dushwari

ائمہ کرام کا ایک وفد آج دہلی کے وزیر اعلی جناب اروند کیجریوال سے ملاقات

کر وزیر اعلی نے فوراً کاروائی کرتے ہوئے ڈو زنل کمشنر کو حکم دیا کہ کل فوری طور پر اماموں کی دو ماہ کی تنخواہ دی جائے۔

نئی دہلی ۔8؍نومبر2017(فکروخبر/ذرائع) ائمہ کرام کا ایک وفد آج دہلی کے وزیر اعلی جناب اروند کیجریوال سے انکی رہائش گاہ پر ملا اماموں کی باتوں کو سن کر وزیر اعلی نے فوراً کاروائی کرتے ہوئے ڈو زنل کمشنر کو حکم دیا کہ کل فوری طور پر اماموں کی دو ماہ کی تنخواہ دی جائے۔اماموں کی طرف سے کل ہند امام ایسوسی ایشن کے صدر مولانا محمد ساجد رشیدی نے وزیر اعلی سے کہا کہ سر بہت افسوس کی بات ہے کہ امام لوگ آپکی سرکار میں پریشان ہیں اور بار بار آپکے پاس اپنی مجبوریوں کو لیکر آنا پڑتا ہے آپنے کئی بار یقین دہانی کرائی کہ میں آپکی تنخواہ بڑھا رہا ہوں ابھی تک نہیں بڑھی جسکی وجہ سے ائمہ حضرات مسائل سے دوچار ہیں ۔

نہ اپنے بچوں کی تعلیم کا خرچ برداشت کرپا رہے ہیں اور نہ ہیں اپنے گھر کے اور تمام اخراجات کیونکہ آپ بھی جانتے ہیں کہ مہنگائی بہت ہے اس لئے آپ سے درخواست ہیکہ ہماری تنخواہ میں آپ فوری طور پر خاطر خواہ اضافہ کریں جسکو وزیر اعلی نے فوراً قبول کرتے ہوئے ہم سے ایک ماہ اور وقت مانگا اور کہا کہ مجھے بہت احساس ہے لیکن بورڈ نہ ہونے کی وجہ سے میں مجبور ہو بس ایک ماہ میں بورڈ بن جائیگا اور آپکی تنخواہ میں آپکی سوچ سے زیادہ اضافہ ہوگا یقین رکھئیے۔مولانا محمد ساجد رشیدی نے وزیر اعلی کا دھیا ن اماموں کی دو ماہ سے رکی ہوئی تنخواہ کی طرف دلایا کہ پچھلے دو ماہ سے اماموں کی تنخواہ نہیں ملی یہ معمولی تنخواہ اور یہ بھی ٹائم پر نہیں۔وزیر اعلی نے فوراً ڈوزنل کمشنر کو فون لگوایا اور ان سے کہا کہ اماموں کو دو ماہ سے تنخواہ کیوں نہیں ملی آپ فوری طور پر کل کے کل اماموں کی تنخواہ دو ۔ اور پاس میں بیٹھے ادھیکاری سے کہا کہ میری طر ف سے ایک بہت سخت لیٹر چیف سکریٹری کو لکھو کہ موجودہ کمسنر اپنی بورڈ کی ذمہ داری کو سہی نہیں نبھا رہا ہے اگر آئندہ اماموں کی تنخواہ وقت پر نہی ملی تو ڈوزنل کمسنر کی تنخواہ کاٹ لی جائیگی۔ مولانا محمد ساجد رشیدی نے آخیر میں وزیر اعلی کا دھیان وقف پروپرٹی کی طرف بھی دلایا کہ کیسے آئے دن ڈی ڈی اے وقف زمینوں پر قبضہ کرتی جا رہی ہے اور حکومت حاموش تماشائی بنی ہوئی ہے وزیر اعلی نے کہا کہ ہم بورڈ بنانے کے لئے اسی لئے جلدی کر ہے ہیں تھوڑا وقت دی جئے پلیزبورڈ بنتے ہی سب ٹھیک ہوجائیگا اماموں نے یہ بھی مانگ کی کہ ایک ممبر اماموں میں سے ہونا چاھئے تاکہ وہ اماموں کی ضرورتوں کو سمجھ سکے جسکو وزیراعلی نے قبول کیا ۔ ساتھ ساتھ اماموں نے یہ بہی کہا کہ چیرمین امانت اللہ خان کو ہی بنائیں کیونکہ بورڈ کو ایسے ہی چیرمین کی ضرورت ہے جو ناجائز قابضین سے سختی کے ساتھ نمٹ سکے اور قف کی آمدنی کو ایمانداری سے بڑھا سکے آج تک بور ڈ کوایسا چیرمین نہی ملا جو بورڈ کے لئے ایماندار ہو ۔

Urdu-Arabic-Keybaord11

ISLAMIC-MESSAGES