dushwari

فلسطینی کالونی مسمار کرنے کی خفیہ اسرائیلی سازش بے نقاب

یروشلم :15؍نومبر2017(فکروخبر/ذرائع) اسرائیلی ذرائع ابلاغ نے مقبوضہ بیت المقدس میں کفر عقب کے مقام پر قائم ایک فلسطینی کالونی میں موجود فلسطینیوں کے درجنوں مکانات کو خفیہ طریقے سے مسمار کرنے کی اسکیم تیار کی ہے۔اطلاعات کے مطابق صہیونی ریاست نے بیت المقدس میں آبادیاتی توازن تبدیل کرنے کے منصوبے کےتحت حارۃ کے مقام پر واقع سیکڑوں مکانات مسمار کرنے اور ہزاروں فلسطینیوں کوبے گھر کرنے کا پلان تیار کیا ہے۔خیال رہے کہ کفر عقب میں اسرائیلی حکومت کی طرف سے فلسطینیوں کے مکانات کی مسماریوں کے نتیجے میں بڑی تعداد میں فلسطینیوں نے حارہ کے مقام پر مکانات تعمیر کیے ہیں۔

صہیونی ریاست اب ان فلسطینیوں کو حارۃ کالونی سے بھی نکال باہر کرنے کا منصوبہ تیار کیا ہے۔ ان فلسطینیوں کے مکانات کی مسماری اور فلسطینیوں کی جبری ھجرت کی تیاری کی جار ہی ہے۔عبرانی زبان میں نشریات پیش کرنےوالے ٹی وی چینل ریشت کان کی رپورٹ کے مطابق کفر عقب میں حارہ کےمقام پرفلسطینیوں کے مکانات کی مسماری کی نگرانی کا عمل بیت المقدس کے اسرائیلی میئر نیر برکات کو سپرد کیا جائے گا۔ انہوں نے حال ہی میں دیوار فاصل سے باہر واقع کئی چھ ٹاور مسمار کردیے تھے۔صہیونی ریاست حارہ کے مقام پر نہ صرف فلسطینیوں کے مکانات مسمار کرنے کی تیاری کررہی ہے بلکہ وہاں پر واقع مسجد کو بھی شہید کیا جاسکتا ہے۔