے موقع پر یہودی شرپسندوں کی قبلہ اول پر یلغار کے بعد بیت المقدس بالخصوص حرم قدسی میں حالات ایک بار پھر کشیدہ ہوگئے ہیں۔ گذشتہ روز یہودی شرپسندوں کی بڑی تعداد نے مسجد اقصی میں گھس کر نام نہاد مذہبی رسومات کی ادائیگی کی آڑ میں مقدس مقام کی بے حرمتی کی کوشش کی۔فلسطینی میڈیا رپورٹس کے مطابق جمعرات کو علی الصباح ہی سے اسرائیلی فوج نے مسجد اقصی کی طرف آنے والے تمام داخلی راستے سیل کردیے تھے۔

مقبوضہ بیت المقدس:12؍ستمبر 2017(فکروخبر /ذرائع)فلسطین کے مقبوضہ بیت المقدس میں مسجد اقصی میں یہودی آباد کاروں کے دھاوے جاری ہیں۔ گذشتہ روز36 یہودی آباد کاراسرائیلی فوج اور پولیس کی فول پروف سیکیورٹی میں مسجد اقصی میں داخل ہوئے اور قبلہ اول میں گھس کر نام نہاد مذہبی رسومات کی ادائیگی کی آڑ میں مقدس مقام کی بے حرمتی کی۔ فلسطینی میڈیا رپورٹس کے مطابق اسرائیلی فوج نے مسجد الاقصی میں گزشتہ روز اسرائیلی پولیس کی فول پروف سیکیورٹی میں 36 یہودی اشرار نے قبلہ اول کی بے حرمتی کا ارتکاب کیا۔عینی شاہدین کے مطابق یہودی آباد کاروں کی بڑی تعداد مراکشی دروازے کے راستے مسجد اقصی میں داخل ہوئی۔ اس موقع پر اسرائیلی فوج اور پولیس کی بھاری نفری تعینات کی گئی تھی۔

مقبوضہ بیت المقدس :08؍ستمبر2017(فکروخبر /ذرائع)اسرائیل القدس کو فلسطینی وجود سے خالی کرنے کی راہ پر گامزن،بین الاقوامی القدس فاونڈیشن نے اپنی ایک رپورٹ میں بتایا ہے کہ صہیونی ریاست نے بیت المقدس کے فلسطینی باشندوں پر نئی قدغنیں عا ئدکی ہیں۔ ان نئی پابندیوں کا مقصد مقامی فلسطینی آبادی پرعرصہ حیات تنگ کرتے ہوئے انہیں علاقہ چھوڑنے پر مجبور کرنا ہے۔

بیت المقدس:30؍جولائی2017(فکروخبر/ذرائع) مسجد اقصی ٰ کے اطراف اسرائیلی سیکورٹی اور جارحیت کا مشاہدہ ہو رہا ہے تو اسرائیلی پولیس نے غزہ کی سرحدوں اور دریائے اردن کے مغربی کنارے پر دو فلسطینی نوجوانوں کو ہلاک کر دیا ہے۔اسرائیلی فوج نے غزہ کی پٹی پر احتجاجی مظاہرے کرنے والے فلسطینیوں پر اصلی گولیوں سے فائر کھول دیا، جس سے ایک 16 سالہ فلسطینی نوجوان اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھا۔