dushwari

تازہ ترین خبر:

سر زمین ٹپو سلطان شہید ؒ میں شاہ ملت مولانا سید انظر شاہ قاسمی کا پرجوش استقبال

علماء کرام امت کی صحیح رہنمائی فرمائیں: شاہ ملت مولانا سید انظر شاہ قاسمی

میسور 10 جنوری2018(فکروخبر /محمد فرقان) نبی ﷺ کے وارث ان علماء کو کہا جاتا جو انکے نقش قدم پر چلتے ہیں، جن کو نبی اکرم ﷺکی ہر چیز وراثت میں ملتی ہے اور وارث صرف امامت کرنے سے، اذان دینے سے، درس دینے سے نہیں بن جاتا، انکے راستہ پر چلنے والے انکے وارثیں کو باطل کا مقابلہ کرنا پڑتا ہے، گالیاں بھی سننی پڑتی ہے، جیل بھی جانا پڑتا ہے، الزامات کا سامنا بھی کرنا پڑتا ہے۔ ان خیالات کا اظہار مسجد قباء، ادیگری، سر زمین ٹپو سلطان شہید رحمۃ اللہ علیہ میسور میں منعقد علماء کرام کے اجلاس میں شیر کرناٹک شاہ ملت حضرت مولانا سید انظر شاہ قاسمی مدظلہ نے کیا۔

شاہ ملت نے فرمایا امت کو حالات سے آگاہ کرنا اور انکو صحیح راستہ دکھانا علماء کی ذمہ داری ہے جس کا حق چند علماء کو چھوڑ کر کوئی نہیں ادا کررہا ہے۔آج ہم نے یہ سمجھا کہ ہمارے فرضہ صرف ممبر و محراب کی حفاظت کرنا ہے۔آج ہمارے ملک میں مسلمانوں پر کیا کچھ نہیں ہورہا، ہر طرف دشمن طاقتیں اسلام اور مسلمانوں کو نشانہ بنا رہی ہیں۔مولانا نے علماء کرام کو مخاطب کرتے ہوئے فرمایا کہ اگر ہم نے پہلے ہی طلاق، پردہ، شریعت کو امت کے سامنے بیان کیا ہوتا تو آج یہ دن دیکھنے کو نہ ملتے۔ہم نہ اسلام کو صرف نماز، روزہ، زکوۃ اور حج و عمرہ تک محدود کردیا ہے۔ مولانا نے سوال کھڑا کرتے ہوئے کہا کہ کیا آج دشمنان اسلام کا پردہ فاش کرنا ہماری ذمہ داری نہیں ہے؟ کیا مسلمانوں کے قتل پر خاموشی اختیار کرلینی چاہئے؟ کیا شریعت کا مذاق اڑانے دیا جانا چاہئے؟ کیا میرا نبی ان حالات میں خاموش رہتا؟ مولانا نے فرمایا کہ ابھی بھی وقت ہے کہ ہم اپنی امت کو حالات سے آگاہ کرائیں. اگر اس راستے میں آزمائش اور امتحان کا سامنا بھی کرنا پڑے تو اسکے لئے بھی تیار رہیں، تبھی ہم نبی کے سچے وارثین و جانشین کہلانے کے لائق رہیں گے۔
مولانا سید انظر شاہ قاسمی نے فرمایا کہ آج امت مسلمہ احساس کمتری کا شکار ہوکر بزدل بن چکی ہے، کل جس مسلمان سے باطل طاقتیں ڈرا کرتی تھی آج وہ مسلمان خود اسے ڈر رہا ہے۔ مولانا نے فرمایا کہ دو سال قبل یعنی جیل جانے سے پہلے جو نازک حالات ہندوستان کے تھے اسے زیادہ حالات آج خراب ہیں۔ اگر آج بھی امت کی صحیح رہبری نہیں ہوئی تو حالات اور خراب ہوسکتے ہیں۔قابل ذکر ہیکہ شاہ ملت مولانا سید انظر شاہ قاسمی آپنی رہائی کے بعد پہلی مرتبہ سر زمین ٹپو سلطان شہید رح شہر میسور تشریف لائے تھے۔مولانا کی آمد پر انکا استقبال پھولوں کی بارش سے کیا گیا۔ شاہ ملت زندہ باد، مولانا انظر شاہ قاسمی زندہ باد کے فلک شگاف نعرے لگائے گئے اور اللہ اکبر کی صدائیں بھی بلند کی گئی۔ اس موقع پر شاہ ملت نے زم زم ہوٹل کا افتتاح بھی کیا۔اجلاس میں کثیر تعداد میں علماء و حفاظ نے شرکت کی۔ اجلاس کی نظامت جمعیۃ علماء میسور کے جنرل سکریٹری حافظ ارشد احمد نے کی نیز استقبالیہ کلمات بھی انہوں نے ہی پیش کی۔ اجلاس کا اختتام شاہ ملت کے دعاؤں سے ہوا۔

Urdu-Arabic-Keybaord11

ISLAMIC-MESSAGES